Skip to main content

Full text of "Jahad Aur Dahshat Gardi By Allama Muhammad Faheem Qadri ,, جہاد اور دہشت گردی"

See other formats




ےس وس 





۲٣ 
ًِ 
1 
و‎ 
١ 
عِْ‎ 


را نا 
٣ل‏ لہ 9 ہہ" 


۱ 7 : > را نو چا 


وچنوچ 





> 
پچ نگ 


بث رٹ ث۱ 
وچ ا 





6 


 ت‎ 


و 


”پمپ پ٭پجپ وپ پ٭ پ2 پا پ؟:ہوپوپ: 


ظ +۰ 
ت:2:6 


کے ثفق 7 ے 





(ق رآ رعش کا رض ) 


کا اد ان وی بر تب 
ہونے وانےاشر ا کا می جائژہ 











627 


و حر و وھ یل وی ور وف وی وھ ھی وی ار و ور ا و و ط× تک لد ون اھ و ال یھ ا و :تح وھ حر و ور تہ یھ رت و تھچ تہ تچ دہ تہ تد ّ7 


۷٦ 


مل تقو یکن مصفتفویا میں 
نا تاب رک ا چہاداوررہشتگردی یی فرںق 
ملف 2ک ا اک مہ نا درگی ال چامعنظامے رو (ا 4ور 


نظروای 0 6۶6۶62۶2۶996 مم کل یمم حم فا مور رتا دریا 
کپوزنگ وی ا وا بے سد انلم چامرجلالے, رو لا ہور 


تار اشاعت 0:0 ََ 
ترار ا ا ا وت 

صات ا سم للا ا 
نت کے یک ھا لی سی زم 


کت می المدارسلوہار یگیٹ لا ہور 
ککتب ایل ححخرت در ہار مارکیٹ لا ہور 
چامے جا لہ رتو ردارو ‏ والا لا ہور 
اور امصطلغے لو پیا ٹوا لوت راوال 
رضاءورائقٰ او لا ہور 
کت ہقادر یگ برانوالہ 





ىد 


(رت 4 ۱ 
مار حوان ٰ عو 


۱ ےک 0900 ا 
۲ اظبارنظگر اھ 
سے ہے ۲ 
5-2 تق رادرم انے 
٥‏ ۱ بطتیں_ 7 





) سا ےکا تیار اور یل 


ٰ 
۱ ےت 
(صۂ ال ) :شی موار ۱ 8 


...ٹل :ارک و کن گے 
و9 (فصل جن ):چھایقرآ نکی رشن ش ۸ 
-- چہارڈنش ٤ے‏ ْ ۸ 
ئی 1 کے نا کک جار ِ ۸ 
۲ لہ الا کیل جباد ۸ 
7 .۔ کذادکے جزبید ےکک بباد ك8 
٤‏ کنرددو ںکی مد دی جباد ۹ 
٥‏ مت لین کا ہدلہ لی ےکیلنۓے جباد ٢‏ 


مداعد وو ٹر نے بے تباد 


متبوض خلا ران ےکی با 
منظلوموںکوچبا دی إجازت 
جبادی عم انل ہونا جا ئۓ 
الد جان سے چیا دکانگم ۹ 
































44 


و تد ہہ ہر ہد سو ہہ ہن یر اہ الہ ہک یہ ہد لہ یل ہر ا ا ال تد لہ لہچ نر کر ہہ ہہ حر رد یں دہ 


23 


- 
۱ چارڈر ب۔ان ے 
١‏ ج ئگ آ 


وع 
جمادگر لوا ورے 


۸ - 
ا کم ہج م۴ 
‫) نعل یکر ےو ادف کین بج انجاڑے 
مارشن بی لا نک را رام ے‫ 
سی ہے 
ہے لم 
یسا سا نوا مرجم 


ھا ا ا 
جا دنن سا مان جج کی فر اھ ی یھی فرص سے 
مار سیت م ےا مان ساب لا 0 رراہے 


بر لئ رز ری اڑا 5یع 
ض 1 : ۰ ۰ جج ٭ 
ون ساا 7ون )ری از ارںٰدے ہ1 امرس پ 








رکیھْے یر 
1 5.5 


. 
ص۱ ۰۳۴) ّ۳۸ ص 2 َْٰ 
ض کو بی تو ص دن یلو بین مر ےو ان ے سے مارک ماف سے 


زم لںوارقی ):چھادآعاد رشن ش 


چا رفا مت کک جاری ر ےگا 
جباد میس موس اورگورکول ےل یما مصت 
4 
کی ض..ااق کے او او و کر ْ رجہ 
دن میں با فی کو راو ل اور ول نے مار ے جاے کا بجواز 


ج - ".۰ و کا 
دن سے ہاج نے وت ں) ژادعا7) 


ات نوہ بناجائ ا 
ط2 رر سن ب2 
بد لو ںحوس زین عرب سے اکا نت ےکا 1 


جب اکم جرا دا6 د سو 





واللد م نکی اجازٹ کے !خر چہاد نا جات 






























دنن ئن ہوا ے؟ نتا حا ف۷ نظ 
ناوخ ئیەظرِ 
تہ رعبلی)نظرے 
تا الک ری 
چہادکب فرش کنا یہ ے؟ فقہا رآحا فلاظرے 
فتما وشاذ یک انظرے ا 
تما رعبلیباننظرے 
ے ا فقاو رہ-۴ 
لام ورت :ند ھک ےاو رپا فی ویر ویر چیا فرظ زی 
ےد می مد اور +و جا ئۓ لو گور ہف راد دک ت٠‏ یرش ا 
رع ارگ بب الا مد ینا ا تب ےا ۱٘۵ 
ش نکو وت اسلا مد اپ واج ے؟ ۳" 
رر اول او رہش کی ممانعت ۵٦‏ 
ارت ےشن فی :اند ھھ اولنگڑۓ کے لک یمرازعت 


(نل خاس )اق مد یداوراس ےتا 


صا 7و ھا ہم 
اعد یس ک تا ادرآشٹر ا تکاش کی جانزہ 


(نل ماع )زس میرپس سظر 








ری 


ے تراررارادر چل ہئرگی 1 9 





ار تکا ا نکاراورمو جو وضورتی عال_ ۱ ۷۹ 


(نفل من )رسودللٹین ۸ 
فلسلی ن کا ہا ربینی بہں منظر ۸ 


:. ہر ای ۱ 
اصرائیل کے تا کا موب ا ۸۰ 
اصرا می کا قیام اور ود تر جب کا رم ۱ ۸۳ 
7 ٭ پا ریب پا 
ام ؟! مرک اورموتوروضورے وال ۸۷ 


(ص دوم):شفیقی مباحدثف فَ 
لے (فصسل ول :اجار ودارکپڈیوں کے خواب کین 
9 0 ۱ ۵ 


أْ ۳ تہ رک واقدی یو لت پاب ار 








رہش تفگ روکون؟ ام رب لہ پا صلان؟ ۱ ۹9۹۷٦‏ 


) لسم )ہگور باکارروا ُوں گا ری اورش؟ گیاجیقت ۷" 


1 
(فصسلٍ ارم ): اکب فرش مین ہوا ے؟ 2 

کی : ۱ 
بد کے مقاصیدکیا ۓے؟ 0 


(۱): ےکا مات _ 0تس 





(۴):خاب اسلام۔ 7 
(۴) اذارکا جرد ینا۔ کل 0./" 
یں ا و 
کر ۳ 


"۳ 7ئ الڑ۔‎ )١( 


٢۶١ ١ ماق‎ 


لت کت تک کر ار ات ای کا ہے ا دہ رر و رس ںی ا چا 























7 
ِ' 


۷۸٦ 
الضلوٰۃ والسَلام علیل یارسول اللہ‎ 





ںا پنیا ولی یکوشت لکومنسو بکرتا ہیں 
میاہر ین ٹی یل ایر کےساما رشحم ء راو خداکے مافروں 
کےتقا یر عم بک نا کی انل تی نخصیت 
عم شا وکرٹ دم 
رگ رصع ی چا 
کے ام جوا بٹی تھا گھ الد تھا یکی رضاءکیل گنا راور 
می نین سے چپاوکر رت رے۔ 











89ھ 
ر لک لور نتر نتر و حیعر ور بعد سب حر سب حر بعر برع سد ہے حر و در بر ۴ 





| ۶ ٠ 
اظمارہ رڈ‎ 

ا چزسب سے پیامفتی انم پاکستان ححضرت ملا موا ا مفتی عہد الوم زار وگی اق طے) 
رت العلامجخ تج ادس از ال جخرت 
لام موا نا جا ذظاشج رپ المتا رع گی( اہ دای )اد یب ا لمت خظرت ملا مہ رمو(ا نا مر صیر ای 
را وگی(: فا دای ) م نظ راہلسغت خنظرت عاا مم لا نا عپ التو اب حصید لی( ددال )ا ستناڈ التصء 
می ئل ا خی( ال )نضرت ما مو لا نا ید لٹ زا ھی ( رد تال )ء اماخ ااصرف نظ رے 
علامہ موا نا حا ذظ مر نماد م سیون رض وی ( ند دای ) اور استاڈ العاہما م حضرت موا ناشجہ رما ا قب 
مصطفائی تال )امیر ال ادا مصلظپاکستان ا ن ام سا نے وکرا مککاحہ ول ےج گار 
ہ ےکن کات کان اد زفرائی سے ے پہعادت بج عیب ؟ بل 

اس کے یر رت تا مہہ و(ا نا جا وڑائ شا مرا تال (رخعا دن )حطر ت مولا نا مج جیا ن تقادرگی 
اوراۓ زؤمم ٹنم تا رادرک یکیاشگ رگز ار س الم ان احاب نے گے ای مال کی کب کی 
فراجی میں 7 اورپ ر اس طور ۸ پرو ٹس عا ذظ شجھخو شی قادرئی کا راز بے 
جنپوں نے انچائی تی وت ٹا لکرس متا لب ےکی نظ خالی خر ما 7770 ا ا 
ور پراپے سن دوست جناب یرہ وڈوسرڈاکٹ رھ سا جدقادری( لی ای ڈکی برطای ) کا شک رگزار 
ےج نہوں نے ای مھا لی ےکوان نل معیار کے مطالشی ڈھا ل کیل مزا نے کے ا سلوب اور 
ضیون عق ! ؤز دز نگ دی کس تماق بد می جن زا یفاک 

ایارک وتا گی ان سب نفخرات کے درجات بلندفرما ۓ اور ان نغویں قیرسیہ کے یر تے 
بنا نا یکو بد دش نمی نکی غرم تک ےک فرصت 1 00ھ 


طااب دا یہی عطا رگ مصطفا لی ان ہیا نو الوم اْوالے 
٭٭ٔسصص٭سّّسَْسحچئ]آً 











ہ4 
یل 


تقق دوراں میم برنہی کال رہ جناب نضرت مو نا تی ؛ڈ اکٹ 
مج شر فآ صف لا ٰ صاحپ برخرادال 
اچ ڈکی ناب لو یور : فاضل بشداد و وی ء پل جا مع جال رو ریمفلہڑ الاسلام لاہور 
بسم الله الرحمن الرحیم والصلوۃ والسلام علی رسولە الکریم . 
تر اس کم سے ماک سر کا ا ہار ہردور ٹیش پندجگ کیا گیا ے اور بھمچھ ی مھا کیا ےء پا تس شی 
أدکا کوک کم بر اناورک تفص لکنا یی ہویش أصوابپعلم کم تکادظیف رما ہے ۔ أ ام شرعیہ میں جہادگی 
ای کضٹررامیت ہے کی وجہ ے دشھنوں پ۰ الا مکا عب طاری رہتا ۓ .تا رن ی پپسں منظر کےلوا بط سے لم 
ان ہ گی مدان چہاد ٹیل بر کی ے غلب اسلام اورشوکسیں وین کے مناظرسا سن کے ۔محصرحاض میں جہاں 
چہادکر نے کے کی تا نے بڑ گے ہیں ۔ ا ییے بی ال ک ےی نذا ہن بھی ڑج گن ہین ۔ 
خی لم ؟قوا مکی طرف سے سس لف وض جا دکزنقی رکا نشان بنا جار ا ہے ۔ اان کے انیٹ الا مکا 
روپ دھارکر چادکی زیت کشر وی تکوئ کرد سے ہیں ۔ یھ جہاد یکا کیلنے بہا مکی فضا پداگررے 
ہیں۔ا یی بیضمروددی تھاکہ چہادکی فرضیت ‏ مقضید یت محکمت شا ئل داب اگوی کل اورا ہم جز ئیات 
کوأ اگ رکا جاۓ ۔ پاٹفوش جب چہارکودہشتہگردئ یکا نام دینے پہ ہر ال مجر ہے ۔ و وس الرا مک جواب 
و ینااورتھلیما تہ چھاوکو ا جاک نا مہات ضمردرگی ہو چکا ے۔ 
اس تاظر میں نو جوان کال رہ امہ جاالیہ رضوہیمظرالاسلام لا ہور کے تیر درس ب۰خرت مولا نا شیہم 
ادری صاجحب ڑپ رہ جم نے آبات ؛أحادیث اورنصوس فق سا جائع مقالہ اکر کے وق تکی 
ضرور کو زاگیا ے ۔ ہیں نے نفد مظامات سے اک یکا مطال گیا تک _ حاق تین ای ب ہش ینا 
سویات ے :الہ توالی ال مرو ع کے مو ید لن یا ضر( بک ن کی فو ٹن عطا وف رمائۓ۔ 
این ہعاہاشی الا شن! 


جراشر فآ صف جلا لی( ۸رت ا ول ش نیف ۷ ۱۷۲: ۱۱۸ب ل۶۰۵م) 


































کہ ٰ۴ 
اھر لٹا 
7 سس 
استاؤالتارما مفگ راسللام ؛ضرت لا م موا نا 


شمرصد لٹ ہار وی صا حپب دامت برکادالدالہ 















ش 
نع اد بیث جا مع نظا مب رضو لا ہور 
7 رت کے و کرش 
چبادکا تاج کر سے ورنہ دتانں اسعلاح ٹیش ای مم مو ور سےگیہ 3ہ 
اون سے و ون ہار ے باکان ما ں ج سکی داع مثال اسلامکا! برای دور ےکی سو ا۶ ا ےن 


ے چاہ کے ایر اسلام کے ععدل وانصاف بی“ یی ظا مکودوردورکتک بپچھیاا یا اور امس ساس ٹج ین ماد روارآ 


مہب“ 
2 
ۓے 

۱ 


مس 


کےا لاق عالی ے اکا اص رکا و ے ناو نبدوت سے جو 5 ں اور پے شار بردوں بی جی ول 


سے لوہ 


ا شی لان ری ہے ٴ بی جا نلیا ماک شمنان ۱ ملا مکی کہ پردازیاں ئگ یں زی نی اورردی ن چک 
خلاف ا نکی سمازٹیس یش ز ددول پر ہی گی ہا سلآپ نے نراک اَل جهَا اض إلی نَؤم 
الْقيْمَّة۔ 'یپنی چہا دق امک ۲۱ رکید ےگا۔ جہاد کے ہار ےش رن وسن تک یت رت کوأمات وا کور 
رادرم حاضر کے نتاضوں کے ممطا| منظر ام پرلا نا اوریسلمانو ںکوجو بہت جلررشن کے پراپیلنڑ ےکاشکار 
بوجاتے ہیں نز اختدال پند خی ملسو ںکو یہ بتانا ضروری تھاکہ چہاداور دہش تگمردی می بت بڈافرق ے 
ِن وووں گرا اک ارد بناجہالت اور بدا پا ڑے۔ 

مل نو جواان ححضرت ما مھ ولا ا تم 0 ا سا رش ود ٹیا د راہ جا مع نظا می رشضوے 
کے انل خر شا و یں کے یں ۔انہوں 0 0 نک اعخمان درجہ عالی کیل نر کردہ مڑالہ 20 
و إِ نفد عام کیل ز ور ےآ راس دک رن ےکا اراد وکیا ھپ نی ہے ۔ رام نے نی ییحی موا لم گل 
سےد مھا تو !یں کے مواداورترحی بکوقائش رک ایا یقینا کاب اپنے دق تکی آبضرورت سے اور اہأ نت 
(یجراع تک تن کی کاوشوں یں خبرااضاد ے اش الا ن0 بکوش رف قد لیت اورمصن فکو اب ھتنلیم عطا 
را ۔ا ین ہاو لی الا ین ! 


تشھرصمد ا جٹراد وکیا جا مع نظام رشو لا ہور۵٢٠۲‏ +,| ۲٠٢‏ 





411 


ب( مقدمہ یچ 
”الحمد للهِ الذی فضل المجاھدین فی سبیل الله علی القاعدین 
د رجةُ والصلوۃ و السلام علی سید نا محمد نالنبی ٭ الذی کان 
لایزال یجاهد الکفار والمشرکین والمنافقین لاعلاء کلمة الله 
وخاتمة الفتنة الّتی ھی اشد من القتل وعلی اله واصحابه الذبن 
کانو ا یشتفلون نفوسھم واموالھم واولادھم فی الجھادلاتباع النبی 
ىا وسائر المؤمنین الذین یتبعون النبی ٭ڈ واصحابە الی یوم القیمة 
امابعد: 
الام اور ادا زم وطز وم ہیں :دنر الا یش اسلا مکی ا کَّٰ ٹیس چہادئجز ولایٹل٠‏ کا متام رکتقاے 
یے میں مسلمہ کے جرد سیاست سے خر کر ن ےکی صورت می دہ بذیا دم دم ہو جا ۓگ جس 


۲ 


گذش چودوصدنیوں سے اسلا کرٹ الشان ت تیر ہے . اس دنا ئیش جوکہرزمگاو تیر دشر :خر 


دی اور کی علاتتیں ش کی نمئحدد ہ وی توفوں سے برسر پیکار ہیں اور بیسلسلہ یٹ الآبادکک جار 
رےگا۔ ایک سکم صداقت یے بار ارتا رن یکسوٹی پ٠‏ پکھاعمیا ہے اس ام کی شابد ےکا نا مکار 
ال تو ہیں ہے بے پناہ مادکی وسائل :الات ظھرب وقز بک یکنثزت او رگر وگ ر کے با( جو دنن سمہے 
مقالے ہیل ماب ونام اود باخراد ہوکیں ہیں ۔ ال مز وک جازہ تر ین عثال ج بگجہاد سے سار 


انان باعد بی نکی مومنانہ افاراوراففایول کے سام ب ےل ہوکردنیا یلیم سپ باد درد لا ہرم 
کے جد ید اسلمہ ےی ہرایس ری افوا کی سرزسین افغامستاان سے ذل تآمز پہپالی کی صورت 
اش ہوئی۔ جس کے ما بعد اثزات نے ا شتراکیت کے غبارے سے ہوا کا لکر رک دٹی اد رآ کارل 
۱ ار ایی زاورٹن کےنظریا تک تیاں فصرفخرل اورپ بل خوددد ںکی نطا5ں میں ہرس 
ا ھ رت دکھوائی د کے4 یا ہیںا۔ 

چہاد اسلا مکی ترک قو ت کان الم رجذ ہ ہے ۔ امیس یانظام کےکارنرے ہمروقت ان سمازشول اور 





412( 


ریشدددانیوں کے ال کیا نے یل نعروف ہی ںک ہمت مل ہیں ا ہے ننٹش راز کش عکر سے 
آ ذس فو ا پنے پگ فا کی می دوقوث وفذانائی نہ پیر اکر نے جو جرب ناد ےت ہولی ج: شاطرانمشرلی 
ذ نیت نے ا طبٴ 77ھ یا ملمافوں میں ارات کا نتر پیرا کیا سس نے اپ 
ا و کیک یم پا مق فک رکا نین بج ارڈ خر حاضر کے تی شور گے 
عالم الام ٹیل بیدار یک ا ایک ری اش نظ راز لٰ ہے او رجیم الا مت 1 زج اقال نے اہ 
یرٹ سخ یت ہو کے این 071 
تا فلازف بیه یا گی مر ش راز و بندگی سے 


بشاغ ا یکر نےکو سے برک در پیا 


- 


س ے اودائ+ وت2 وت اب یادودوریل ۔اللہ اکا و رشا دوک را ھی سے : 


ظ7 وَخَاجڈؤا کی الله ؛ خحق جهَادہ *ٌ)) 
ٹر ججہ: ”ادرئلہ خچالاکی راو یش چہادگروجیا لاکن ے کان ےا 


2 


سے ٣‏ 6 ج 4 ۰ ّ جم 

اور إِکی رم تد دمظامات پر جبادک فرضی تک ا مت مسلم یکو اس ططرف متوجرکرد با ےک اکر جباد 
۵0 ۰ : 7 ُ۔م - 7 
یرتا اور پل یک ای نے اپناشھار بنال یا وچ ررو ئۓ ز جن پ ٣|‏ کی آ بر وٹ رانہ بقا اور ےکا کا 
۰ ۰ صے ِ 
کوکی ا مکا نی بیس ر ےگا زونہ الا مکی ۶ کی بی مین ضا ٹرش مر ہے٤۔‏ 

مک المدایں ہرسما لاہ کو ۓ نۓ م وضو جات رلک ا ٹھا ن ےگا مر وفع فا مکرلی ےتا ک یبا ءکی 
ری یی و اک کے 1[ ےی 
ریا تی اورار یی لا میں ا جا گر ہوجو ںو د رجح بیث کے سال ارسالی سے گئئ وضحوجوات میں 
ےرام نے ںکا اتا بکیادہ ے۔ جاذاؤرو ہش ٹگمزدی بیس فرشی( تق رن یٹ کی رشن ال)( 
رع اد اتی بز ید مرج وزنے وا نے ات ای از اور حاض میں چاد کے 


۰. 


/ ' ۰ 7ے سے رھ چا ۰ میرم 
ا ام وخ کی آبمیت کے فیس نظ راب اس منقا کو ہزم جلالید رخھو لا ہور کے تما ان 


ات 
ا ہے 
سے مم عھا سم بجی سکیا جار با ہے۔ 
ہیں بے 
الب د نیا ء :ش۰ یھ تادرگی 
(۱)۔اج:۸ء۔ 


سے ہے ہہ ہہ رک ھک یہہ :لا ال کہ دہ ہر رھ لئ نک اہ وہ رہ تک تہ ںہ و ہد و وھ وت بے و یں سے سے 


































متا لک تارف اورأسوب ) 
عنوانع !''چہاداوردہش مگ ردی میں فرق( فراع ون فی رن جس نجرا حد ییساورطاتی 
بیندر سے مرتب ہو نے دانے ان ان تکا کی چم زداورعصر عاض ریش چہباد کے کے 
ذری تن 

اس متا نکیل موا دش لہمام ت کنب سے تلائ لک یا کیا ہے ء اس کے سا تجح ساتھ چند وضو جات پر 
براؤ تاس تناما ۓ ےرام سے ا تاد وت ٠‏ یکیاگیا ہے اور دوس ےج نے بیس شی کی تی ما حر فکسلئ 
الف آخیارات اوزڈعائی ےلگ | تاد کیا گیا ے .ماع ت کن بک تھا ل اورخاما ۓۓےکگرامم کے نام 
مت 


ہے تر حم 


سے اب 
مالے کےا سلوب اورآبوا بک ایم 
مقالہ نگادکی کے جد پرتقاضموں وی نظررکت ہو ےم مم سالفا ےکور سک رپ ہر نی 
داز اما رک مایا ہے اورموا دوش ع کر تے ہے ای صحت ہوالہ جات اورشمھون سے مطابقت پ 
امن ہم را سط رح ۓ؟ م۷ ل متال در ص١‏ مت 


۴ 
۱ 
٦ 
خ٤‎ 


(١):ص>ال:‏ جو الے کور برع سیے جانے وا لن لی مواو رت 
:)٢(‏ تہ دوم ہشأفتی مبادف پہشقل ے۔ 

پر حا يکیکل؟ یں ہیں _ 
ول ×ش ادکیاغوئ ین شائل ہے۔ 


فلل الف :میس چہار کےمضوغعغ ے مطا بت ر کے والی أ حجار بی ثک وگ حوال نکیا کیاے۔ 


فصل ررخ 0 ےعلق تما راو رعلیاء کےا کو قو الد راہب اور لکوذک رکنم ے۔ 


فص سس ضس ےت 

















414( 

نل ائس: میس بثاق مد یداورأء ں ےتا ارات شی کرک ے۔ 
ایل ما دوش :یس کک دب اراس بهِ کے تیاغ وأثرات یرم٣‏ لی پچ شک یک ے۔ 
فص سسائع : میں سلہتشمیرک جار اور جودوصورت حا لک بیا نکیاگیا ے۔ 
ضلم امن : میس نل :ماس نکا ما ربنی ٹس مننظراورمو جود وصورت وا لکا جائزولیاگیاے۔ 

چم رص“ دوم پا صا نل ے۔ 
فسل زرل :یہر جودؤدوز کے چہاداوردہش گر دی ےت مرو پیکنڑ وکا نیپس منظ یی ںکیا 
گھا ہے اورأ سک نغسیاکی اورسائنسی اد یی جلاش شک یگئی ہیں۔ 
فصل روم ایس شرگی اورتا رہئی جوا نے سے چہاداود دہش تگردئی می سفر یکو داش کیا گا ے اور 


ا اب کو ام میا ٹیس نے دالی اہی کی یق ت ہر پزطال جات سے بے ھا ب کیا کیا ہے۔ 


فص سم : می فذداث یملوں اورگور پا کارروا و ں کا ارنی ادرشرگی حوالہ سے جائز و لیا گی ے اور 

سلسلے میق رآن وسنت سے ہممائی گی ے۔ 

نیل چچہار :یح اول ٹں گی رات وا چا کان کیا 
ہے ۔ ا چا دکی اصطلا گی تحرییف ہ جباد کے متقاصد ؛ جہادرکب فرح مین او رکب فرش لکڈاہے ہ9تا 

ہے؟ اور چباد کے متقاہ کی ردشنی یس ہوا کیا میا ےکہمسن لکش راورنلسطین وغیرہ کےع لین 

میاہدی نکی عد وید دہشستگردئی نیس پشرگی جہاد ہے اورمیان ش اعت کے مطا انی سے۔ 


////+/٭ 
/٭/٭/٭ 
۳ /٭ 
ى 








ڑ5 


کم ہم 72 
حص>اڑل: می موار 
فلِ اگل : چہا دک لو ضتن 
نا چاد(ئیڈ ) سےمشش نی سے ہن سکامعنی ‏ ےکوشن لک ربا بحن تکرنا ۔لفظ جباد باب مذائؤہ سے 
ِستعال ہو اسے اور باب مُفاعلہ کے اکر مصاور ری فرلیقی نکی شرکت ہوئی سے اور ایک دوسرے پے 


























غالب آ ےکا ملوم ہوا ہے ۔اہذا اب اُددوز بان ‏ چہاد انی بد کاممی ہوگ اکوششوں کا نصااُم 
کنششو ںپاتگراؤاورکزششو ںکامقایللہ۔ )١(‏ 
جا ئغ اھر وس شرئح القا مو میس علام ہر ہد فرماتے ہیں : 

ط الجھد بالفتح الطاقة وبضم ایضا والجھد بالفتح فقط المشقۃ قال 
ابن الاثیر قد تکرر لفظ الجھد والئُھد فی الحدیث وھو بالفتح 
المشقة وقیل المبالغة والغایة وبالضم الوسع؛ الطاقۃ ءقیل ھما لغتان 
فی الوسع والطاقة فاما فی المشقۃ والغایۃ فالفتح لاغبر وفی الٹنزیل 
”والذین لا یجدون الا جھمدھم ۔“'( التوبة :۷۹) والجھاد بالکسر 
القتال مع العدو کا لمجاھدة ءقال الله تعالی '' وجاهدوا فی سیل 
الله حق جھادہ ۔“'(الحج :۷۸) یقال جاھهد العدو ومجاهدۃ 
وجھاد) قاتله وفی الحدیث '' لا هھجرۃ بعد الفتح ولکن جھاد وئیة “' 
ونیة الجھاد محاربة الاعداء وھو المبالغة واستفراغ مافی الوسى 
والطاقة من قول او فعل والمراد بالنیة اخلا ص العمل للّه تعالی 
وحقیقة الجھاد کمال .قال الراغب استفراغ الوسع والجھد فیما 
لا یرتضی وھو ثلاثة اضرب : مجاھدہ العدو الظاھر والشیطان 


والنفس وتدخل الثلاثة نی قوله تعالی ” وجاهدو فی الله حق 
(١)۔جماد!لترآن:۹۔‏ 








۱ رر و ور ور ید یر ا و سح و تد تک ” 























جھادہ'( الحج :۷۸)۔() 
سر ےہ  :‏ علامہز بیدری خر مات ہی سکہ تید اور تی دامع طاقت : وسعمت اورمشقت اورتَہر 
رف مشلقت ک ےمج بی ںآ ہے لا مہ اہن أشی ہز وکیا ن کہا ےکہعد بی پاک ٹیل تد اور نہر 
کے الا لات استعال ہو ۓ ہیں :نی امن مششقت اور ٹم رکا معن طافت اور وسحمت ہیں ایک 
ثول کے مطالڑ بر دوٹو ال طاقت اور وسعنت کے یی میں مل ہو ہیں مان مشوت کے سی قابان 
رف تی اصتعمال مہوت ہے یی اک یف رآن یبمل ے : 
ط وَالّذِیْن لا يَجدؤنَ الا حُهُدهم >() 
پر چجہی؟:'ادرا نکو جس ات گرا ہی مت ے۔' 
اورامنا اکن نے ما یکر نے ا یں گئی استمال ہوا ےن 
چیم اکہ ارشاد باری تع ی ے: 
ط وَخَاجِڈوا فی الله حَق جقّادہ 4( 
تر جچمہ:''ادرا شک راہی چاہکروجیماضن ا اتا 
اوزحرب میں یمھاورہاولا جا جا ے '' حا ہد العد و *شنی اس نے سن ےا لیا۔اوزور یڈ 
1 ل شش ے'' لاھجرة بعد الفتح ولکن جھاد وئیة 6 ئا ا 9 
نیس ال تال اوریتٹ ے اور چھادکا ا ا ےکہشنوں سے جن فکرنے می آپےقول پاننل 


ےا ھی دی طائت او روصت ؟ رر بنااوربیت ےمراد فلا ئل ہے۔ علامہ راخب اض با یٴ 







فرراۓ پ یں کہ جمادکی تفیقت بی ےک 1 بی شوایٹش کے خلا ف انی طافت اوروسعمت شر کرد ینا اور 


7 و ۶ اک . 8 3 
یع یی یں ہی۔۱2 : نا ہریی دنن سے چھادکر ۔(۲): شیطان سے چھادک۔(٣)‏ :مس 









کےخلاف چہاوک رب اور ی یو ں سی ںق ہکان پا ککی ا لآ یت کر یم یس پائی جای ہیں ۔ 





(۱1).ح نال شر الف ص۳۰/۲١۔‏ 
(٢)۔ا‏ :٤2۔‏ 


(٢)۔ان‏ :۸ے 


یج بد بیع تح حع دح بعر یع سد بد سد سد ود حر حر عو سد تر دہ سج و لد وھ وید و وھ لد نل ھن لد لا لن لہ لاک مد یم ہو ”یضر عیب بی حور حوبر بب ح یبر رہ حر حر عو حور دب یہ و یں یر تہ یت 


ٔ 








617 


ظط وَخَاجدؤافی الله خق جهادہ ٭() 
پر جج :''ادرائ نکی راہ جس جچہادکردجلیمائقنی ہے چہا دک ن ےکا" 
کی ط رع ار شا السمادی شرع ہفادی شل ے : 
والجھاد بکسر الجیم مصدر جاھدت العدو ومجاحهدۃ وجھادا 
واصله جبھاد کقیتال مخفف بحذف الیاء وھو مشتق من الجھد بفتح 
الجیم وھو التعب والمشقة لمافیه من ارٹکابھا اومن الجھد بالضم 
وھو الطاقة لان کل واحد منھما بذل طاقته فی دفع صاحبه) )١(‏ 
اسر جسمہہ :''اورلنزڑ ہار صرر ےجی اکب کا مار ے '' جاھدت العدوو 
مجاھدةۃ وجھادا ى3 نے بن سے کا لکمیا ءاور چا دائص٥ل‏ میس ہا دھاء برعلا ۓ عرب 
نے با ءکوعذ فک کے فی فکردکی تو چاڈ روگیااوریہ چہاد اتد ےم شض ےہ سکاصعنی سے مشوت 
ااوتللیف اسل کہ چہادرٹش مشقتأُٹھان پلی ہے با ھر جہا دید ےیشتن ہے بج سکامعنی ہے طاقت 
اسل کہ چہاد شع رفین مج سے ہرایک ابے سراش یکوکست د ین ےکیلنے ای طاقت خر کرت ےی 


جا / ج4 / ۳7/77 / 1۳/۳ /۲/ ۳/7 
۲ /+/۴۲/۳// 
7/۲ //+٭/٭ 
079/٦‏ 


-- 
۶-٦. 


(١)۔ان‏ :۸ء۔ 


(٢))۔ارشادالماریی‏ شرج بخاری؛ ۳۱۸۵۔ 


418 
ڑل جن 

۰ ہم ْ۰٠‏ 
چہا دق رآ نکی ردککی ں 


اس مکل میس چوس )۲٢(‏ آ با کو ذک کیا میا سے اورموضصوع کے مطای نکیا اکس )۴٢(‏ 

























آبات کے توا رجات ڈکر کے لئے ہیں ۔ 
[1] : چچماوہر کے 
تی کیہ ارشاد ارت تھالی ہے : 
( تب عَلَيْکُمْ الْعَالُ وَهوَعُره لَكُمْ لی ان تَعْرَهوا هَیا وو 
خَيْر لْحُمْ وَقَسّی ان تُجبُوا فیا ؤْهُو فَرلكُمْ وَاللۂ لم ونم لا 
فْلمُونَ 4 )١(‏ 
سوج :تم فرش ہوا خدا] راہ یل نڑ نا اورد ہیں نا گوار ہے اورفریب س ےک کوک بات 
لت ۲۶ او ار تق یس ہر ہواورقریب ےک کوکی بات ہیں پیر ۓےاوروٹھہارے 
نی - 20ھ ہے اور میں جا تج 
[2]: نے کے نما ےکک جہماد 
تی اکنہ ارشاد ری تال یٰ ے: 
طوَقَائِلو هُمْ ختی لا کون فِتَنَةَ ی () 
ٹر جمہهہ ؛''اوران ےح رو ہا ںیک کککوگی مت درے۔'' 
[3]:غلپ الام سے جباد 
می امہ ارشاد با رگ تعالی ے: 


ط وَقَاتَلوْمْمْ کتے لاکن فِتَنْة وبَکُونَ الڈیْنْ عُلَه لِله فان اننھَو ا 


(۱)۔ا2ء )8ے 





۔۱۱۳:مظا)٢(‎ 


کی حر حور وی حور عو وک لہ ول لہ لہ لہ ا لہ اعد رح در وہ ول و و لد و رد سد بر ہد وھ و وھ وک ھا یل وہ اہ یں لد یہ رر دہ ہی سد وھ و تہ و و وہ ور ےہ 











4192 

فان الله بمَا يَعْمَلُوْنَ بَصِیْرٌ بی )١(‏ 

ضسر جصہ :'ادراگران ےلڑہ یہا ںک کک کول ماد اتی ند ے اورسا راد ین ال خلا یکا ہو 
جاۓ اگ کرد پازد میں قاللرن ک ےکا دکچد اے۔' 

([4] : 07ر ا 
ماک ارشاد باری تا ی ے 

فَارِلوْاالَذِیْنْ ا : بالل وَلَا نام الْأخر وَلَايْحَرْمُوْنَ فا حم 
الله وَرَسُوَلۂ وَلَا یَبِیُونَ دِیْنَ الْخَق مِنّ الُذِيْنَ أُوْتُو االْکَتَابَ ختی 
ٰعطُوْا الْحِیَةً عَن ئد ؤْھُمْ ضَاغِزُوِنَ > )١(‏ 

نتر یہ :''لڑدان سے جھ ایمان ٹس لات ال ال برادرقیا صت پراورصا میس مات اس زا" 
کو سکوترا مکی ال اذ اوراس کے رسول چا نے اور جے دبین کے اٹ نیس ہوتے میتی دوجواب 
دیے گن جن بکک آپنے ات سے جنز نرہ میں ذیل کر 


(8]: کھٹرورو ںکی بر دکسلئ جباد 


یی ماکنہ ارشاد بادئی تعالی ے: 
وَمَالحُمْ لا تُفَانلهُمْ فیٰ ہیل الله وَالْمستَسْعفیْنَ مِنَ الال 
وانْسَاِ وَالولٰدان الّذِيْنَ يَقُوْلُونَ رَبِنَا أَحْرِحِنًا من هذْہ الْقَزیَةنِ‌الظالم 
َهلها واخِعَل لن من لَدْئٰكَ وَإِيا واخِعَل نَا مِن لَدْئكَ نَصیْرا 4 ١۱‏ 
سر حمحسمہ: 0 ہیی ںکیاہ وا لہ لوا لی راہ ٹیش اورگٹرورمردوں اورگورٹول اور ہیوں کے 
اتل بد ارد ہے شی ںکہاے ہار ےرب لن ! ہیں ال تی سے نکال بھس کے لک نل حم ہیں اور 


یں اپے پاس ےکوی حمابقی درےد ,:0ٗ یی ماک وی5 لا ا 


۔۴۹:لان0۔)١(‎ 


(٢)۔‏ اھر ب:۲۹۔ 


- اقباء 8ے‎ .)٢() 








420۶ 


(6): مفن لین کا پل لم ےکسلئ جباد 
لی ماک ارشاد پاری تھالی ے : 
لھا الَّذِين امَنُوا نب عَلَيکُمْ القضَاص فی الْقتلٰی )4() 
اس بویٹ بے ابمان دالو!اغم فرش ےک جو نات مار 0 کے جوا کا پرل لو 
[7]: معاہرولو ڑنے > چباد 
ٴ۰ + 
می اکنہ ارشاد با رئی تھالی ے: 
ا ان تُکٹو ااَيْمَانهُمْ من ند غھٰد هم وْطَعَنُوْ افیٰ دِیِنکم فُفَابلوا 
ئْمَة الکفرانهُم 'لا ايْمَانَ لهُمْ لعَلَهُمْ يْنْتهُوْنَ ب٭() 
نسر جہےے٭:''اوراگ رہ کر کے اٹ یجہی ںو ڑس اورقہار سے ین رمآ میں وکف کے رغنوں 


"٤ 


سے ڑ 1-۔ 


[8]: رثا کیل جباد 
یما کی ار شاد پارئی تھالی ے: 
وَفَابِلو فی سَبٔل الله الَذِیْنَ یِقَاللُوْتكُم وَا نَهنَدُوْا إِنٗ الله 
ا ئجبٔ الْمعْنَدِیْنَ 4( 
نسر سد :''ادرانڈہ ےکی راہ یڑ دن سے جوم سا تے ہیں اورحد سے نہ بڑموءانڈد ند 
نی رکا عد سے بے ھیۓ والو کو“ 
[9]: مقبوض علا قہ ردان ےکسلئ جہاد 
لی اکہ ارشماد باری نع یٰ ےہ 
(1) ۔قرة۸ءا۔ 
إ(٢)۔۶۱:٢۔‏ 
(۳)۔ ا2و ۱۹۰١‏ 


”رر ا یا ار و :ا ال لک ہر ہہ ہر حر یہ ار ا و یز لد ال لد لد یہ بر ہر ہر ہو و اھ ال و ا ا ال وہ ا و ہی ا یہ ا ار وہ اہ ار یں بر سے ہے + 








421 
. 181تئ۷فٰ۷۷۷۷۰ى10 
( افو خَبٔث تَِفْنَموِهُم وَآَخْرَخُوْهمْ مِن خیٔث اَحْرَنجُوْکَمْ (١(۹‏ 
پر ہد :''اورکافروںکر جہاں پا آماردادرا ثثال دہ جہاں ے)نہوں نہیں الا سے" 
[10] :مظلومو ںو جہادگ اجاززت 
یی کہ ارشاد با ری تعالیٰ ے: 
ادن بلَذِینَ یبن بنهمْ شُلِمُو ا واىٗ الله لی تَضرِهِم لَفَدِْرٌ4 () 
نر ید :''رداگی(ا جازت )خطاہوئ أ!یں؟ ین ےکا فرلڑ تے ہیں اس بنا کان یم ہوا اور 
ے نک اث غَال ان عددکر نے برضرورقادرے۔" 
)1 چھادٹی یل اللہ وناج گۓے 
یی الہ رشماد ا ری تال ے: 
ْ7 اَليْیْن امَنُوا يُفَایلُْنَ فی بل الله وَالَّذِيْن كَفْرُوْا يُقَاِلُْنَ فی 
سَبْل الطَاغُوْتِ ٭ر۴) 
پر جم !مان دا نے ای ال گی را شی شر تے مل اور رکنادشیطا نگ راوڈ نر نے مع 
ای مو نکی م ید بات کے حوالدجات مند رجہ ڈ یل وا )٤(:7”7‏ 
(12): کفار سے چہاراگم 


ماک ارشاد ہار تعالی ے: 
ط ييُها اَی خجاجدِ الکُفَارَ وَالْمُنَافْقَیْنَ وَاغلّظٌ فَلَيْهمْ > ١(‏ 
تر جمہ : نو کی کی ا2 د ٹن دا ئے(نھی) جھادفر ما کافروں او رمیاثتوں 7 
(1) یج 
إ(٢]۔ ۳۹:٤‏ 
ر۳ امائ٦٦ھ‏ ۔ 


())۔"ا)ء ٤‏ ::3۵۔[۲ ]۶ ۷۔[۴]۔7ا.:۹1 ۔(۴] ۔ ۹۔ |۵ |۔ااقف ا۔[٦]۔‏ اما کے [ے] ۔اقشا:87۔[۸ ٥۶ب۲۴۔‏ 


١(۳ 7۹۱(‏ ١ا‏ ۸۱۔[1۱۔الھم [:+۹ا۔ 





)422 
ای ضمو نک مر بدآیات کے ووالدجات ب ہیں:(١)‏ 
[13] :ال دہان جا نے بہاد 
یی اکم اارشماد بارگی تھاٹی ے: 
ط اَلَدِیْنْ امنُوا وَمَاجَزُؤا وَمجاکڈؤا فیٰ سَبلِ الله باَموَالِهم وََْيهِمْ 
أَغظمُ دَرَجَةُ جِنْد الله وَأوليّكَ هُمُ الْفَائْزوِنَ “ ر١‏ 
نس جسصصعہ :”دہ جو ایماان لا ۓ اور ججر تکی اوراپے مال و ان سے اللہ کی راہ یں لڑ ےہ 





اش َال کے بیہاں ان کادرجہ پڑاےاورہ یم اکسج 
یھو نکی مز ر۴ آات کےتالرجات ہہ ٹل ٢)‏ 


[14): ججھادفرشش مین ے 
یلیم اکیہ ارشاد باریی تال ے: 
ط(یَئُهَا الَدِیْن امَسُوْا مَالکمْ اذا قِيل لَكُمْ افڑوا فی سبیلِ الله 
ا َلتْم الین الاززضٍ 3 
ترجمم:'' ےا یمان دالوا ش یھی سکیا لا واج ب نم س کہا جات ۓےکہ ندال کی راہ ھا ںو خکرولو 
وچ کے مار ےز مین پر ٹیہ جات ہوں' 
دوسرے مقام پہ ارشاد ارگ تعالی ے: 
ظط اِنفْرُوْا جَفَافًا و َال رم 
ترجمہ:' ار نگررگل چان سے چا ہے بھاریدل ے ۔' 
(١)۔"(1]۔اھ‏ ب:۲۳۔(٢]۔اھپ‏ :۵۔[۴) گر '"۔ 
(٢)۔۱ر!۲۔‏ 


(۳) ۔"(1)۔انسا::۹۵۔(٢]‏ ۸۱:۶۲ ۔(۳] ء2۱ ب:۸۸۔(۴]۔۱ ۵(٥:‏ ۔اافف:۷"۔ 


(٤)۔‏ :۳۸۔ 


(۵) 2۱ :5۔ 


روہ ور ار لہ وہ بد دہ بی ×× ہر بر چا ال للا و ا یر یں ود در بد و وت ول ول لد ال ا لع یلد یر بس بد و رہ رج و و وت ہت تہ × 








4232 


[15]: ادف شکفابرے 
تی اکن ارشاد باری تعالی ے: 
ط(ففصْل اللَۂ الْمُجَاهدِین بأفوالِهم وَاَنقهمْ لی الَاعِدِيِن دَرَجَاً 
غُلَا وَّد الله الخُسٹی >() 
رجہ :' ان خاانے اپنے مالوں اود جانوں کے ساتجھ جبارکر نے والو کا درجہ ڈٹے والوں رے 
بڈ اکا اور أنقہ خال نے سب سے بھلاٹ کا وعد وف مایا ا ںآیری کر بی سے معلوم ہواککہ ہا دفت سکفاى 
ا ےکیوکہ ہاوڈر شیژن ہو ن ےکی عصورت یس جتہاد نکر نے والو سکیل ابی اقب تکاوعدہ کیا جاجا۔ 
[16]: با خوں کےغلاف چہاد 
جییماکہ ادشاد ہار تا ی ے 
(فَفَايلُْاالََی تَبفیٰ نی تَفٰیٰء لی اَفر اللہ 4 () 
کہہے :'' سز بادف دالے ےلزہ یہا لت کک دوالل ول ےگ مکی طرف اٹآ ۔' 
(7]: وشن تما کرد ےا چہاوفر ین ہوجاجا ے 
2۰۱0 
مَا کان اهلِ الْمَدِينَة وَمَنْ حَوْلْهْم مُنْ الاغزاب ان بُنَخْلْمُوْاغنٰ 
شؤل اللو ولا نوا بای عن تہ ذِك بائیم لا یت کنا 
ُضَب وٌلَامَحْمَصَةٌ فی سَبیل الله (۳( 











شر جسمہ :ار ےرا ںاود ان کےگردد بیہات والو ںکواای یتھاکیرسولی ارڈ ا سے کچھ بی 
ات لاہ جال ن سے أپٹی جان ای جھییں یہ ا سل جک خی ںہیں پیا یا تکلیف ا بھوک 
اشری را۳ ہیل نی پن ‏ 

(١)۔اتشاء:4۵۔‏ 
.)٢(‏ ان رات:4۔ 
(۳)۔ اش ؛ ١٢۱۔‏ 


رہ 


[18]: چیب شی اکا "انت لر زنر نے 
لی اکہ ارشاد بای تھالی ے: 
ظ يأيُهَاالّذِيْنَ امَنُوْاإِذَا لَْيتُمْ الَذِیْن كَفَرُوْا رخف فُلا ؛ تُوَلُوِْهمْ الاذناز ) 
نر ےی :''اےابمان دالد جب کاخردوںن اشک تہ را تبیہ ہو اگیں دہ (۱) 
[19]؛ ذکوت الام د پے بی یھی کفار مل چا 7وت 
چیہ اکمہ !رشاد ار تعالی ے : 
 .-9 9 70‏ 
ترجمہ:' مرکو ںکو ماروچہاں پ٤"‏ 
(20]: جچیاد شی شکاف کی جائن اور ما ل تر میں 
ین اکمہ ارشاد اد تال ٤ے‏ : 
(مافحَنم ئن لَینواؤ ھا قاِعة علی آضونھا فیاڈن اللہ 
بھی الین > ۳ 
نتر کہ :”جو درختت نے کا نے با ا نکی جڑوں پنماغم سچھوڑ در تئئ یسب ال الک !جات 


س 
سے ھا اور ا ں مل ےک ماستو ںکو سوا تا 


(24]: جادگی تیاری اور مان چ ککی فراہھ یبھی فرش ہے 
0ھ ارشاد اریی تال ے: 


ط وَاَعدُوْالَهمْ مَااستمعْتمْ من فُوْة ومِنْ رٌبَاط الخْیْلِ تَرْحَبُوْنَ بە ذو 
اللہ وَعَذوكُمْ ۱4 

۔ا٥٥لاەن٣ا۔)١(‎ 

(۳)۔اڈب:۵۔ 

[۳). اششر:۵۔ 
1 ون ٦‏ 


دہ بعد دح یہ بر در در می ود جو و رھ و و ھی تر ید ید ۱ سح وہ حر ہبہ عو ید ور وھ و و یھ یر ول ود یھ اھ اھ تر اھ وا نک وھ و و یع * 















“7 


تع : ”اور نکیاع تیاررکھو جوقو ت نیس بن پڑے اور جٹ کھوڑ ے با ند سوکہ ان سے 
ان کے رلوں 2 0 نے یکنا یں ۔ 


۰ 


(22] : جنگ یل عد سے تھا زکی اجاز تال 
ماکہ ارشاد بارگ تَا لی نے 
ولا قفتڈوا )١( ٤‏ 
تر جمہ:''اررمر ےن راع“ 
جم دوسرے مقام پہ سے : 
( فَلَا غذوَان الَّا عَلَی الظالِمِیٰنَ ٭ (۲ 
ترجہ :' زیادگی یگ رنواللوں_'' 
: 
(23ا: یش نکی جنگ بن دی کی پیش قو لک نال زم ہے 
یی اہ ار شاد بای تعالی ے: 
ان نوا بلسّلم فَاخنٔخ لھا وَوْکَلْ غعَلَی الله 4> ( 
تر چیة: 'اززارس کی رف جو 7 یھ یمواورا ال برھروے رو" 
[24] : وش مسلما نو ںکو پراہ یآ زادی شردےاذ چہاوڈرنش سے 
یی اک ارشاد پاری تعالی ے: 
اَلَدِیْنَ خَرَخُوْا من وبَارِھخ بِفبْرِ حق الا ان تَقُولوا ربَُ الله ۹ )١(‏ 
سرد :اور جواپنگمروں سے ناتق لگا لے رف اتی بات پا نول ن ےکہاکہ 
جعارارب الد لے“ 
(ا)۔ ق0 +۹ا۔ 


.)٢(‏ القرو: ۱۹۴۔ 


(۳)۔ الانقال :۷٦۔‏ 


۔6٭:ا۔)٤(‎ 





([25]: جبکو وم دی نک ینکر ےا ان سے چہا وکرنابھی فرش سے 
می اکہ ارشاد بارکی تعالیٰ ے : 
( واِنٰ نَکَنوْا يمَانهُم مُن تقد ھدِھم وَمَعثُوا فی وین فنَابلُوْا 
أَيِمَةَ الکفْر 4 )0 


َ۰ یر ۶ و می والو “٦‏ 37 ط سک تر خر نا 
سر جسمہ؛ "اارا ریو ٹر کے ای ین یس او ر“ہمار ےد بین برمھ آ می سک لف ر کے سرخنوں سے 


7/+//++/٭/7/٭//+0|/۶٭ 


/۳٭//1۲/+۷// 
0/۳/7٦‏ 
۳/1 / ۸/7/۷ 
0/0/٥٢‏ 
۳ 





۱.)١(‏ ہہ ۴۔ 


یسب بی یں و و لہ دح اھ ا لہ اہ ہر ہر ہر ا ھت ئل ہہ ہر ور ھت ال رہ ور ہہ ہد و و و و رہ یہ یر ۱ 





27پ 








ے ہے صص ص سس تے ےت بب سس 


بل ہا ٹ پ4 
چاداعادیٹ کا شر 












مس" سے و ُ۔ ۰ 
٦ے‏ ھت 


(4]: وی نکی مس بلند کیل جباد 
لیم اکہبخاریت شری فکیعد یپاک می ے: 
عن ابی موسٰی قال جاء رجل الی النبی ٭* فقال الرجل یقائل 
للمغنم والرجل یقائل للذ کر والرجل یقاتل لیری مکانه فمن فی 
سبیل الله قال من قاتل لتکون کلمة الله ھی العلیا فھو فی سبیل 
الله ی٭ )١(‏ 









۰ 071 ھ۸ ٭ْ ا 
اسر جسوسہ : : حضرت اوہ ری ( ین ردای ت گر لیے جس ای تس اک ڈول بارگاەٹش 


: ہم 
سے ُ سے 
وا ء چس امن نے ۶ نپ یا این تعن مال یت ساےہ رج ے اورا 0 لع رن جا 






یس هَ 2 ۰ پا 
ال جیا ععت ہ رکا نے میا ٹر کے او اک ن یں ےون ثی ” 7 الد ےا آپ پ_لڑٹ نے ارشما وھ مایا 


بل 







کہ جوض لج جتھا2 2" باعل ہے دی ایل اشدرے۔' 


[2] :کلف حید کے پر رکیل جباد 


جیا ,)0) ک میں سے 
ان ابا ھریرۃ قال قال رسول الله ٭٭ امرت ان اقائل حتی یقولوا 
لا الٰہ الا اللہ فمن قال لا الٰه الا الله فقد عصم منی نغسه وماله الا 
بحقه وحسابه علی الله“ )١(‏ 


)١(‏ و ۴۹۴ .ابو دا نود :ا۳۴۸ ین نماک ۰٢ےے‏ ۔ جائخ القر ری : (۱۹۸۔ این بے ! ۳۰۶۔ 












(٢۔یئح‏ ہار :۴۱۴۸ .ضیف فی ۵۶۸۶۱ می لم اود :۴۷۷۱۔ 


وت بی بب ور ہر رر ہے رض ص سض سب سس ا سی برض ضس سض تب ص 





"جو ےی گا رق" ۔-۔ ےے تع رر کس س ت ے۔ ںا 






















)28( 


ند نر نر ود حر حور حور سوہ مد ویر و "اہ جار وہ ود بعد دع سر حوجعہ ور بعد و حر و ہے ؛ 








پر جصہ :' نضرت ابو ہریرہ :ید خر ماتے ہی ںکہرسول ماک ون نے دشا ذف ما ا کیہ جھے ےگ دی 
سے ےت بس نے لا اللہ الا ال ہک لیا 
اس نغگو ہہ سے اپنافس اور ما لگھفو ناکرا موائے الام کےعقن کےاورأ کا ساب الد کے 


“ 
کرو کت 
رڈ 


(3ا: چھادٹی سیل ال رکا م 
جہ ا٢‏ ل۔عد بث پا ا پک یت ا 
ان ابا ھریرۃ سمعت رسول اللّه ى" والذی نفسی بیدہ لوددت 
انی افتل فی سبیل الله ثم احبی ثم اقتل ثم احبی ثم اقتل ثم 
احیی ثم اقتل ٭ )١(‏ 
زنر ید :''حضرت ابد ری لہ نے نی پاک ہکوہ ارشادفر ماتے ہو ئۓ سن اکیڑ ”لفحم ےا س 
ار گی ہیس تق نر تب یر یجان ہے! الہ شی چا ہتا ہوا نین ا راڈ لشبیرگردیا 
چاؤں ء گر ٹیس ز مد ہکا جائؤں ؛پچھر بیشن شہیرکر دیا جال : نچ ریش ززمد وکیا جائؤں :پھر بی شمی دگردیا 
جال :ھٹیس زندہکردیا چاؤل ء پچ ری شی رکرد یا ہاؤں ۔' 
چہادٹ ی مل اللہ بدجگرآحادیٹ کےوالجات: (۲) 
(4]: ییہودلوں کےغلاف چاد 
جب ما حر مث ایک ان ہے 
ظ عن عبد الله ابن عمر ا نَ رسول الله قال تقاتلون الیھود 
حتی یختبئی احدھم وراء الحجر فیقول یا عبد الله ھذا بھودی 


(ا)۔ ار ك: کی :۶۹۳(۱ ۔ءع نشم الی: ۳ ء۔ اع و : 1۹2۔ 





رھ 


٠‏ اہو ٠‏ فا ا۱ء ا 
(٢)۔"‏ این اہ : ۶٢۰٣۔‏ جاشمع اتھر ری :1۹8۸۱ جا یع ال نکی وی 1۔ بجائع ال دی :۱۹۹۷۱ ۔ تعن اتی :۵۸/۳ ۔ 






تع می لئ ۔ من ای۱۳۱ ۱۳ .ننس ا۵۹7۳ ۰ تن ائی :۶ ۳ے ار را ڑر :1 ۳۴۳۴ او زا ر۳۴۵/۰ اوراژر :۱ل۳۳۵۸٣۔‏ 








ظ و , 
او اود :۱ /۳۴۸۔ جح ببفاری ۱۰ / ۳۹۰ جح بڑارل ۳۹۷۱۱۱۰ ٤‏ بخادکی ۴۹۴/۱ صن ضککی ۶ نے اض اترزدل ۵/۱۰ 























ورائی فاقتله ٭ )١(‏ 

زیر ےد :”'حطرتکبدالب نگ رید رواب تک تے ہی ںکددسوگ پاک پٹ نے ارشادف ایانم 
بیبددۓلڑر یے مرج گے ببہاا ں مت فک ان "ا ں ےکوی پھر کے تی ےگا نو وہ پچ کہ ا ٹ کے 
ان کے ہناد ہے !نہ پیبودگی مہ رے کچھ ہوا ہے نی سکم ا سے وت 


(8|: مشرکین کےخلاف چماد 
یم اک عد یٹ پاک ئل ے: 
عن ابن عباس رضی الله عنە فقال رسول اللہ اخرجوا 
المشرکین من جزیرۃ العرب ٭ )١(‏ 
تس سد :''نطرت اہن عراس :ید روا یر تکر تے ہی سکہدسولی پاک پٹ نے ا رشادفر ما اک 
شر نکو زسیک رب سے کال رو 
سم ضوع کے م یر جوالہرجات یہ ہیں :(۳) 


[8]:جان دمال ے چہاد 
ماک عد بن اک مل ٗے : 
عن ابی سعید عن النبی 4 اه سئل ای المؤمنین اکمل 
الایمان قال رجل یجاھہد فی سبیل الله بنفسه وماله 4 )١(‏ 
سر ہج :''نطرت الوسعید عدہ روا یکر تے می ںکیی اک پل سے لہ ماگ یا کال ایمان 


والاگون ے' و1 پ نے ار شادفر مایا ای وا گی اشنا ا جان‌ادءبال سے چچہادک رتا ےب 


(7: جھادف رن لکفابیرے 





۷0 ار ی۳۳۹(۱۰۔ 
(۳) ین ما گی :۵۴/۲ او دا7د :۳۴۷ تتل ٣١۱۹:‏ 


(٤)۔ادا5د:‏ ۳۳۱ ۹۱ ۴ تن نکی :۳ ۵۔ 




























ظ ان ابا ھریرۃ قال سمعثٰ النبی ٭ة یقول والذی نفسی بیدہ لولا 
ان رجالا من المؤمنین لا ثطیب انسھم ان یتخلفوا عنی ولا اجد 
ما احملھم عليه ما تخلفت عن سریة تغزو فی سبیل الله ب٠ )١(‏ 

نر ید :''مخرت ابو ہرمر دید ردايیت کرت ہی ںکہ شی نے اک پڈللاکو ریف مات ہو ۓ 






اکم ہے أ مس ذا گی بھی کےے قب قد رت مین غیرکی جائن ہے ا کہاگ سب من میہرے 
ایر بہاد بیس جا کیل خوش جو جاتے اورمیرے پا سب مو مو ںکیلےسوار یا بھی ہ تی سای کسی 
ھی ایی غزد ے ہیل ش یک ہد نے سے نرہ جا جا جواللہ پل کی راو ہیں کیا ہو_' 
[8]: جچپااٹرب قیا مم ت کک چارکی ر ےگا 
جاک حد یٹ پاک شل ےے 
عن عمران بن حصین قال قال رسول الله ۶ لا تزال طائفة من 
امتی بقاتلون علی الحق ظاھرین علی من ناواهم حتی یقاتل 
اخژھم ایخ الدجا ل 04 
نس :”نع رتگمران بین صیشن نٹودفرماتے ہی ںک ہنم اک چا نے ارشادفرمایاک ری 
امت یں سے پمیشہ ایک جماعحت تن پر جہادکرتی رر ےکی اود دہ پردھ شن پ الب بھی رہ گی یہاں 
ت ککہ امت کےا خی افرا دقن لیڈ جا لک لکردیں۔' 
[9]: چہادڈل پل اورگرررڑں گا اما لعتع 
یم اک حد یٹ پاک ٹل ے: 


ط عن ابن عمر قال وجدت امرأۃ مقتولۃ فی بعض تلك المغازی فنھی رسول 
الله عن قتل النساء والصبیان 4 
(1]سج امل: ۳۴۹۲۸۔ 


۔۳١٣۳/۱:د2اروا۔)٢(‎ 





431 
پر مہ و حفرت اہ ن عفر ماتے ہی ںکی نز دومج ایک عورتمقتول پاک یئ اك 
لی نے کوراؤں اور یو ںکڑ کر نے سے نع فرمادیا۔' )١(‏ 






[10]: شون یں ہلا قصدعورٹوں اور پچوںل کے مارے جات کا جواز 
یی اکرعد بیشہ پاگ ٹل سے : 

(عن الصعب بن جثامة قال سئل رسولُ اللله٭ عن الدارمن 
المشرکین یبیتون فیصیبون من نسائھم وذراریھم فقال 
ھم منھم ٭ )١(‏ 

نیز ےہ :' حضرتصب بن امہ :ٹل فر مات ہی ںکرسول اک پا ےکن لکیانگیاکہ جب 
بھی مش کین پرشب شون باراججاۓ اوران کے یچ اورگو ری بھی ںکردکی جامیں تو ا نکاکیا 2 
ہے؟ )ذو شاوفر ما کرد وی أغھیں (لینی اپنا با ء اٹ سے ہیں( نی ہس پرکوٹ ناش )۔' 

[11] : کفار کے درضنے ںگوکا ۓ اورچلا ےکا جواڑ 

: 


یی اکرحد بش اک بیل ے : 
ظعن عبد الله ان رسول الله قطع نخل بنی النضیر وحرق () 
زنر چیہ :''خفرت عبرائلہ یہ روای یکر تے می کب دوگ اک پٹ نے قویلہ نشی کے درخت 


کٹو 1ک رجلواو یج ' 


























[12]: ین کے مھا ےکی رز وکرتا ان 
یی اک حد ٹف پاک یل ہے : 
ظ عن ابی ھریرة ان النبیغة قال لا تمنوا لقاء العدو واذ ا لقیتموھم 
فاصبروا" 


(۱) .یسل :م۸۸۶7 .شع ائر ود :۵ ۳٣۵۰۳۱‏ جائع انت ندکی: 1۹۰۸۔ 






(٢)۔‏ ج ۳م:۸۳۲۔ 





و 
٢1‏ مل :۶ ۸۵۔ 
سس 


































432( 





رح حر لع یر و یہ دی رر تد ۲ 


نسر چسجہ :' ارت او ہر ریہ روای تر تے ۴ ہیں۲ لی اک ڈی نے ار شھادف ما اک لم دن گن 











ے ما نے رف یلروازر جب دن سے مقابلہ ہو چا ے ص رک مظاہ +کردمشنی ما تدم 


)١( رگ‎ 


0 7 ب9 0 
یم اکرعد یٹو پاک شل ے : 
(عن عبد الله بن اوفی قال دعا رسولٴ الله ٭ علی الاحزاب 
فقال اَللهم منزل الکتاب سریع الحساب اھزم الاحزاب اَللھم 
اھزمھم وزلزلھم ۹ )١(‏ 


۰ ۵رہ 7 ٭ 
سر جےمےے: خظرکبرالر مسر اتی ہیں کہ رعول اف ہہ ےا7 اب 





نکفار ےگ ہین ) کے خلا ف ڑ واۓ ضر ری ۔ ۔ یں آپ نے ونما کیک اےائقد یع !ا ےک اب 
کے آنجار نے دالے ! اے عجلعدضاب سے دا نے !ا اے اللہ لن !ا نکفارگرگست زے اور إ نک 
منزلنرل (سننی ڈ ہانواں ڈھول )کر _ 
(14]: نگ بیس دعوکاد ینا جائز 
می ماکرعد پیٹ پاک مم ١ے‏ : 

ظط عن جابر قال قال رسول الله ٭٭ الحرب خدعة 4 )ك٢‏ 

نس سد :منرت جابر :نہ روابی تک تے ہی ںکدرسولل پاک ون نے ارشادفر ما کیہ جک 
7ے" 





[5 1: ود لو ںکوس زین عرب سے با 2 2 
چیا حر حا ا ہن ے؟ 





7س 
():ج ۸۷۶۳ 
(۴) جج :۸۴۶ 


سی پر7 1 
[۴) ریلم :۴۲۔ب بفاری: ۲۴۵۸.+ا۴۹۷۱((:۶۔ 


ٹہ ہت چرچ ا :فا ا اہ وہ ہہ یہ در رر و یت وا لہ لہ لہ ہہ ہہ رر ہر و ا ا لک وع رہ یر ہہ یں ہت یت 
























ظیقول جابر بن عبد الله اخبرنی عمر بن الخطاب انه سمع 
رسول الله ٭* بقول لاخرجن الیھود والنصاری من جزیرۃ العرب 
حتی لا ادع الامسلما ٭ )١(‏ 
تر جمہ: 'حطرت اب ہنی عبدرائن عفر مات ہی ںکہ شتعطرم تعھمرجن خطاب دید نے بای اک 
رس پاک لیے نے ارشمادظ رما کہ یش بیبددبیوں اورحیسا یو ںکو جز م٤‏ عرب سے ضمرور کال دو ںگا اور 
بہاں وا لوا کی ہیل رۓدوں 7 
[16) :جب حاکم جہادکیل عم دے نے س بکا لن فرش ہے 
ماک ہمد بی ید یآ بی بے ؟ 

(عن ابن عباس قال قال رسول الله 8لا ھجرۃ بعد الفتح ولکن 
جھاد وئیة وان استنفرتم فانفروا  )١(‏ 

زنر ےد :منرت اہن عبااس دید روا تگر تے ہی ںکی دوگ پاک ڈٹ نے اشا کن کہ 
کے بعد بجر ت نہیں ےکی چمھاداوریت ہے اوداگ ہیں حاکم وقت ماد رکیل طط بکر ےو تم ضرور 








چرا کنل کو“ 
[17] :الد نکی اجازت کے خی چہادنا چائز 
یی اکرعد یپاک مل سے : 

طإ عبد الله ابن عمر بقول جاء رجل الی النبی ٭٭ فاستاذن فی 
الجھاد فقال اَحَىٔ والداك قال نعم قال ففیھما فجاحد ۴ () 
زنر چچیدے:' معٹرت برای ن گر فرماتے ہی کرای کٹ بازگاورسالت ےن ماضرہوا اور 
چہادکی اجازتطل بک ف آپ نے نے ارشمادف ا اک ہکیاتمہار ے الد بن زندہ ہیں؟ تاس نے عرش 
)١(‏ یج :۳۸۳ 
(٢)۔اءل:۳۹۰۸۔‏ 


(۳)۔ ٹال:۳۴۷۸۰۔ 


ںہ سح حر و ول یر کہ کہ 





















اہ ہاں !نو آ آپ لے نے ارشادظر ما کیب دالد ی نکی غدمت می ں وش لکر ' 

[18] :7پ یکاف کلت ٹیل مارنا جا ئز 
ججیماکہعد یمٹہ پاگ ف ہیں ہے 
ٹعن جاہر ابن عبد اللَه ان النّبی ٭: قال من لِکعب بن الاشرف 
فانه قد اذی الله ورسولّه قال محمد بن مسلمة اُتحب ان اقنله 
یارسولٴ الله قال نعم قال فاتاہ فقال ان هذ ا یعنی النبی ۂ8 قد عنا نا 
وسالنا الصدقۃ فقال وایضا واللّهِ لتملنه قال فانا قد اتیعناہ فنذکرہ ان 
ندعه حتی ننظر الی یصیر امرہ قال فلم یزل یکلمه حنی استمکن 
منه فقتله ٭ )١(‏ 






نسر کہ :'' نرت جابر بن کہرالنر خٹاند رد ای تںکر تے یک ہبی اک پل نے ارشما وف ما کیہ 
کپ ایا شر فکوکون پکڑ ےگ ؟ ۴ ول وو الٹراورا کے رسول پٹاکو زیت د ینا ے نو مر بن و 
اہ نے ع کی ما رسوآن ال لی ایا آ ئک ا بے ہیں ؟ فو آپ _لٹے نے رما کہ ہاں را دی 
کے ہیں کیج ین سم رن کعب ا ن شرف ےئ ۓ او رگا کہ ینش(لن مر ین ) نے ہیس 
گی مشققت میس ڈالا ہے اور ہم سے صدقہکا سوا لکرتا ہے ۔دادئی سکیتے ہی ںککحب بن اشر فکتاے 
دای مر یق اس ےگ پٹ و گے مھ بین لہ پل کت ہی ںک ہم نے ا نکی پیر دک یکی ہے ہ ماس 
/ او سے وو سی مز یں ؟ اب مم نو اس با ت کا اتا رکرد سے جج ںکہ۶ ںکا موا مل کہا ں تک تا پاے؟جر 
ری لی جوف لس یک کر تج رہ ہا پر اس پرفدرت عاص۰ لکل ار ےا نوا 


اب |ںعر ہش ہے مابیت ہوا سے یکا ف رولت ٹیل مار نا جات ہے لہ ا کی جن سلہ جاپلن ےکیا۔ 


[19]: یک می ںکھوٹ اولنا جا 


)5د43 

٦‏ یج انی مال علزائی ھتان سکس یس اف 
فقال محمد بن مسلمة اُتحب ان اقتله قال نعم قال فأذن لی فاقول 
قال قد فعلت ؟(١)‏ 

سر کہ : ''حضرت جابر بن عبدادول ینہ روابی کرت ہی ںکی اک پٹ نے ار شادفر ماک 
کحب بین انشر فکوکون پگڑ ےگا ؟ و مد بنسلممہ لد نے عرش سک کہ یا رسولن اوشد چٹ کیا آ پ أ کا 
فی چان ہیں ؟ ت آپ پولنے رشادفر ما کہ ہاں !تة مھ ین سلمہ نے عون ک کہ با رون اول ١‏ 
نی رج کن ےکی احجازتد یی ( فی باک "وٹ نے اجازت عنایت فر مادکی ) و مج من سلمہ ود نے اپنا 
کا مگ لکیا'' ان کےا گے دی ٹیس ود الفاط ہیں جوگزشننعد بے نل کے می ہیں 


یں ال حد بیث ۓےغا رت کہ نگ بی کر یصأ کچھوٹ اولنا جات سے جیا رس 


(20): جا ںو کن کا م 
جیماکعدیث پاگک ش ے : 

طعن ایاس بن سلمة بن الاکوع قال اتی النبی ٭٭ ین من 
المشرکین وھو فی سفر فجلس عند اصحابه یتحدث ثم انفتل فقال 

النبی ٭* اطلبوہ واقتلوہ 4 )١(‏ 
نس سکس :مر تا اس ین سلمہ بن اکوئ :شش ددوای تکر تے ہی ںک ین پک پٹ کے پا 
مکی کا ایک حجاسو ںآیا اس عم مہ تھے ہو دو اوس صا :کرام کے جمراہ 
رو 7 نے کلک پڑ اچ روو اٹ کر چل کیا .یں نی باک _پٹنے ار شادظر ایک ہے کل 


3ز 
/رروں" ۔-‫ 


[2۹):دپاےتصول اکسلئے چبادکر ن ےکا اک نوا یں 


مم مم 
جا اعد مث پا ا 
(۱)۔طال:/۳۷۵۔ 


(٢)۔‏ فا رل:ا(۲۹"۔ 


سس ص یس ص ص ضصضصضض ضصضص تل تنتےے 




































عن ابی ھریرۃ ان رجلا قال یارسول الله ٭٭ رجل یرید الجھاد 
فی سبیل الله وھو یبتغی عرضامن عرض الدنیا فتال النبی ع 
لا اجر له ٭() 

نر چمد :' رتا ہر روم ردای ٹک تے ہیں کرای کین نے رسولی پاک پا ۓْ 
جزن شک یکہ ای کننش اد ئی سیل ا شر ے اور دہ چاہتا ےکہد ٹیا کا ذائندہ عاص لک ے و آپ 


حم 


پیلانے ازشادفرما ای ام سکیا ےکوئی ات یں ۔ 
(22]:ر ہا کا رکیل چہادی سکوکی نو اب یں 
تیم اکرحعد بیشہ پاک میل ے: 
(عن عبد الله بن عمرو قال یارسول الله اخبرنی عن الجھاد 
والغزو فقال یا عبدالله بن عمرو اِن قاتلت صاہرا محتسبا بعٹك الله 
صاہرا محتسا واِن قائلت مرائیا مکاثرا بعلك الله مرائیا مکاثرا 





یا عبد الله بن عمرو* ر() 
نز یہ :”منرت عبداوند نممروعپلدد روا گر تے ہہ ںک بیس نع کی یارسول الد چا 
گے چاداورثال کے پا ےر دی تو آپ نے ارشادفر مایا کہ اگ رت ان عائ لک نک 






نیٹ سے با دکر ےو الد تقوالی مھ مصرکر نے والا :ڈو اب خطل بک نے والا اُٹھا ت گا اد رارف ریا کاری 
اورشظ کے اما رکیل جہادکمرہ ےو دای تھے ر با مکاراوتھ رک نے والا )ھا ت ےگا“ 
+/+/++//+/7/٭7/٭ 
ج ۰/1 ٭ 
1 //٭/٭ 


۔۲٢۸/ )۔اوداور؛‎ ١) 





)٢(‏ ۔ااوراژر:۳۷۸۶/۱۔ 


سے رض رر ٹر ربص ص یب سی سی سض سس نے ےک کہ ہہ ہہ ہک ہک کہ ہک ہک کہ ہہ ہے ہے 






















437 
اٹ 
چہادف تما راورعلماء ک٤)‏ قو ا لکی ردشئی یش 


0 0 
اکب فرش مین ہوتا ے؟ فقہا نا فکانظر ےپ 
ما اہرشمجھود بن ا تھدمیی انی رد انی )فرماتے مہ : 

ط اذا کان النفیر عاما بان لا یندفع شرالکفار اذا ھجمواببعض 
المسلمین فحینئذفیفترض علی کل واحد فیقاتل العبد بدون اذن 
سیدہ والمرأۃ بدون اذن الزوج.... الخ 4 )١(‏ 

زنر یہ :'' جب عام لکل نے جاۓ با ہیں صور تک کذار نے جب بی سلماوں پ چم ہکیااورکذا رکا 
دوس ہور پا چرس وقت ہرسسلمان پر باون کین ہو جا گال خلا مآ تا کی اجازت کے ایر 
اوزثوارت آپے نماوندکی ا جات کے اغیر چم رکی یی ی3 

لا مایا رگی تقی(رد: مد فرماتے ہیں : 

ط فان کان ھجموا علی بلدة من بلاد المسلمین فیصیر من فروض 
الاعبان سواء کان المستنفر عدلا او فاسقا فیجب علی جمیع اھل 
تلك البلدة النفر ٭ )٢(‏ 

زنر جحید :اپ ج بکذارسلمانوں ک کی ملک پرعلآدر ہو جاتمی فو جہادفر ین ہو جا ۓےگا 
چا سے جہادکاعم د نے والا عاول ہو یا فامن ۔ ہل اس ملک کے قمامفراد پہ چہا دی ےک کر ڈنل 
ین رگا 


(١)۔ال‏ نا( نی اشرحھدایے:۴۹۲(۱۔ 






















(٢)۔م‏ رت7 الذاج شرع مگوررے/۵١۲۔‏ 


_3807 


زس تک رقف علے) فرماتے ہیں 

او گاعحفایہ اسد صا ظا نی 

الیه بقدر طاقته وھوما اذا کان النفیر عاما قال الله تعالی '' انفروا 
خفافا وثقالا “4 )١(‏ 


نسر ججہ : ' رف بادی و ود و ہیں ہن یل ے ایک فرش مین ےک < ن بکاز ء لہ 








‫َ 


کر نے کاو مم جا فو نس پر پر ایا تاورطاتت لاق از ا ین تا ظز 
أندتعا ی ار شادرا ھی ے۔' انا ضْ ق خفَاقَا وَرقَا ل9 _' (ال 0۸ے ترجیہ''' کو کر 
1 


بی جان سے جا سے بھارکی دل سے 6ت 
کک المامما علا کیا سا ی١‏ رت انقدعایہ ) فزات ہیں: 

فاما اذا عم النفیر بان ھجم العدو علی بلد فھو فرض عین یفترض 
علی کل واحد من آحاد المسلمین ممن هو قادر عليه “ )0 

نسر ےد :”نس جب لمازوںکو جبادکا عا مم ہو جاۓ ائعر حک ہشن سلماوں کے شب پہ 
ملآورہوچا کے افش مین ہو جا گا 7 بی کان ات چا دکمر ےکی طاقت رکتا ا 

عا مہ لاپین اھا لع کی (ردۃ مع ) فرمات ہیں : 

کر فی الذخیرة فاذا جاء النفیر انما بصیر فرض عین علی من 
یقرب من العدو وھم یقدرون علی الجھاد 4 () 

فنسر ہے :' ذ تر :ا یکاب می سکیا ہوا ےک جب جہادکیل رذ انہو نک ئل نک جا فو جو 
و لہ یں 27ھ نے بنقاددشھی ہوا ںان مارڈ۶ لین ہہ جا ۓگا۔' 


(۱): مال ری:۴۸۰۔ 
(٢)۔‏ جدائح اص ئحع:ے(۹۹۔ 
ضر اس پور 


وع ہر حر اہ وہ اھ ہچ لہ و رر رع ہر ہہ کہ حول و ھا لا را یہ رر وٹ ا و یل اہ وہ ہہ یر یہ ہد :ھت اھ وت ھت وہل ور ہر رت 






















(9ة) 


علامہ پا ری سی (رش: دض عیہ )کھت ہیں 
ولان النبی ‏ کان یخرج مع تخلف کثیر من اھل المدینة 
فعلم بذلك اختصاصه بالنفیر العام ۹ )١(‏ 


تو جچہ:' اجوہ ى اک نے جار لئے ش ریف نے جا ےے اور بت سے سال زی نشم )گرا گی 







ارت ار چوڑ جا لو یی ےمم ہواگہ چہادڈرش مین أی دقت ہوا تب چما دکیلئ : 
ران ہو ن کا عم عام ہوگا۔' 

رخلازن برع زرماعگی تلی(ردہ: غ' فرماتے نہیں : 
ظإ اذا جاء النفیر انما یصیر فرض عین علی من یقرب من العدو 


وھم یقدرون علی الجھاد * (۲) 
سر مسمست : جب چمارکلع عام نل جا فو جولوک و 0 سر ہوں اود چہادکر نے پ 






آادرکگی ہوں نو ا انہب ھ4 جار رش مین چا ا ا 
(فتہا وٹا ن ےکا لظرے 4 
07 20 رما نون 
الا ان تدعو الحاجة اليه کان یدھم العدو وبتعین علی من عینه 
الامام ٭ ٦.‏ 
ْ نر ےج :''فر جب چہادکی ماجت تاہیں 
لا زم ہوگا یا ا 0 رر 





خلا وگیا ش انی ( رم ان لی ) ما ےون 


۔۱٢٢ اعنابٹ انس سن قد ر۵‎ (١) 





-)٢(‏ بین کی شر حکنزالرقاک: ۲۴۲(۳۔ 


(۴)۔ از ریش رم بیادی٢۶۸ث٣۔‏ 























440( 





ا دہ ہر و تد ۲ 








”ادگ دسری تفر بن ہے اور یرس دقت ہے جج بکفامسلراٹوں کیشپرد کو اما کرد ے 
ہوں یائسلمافوں پرقملہگر نے کے ارادے سے شبرو لک سرحدوں پر ہو چا یں اس وقت ان ے 
چمادکرن ڈر نین ہوگا۔'(0۱) 

زفتہاعب ےباظرے پ> 
لام إ یشید اھ شی (زر :یہ ) فر مات ہیں : 

ظ ویتین الجھاد فی لثة مواضع : احدھا اذا التقی الزحفان 
وتقابل الصفان حرم علی من حضر الانصراف وتعین عليه المقام 
لقوله تعالی'' یابھا الذین امنوا اذا لقیتم فثة فاثبتوا'(الانفال ؛ )٥٤‏ 
وقوله تعالی'' واصبرو اان الله مع الصابرین “( الانفال:٤٤)۔‏ الثانی : 
اذا ٹزل الکفارہبلد تعین علی اھله قتالھم ودفعھم ۔ الثالٹ: اذا 
استقر الامام قوما لزمھم النفیر معه لقوله تعالی'' یایھا الذین امنوا 
مالکم اذا قیل لکم انفروا۔''(التوبہ:۸٠) ‏ (۲) 


٠َ‏ را ا و و ے 
تسر جمہ: 'متررجز گی مین فسورنوں یں چہاد فرش کین ہوا سے۔(١):‏ نب نیف ہہورنی ہواور 

















دوٹوں طرف سےٹو نیس ص فآراء ہو ں ئڑ پچ رسلمانو کا میدرائن جک سے چھاعگنا اور پیٹ دکدا نا ترام 


ےکی نک ہد نال یکا ارشاء ہے اے ابمان والو! ج بتہارادش نک وج سے ھنظا لم ہوک خابہت یرم 






رو ۔اوردوسرے مقام پر ارشمادفر مایا پ او رص گر کیو یٹ تھی کر نے والوں کے سا تو 7 ت 
(۶)؛ چے لباوں کی 7 رم ہآ ورہویں نو ایی شب ےکسا ائوں 7 نے جن رن اور نکو 
بھگانا فرش خی ن ہوگا.۔(م): جب امیر کلت با ومام وش تی تو مکو جا کیل بلا ۓ و ان پر چہا دکیلئے 
جم ض رہم فرش جن ہ وگ کمیونک ہد تھاٹی نے ارشادف مایا کے ایماان والو انی ںکیا کیا ا7 
ے الیل دکی راہ یس مکل کسلع| اما زین سے بی فںگرر و گج“ 


(۱)۔.ردتت: نل لانیین کروی ٢۷۸۸۷۸۷۰۰۱‏ 








)٢ ۱‏ اک لان تر ان :۸ اتا 


کے یس اض خی یضر بر بے ےک کک سو ا اک 









41پ 


تح سد ال و تہ اد ید تد لد وت لہ چک " 


(فقہ ءال ےاظر یپ 
نک شناقی لی ماگی (رت:ض) فرماتے ہیں: 


ٌ" 0 روویہ؟ ٤‏ ' 7 سے ٭ 
(|۵ 2 کاب الم می سادا ےکی جومسکائنع دص نان اسلام کے نلرب 


















۰ 2 ٭٭ وہ ےھ لج کے َ 
ہو اوروہ باارۓے برتقادرجھی ہوں نو ان چہاوک نا فرش حیان ہوا سے ۔ اک ط را زی نے 


ص ۰ یھ ۶ ا ا جو ۴ ے 
کےمسلمانوں پکفا رتملہکر یں فو ڈن پر چہا کر فرش خین ہہوتا سے ۔ ای طرع اگ کی علاتے کے 


ا و ا و مھ کی ا دا 6 
کساالواں رد غنن تم ل۔کرے اورو١|‏ ل کے وفا کی طاشت بھی ر کک ہوں نو ان پیر چہاد گر ناش رس مین 













)١(' ہوا‎ 


7۳ : ہے 


سم 
طفتہا ئآ حا فکالظر)ە 

لاسما ان 

فان لم یکن النفیر عاما فھو فرض کفایة ومعناہ ان یفتر ض علی 
جمیع من هھومن اھل الجھاد لکن اذا قام بە البعض سقط عن 
الباقین لقوله تعالی''فضل الله المجاهدین باموالھم وانضھم 
علی القاعدین درجة وکلا وعد الله الحسنی “ (الناء:٥۹)‏ ولو کان 
الجھاد فرض عین فی الاحوال کلھا لما وعد القاعدین الحسنی 
لان القعود یکون حراما ولان ما فرض لە الجھاد وھو الدعوۂ الی 
الاسلام واعلاء الدین الحق ودفع شرا لکفرۃ وقھرھم یحصل بقیام 
البعض بە وکذا النبی ٭٭ کان یبعث السرایا ولو کان فرض عین فی 
































442) 


ولا اذن غیر ہ بالتخلف عنه بحال 4 )١(‏ 

سر کہ :ٹپ اگر چا دکیلۓ ردان ہو نے کاعکم عام نہ ہونو چہاد ہر م فیس مرش غاب ہوگا جھ 
چمادکر نکی ا لیت رکتا ہے جب ٹچنفس مان چہاجکریں کے اتی مس ائوں سے فرش سما وط ہو 
جات گا ینک ہل تمارک وتھالی کا ارشادگراھی ہے ۔' ہلل نے اپنے ملوں اور بانوں کےسراتھ 


چھادگر ے والو ںکا والوں رج بڑھادیا اور اش ا ی نے سب سے ب؟ھلا یکا وعد ٥کیا‏ تا 






لان ہا فرظ 9 ن متا نو ماد شدکگر ے والوں ے ال یا کی بھی عاق ہت کا وعدہ شک رت اور 
سار ےکور پ4 یز بنا تام ہوتا۔ یز جہاد ا سمل فرش شکیاعگکیاے ما کہ اسلا مکی دگوت دکی جاۓ 
د ین یکو بل دکیا جائۓ ؛اورکغاد کے شراور ان کےیرکودو کیا جا اور مرجم ںہاراوں کے 
چمارکر لی سے پودا ہوسا ہے ۔ می وج ےک رین اک بای کر روانفر ماد تے اورٹوونٹریف نہ 
آپ 


کے ات :بین انکر جارڈشل نی ہو لو 


8 زوا شرکگرد نے کے بعد خودن ٹیش ر تی اود نت یی 
مسلما نو پھر ہے ا مجارت فان -' 


0207 برمی ٣سن‏ ف رما نے کین : 
الجھاد فرض کفایة وقال ابوبکر الرازی فی شرحہ” مختصر 
الطحاوی' الجھاد عند اصحابنا فرض علی الکفایة مثل غسل 


المو تی وا لصلوۃ علیھم و د فنھم و طلب علم الدین وا لقیام بە و 
تعلیمه ۴ )١(‏ 


پر کے٭ہ٭ :'ججبادش کذایہ ے اور علا مہ ابوگررازگی نے" شر مخشقھروادی' فر مایا ےک ہمارے 
اجاب کے نز دکیک ججھادف کفاہہ سے شس طر کرد ےکونسل د ہنا او راز جناڑہ پٹ ھا اورمی ٹکو 
نکر او یلم وین حا لک رب ادرکھ نا یرہ ۔' 

علا زا سکیا ری تی( :دی ) فرمااتیں: 


(1)۔ بائح اصناتع:ۓ/۹۸۔ 






















(۲)۔ا ای( یٹ )ام ئھداے!۲۹۷۷۔ 





443) 

طئم الجھادفرض علی الکفایة فلان المقصودلیس مجردابتلاء 
المکلفین بل اغراء المکلفین ودفع شرالکفار عن المؤمنین بدلیل 
فوله تعالی” وقائلوھم حتی لائکون فتنة ویکون الدین کلە للّه'' 
(الانفال :۳۹) فاذا حصل ذلك بالبعض سقط عن الباقین لحصول 
ماهو المقصود منه کصلوۃ الجنازۃ المقصود منھا قضاء حق المیت 

والاحسان اليه )١( ٠‏ 
نر جحصہ :' پھر جوف کنا ےکروکک چہاد ےٹتعھو ڈنل اوگو ںکزنکلیف میں مت اکر ناکھیں 





پگ رملمانو ںکی عمزت بلن رک رم اور منوں ےکا رکا شر دو رکر نا مقصود ہے جیا کہ ارشاد باری تال 
ہے اوران ےکر تے رو ہا ں٠‏ کک تن شر ے اورد بن سا را رکیل ہوجاۓ ے 00 
مق رلض کے ساتھھ واضصل ہوساجا ےن ای ہنضس سے ججہادساوط ہو جات ۓگگا شی نمازہ نان کیہ ای 
سے تحصودمی کا تن اد اکنا اور الپ !سال نک نا ہے" 

علامہ لا ریا وکا ھ سی (ر" عیفر ماتے ہیں : 

ظ فامامن ورائھم یبعد من العدو فھو فرض کفایاحتی یسعھم ترکە 
اذالم یحتج الیھم بان عجز من کان یقرب من العدو من المقاومة 
مع العدو اولم یعجزو اعن المقاومة الا انھم تکاسلو الم بجاهدوا 
فانه یفترض علی من یلیھم فرض عین کالصوم والصلوۃ  )١(‏ 

ترجمه ذ یں جولوک وشن سے دورہوں ان پر چہاوفرش ضپکطاپ ےت کہاگ نکی ضرورت نہ 
بے ا نکا جبادنرکرنا انز ہکان اکر نکی ضرورت پٹ جا بای صور تک ریب والےملمان 
نی رن تا پیک نے سکٹرورہوں ماد مت یکی وجہ سے جچباد نکر میں فو پھر جومسلران ڈن سارانوں 
کےقرجب ہیں لن رمماز ؛دوز کی ط رح چہادیھی فرش مین ہو جا ےگا 


و ا 
(1) .مر قالطا جع شرح تن 79:ع/۱۵٦۲۔‏ 


۔۱۹۲/۵:یدقلا۔)٢(‎ 




























فلا ی0ا7 2 رکا 7 

ظ ثم الجھاد علی نوعین: نوع هو فرض علی الکفایة اذا قام بە 
البعض سقط عن الباقین لحصول المقصود وھو کسر شوکة 
المشرکین واعزاز الدین لانه لوجتل فر ضا فی کل وقت علی کل 
احد عاد علی موضوعۂ بالبعض والمقصود ان یأمن المسلمون 
ویٹمکنو امن القیام بمصالح دینھم ودنیاهم فاذا اشتغل الکل 
بانجھاد لہ یتفرغوا للقیام بمصالح دنیاھم فلذلك قلنا اذا قام بہ 
البعض سقط عن الباقین وقد کا ن رسول الله ٭ تارۃ یخرج وتارۃ 
یبعٹ غیرہ حتی قال وددت ان لا تخرج سریة او جیش الا وانامعھم 
ولکن لا اجد ما احملھم ولا تطیب انفسھم بالتخلف عنی 4 () 

تع جصد :پل ہہادکی دی ہیں ۔ ای تفر ضکفا یر ےجنس می شون مسلمانوں کے چہاد 
کرنے سے ہاتی یئ سے چچہاد ساوط ہو جا ےگا کیوکلہ ہا دکا مق رمش کی نکا لہ نا اود دی نکو 
خال بک ہہ اود ہی مھ ٹن مسسلائوں کے ہا دکر نے سے عاصل ہو جاجا ہے۔ ا سل ےک اگر چادکو ہر 
وق ہرس پرفن کیا جاے ذ اس سے مرج وا گا کیوک قد ا کرمساران دن ارز دنا گی 
چھلا تا ںآ زادی اور نے فوٹی سے ما لک یں جب سب “لان چماد شش مروف ہو جا میں گے 
د نیا کے دنر اصلائی ا ویر یکا ماما میں یں گے ۔ کی وجہ ہےکہدسولی پاک چڈ ایی ہار میس 
ا ا نے جاتے اودیھی دوسرےلشگ رگاجا د یت مک یآپ نے ارشافر با کم رکار 
خوائپٹی ےککوئ نی خافلہ اشک درد نکیا جا ۓگ رہ چس میں شریک ہو ا ںہگرمیرے پا 
س ب کیل سار پا لین ہیں اورمی رے بی ربیخ نہیں ہوں گے“ 


70,7 اف رماتے ہیں : 























(445 
ط والجھاد فرض کفایة ولان الله تعالی قال' لا بستوی القاعدون 
من المؤمنین غیر اولی الضرر ..الی قوله تعالی : وکلا وعد الله 
الحسنبی!'۔ (النساء:٥۹)‏ وجه الاستدلال ان الله تعالی وعد القاعدین 
عن الجھاد الحسنی ولو کان الجھاد فرض عین لا یستحق القاعد 
الوعد بل الوعید 4 )١(‏ 


رج :'' جا وف کفذا ے اسل کہا توالی نے ارشادفرمایا: کہ بلاعذر( جہاد سے ) ٹین 





وا ےمسارائنع اوران کی راہ شیں اپ ال اورجاانغ کے سا تد چچما در نے وا ےلان ہرازنیں ہیں 
یدلہ الیل مععا لی نے اک بالوں اور جال ں کے ہناتھ چمادکرنے و نے مسملماٹو یکو ڑۓے زا نے 
صائوں بر درجہ یں فضیلت ری ے او رآ تھا ی نے ہپ ای عاتب تکاوعد ہکا تا ب (گیا 
آیت سے برویئل تی کہ ہاو نکر نے والوں ہےبھی ال لی نے انی عاقی تک دع کیا ہے اور 
ار چہا و فرش مین ہونا لو نے وا نے ابی واقبت کے وعدہ لے یزرو ہے لا عرا سی وہر کے 
گل ا 
ملا ماع بن نی تی (رت دای فر مات ہین ؛ 

إڑ والجھاد فرض علی الکفایة لانە لم یشرع لعینه اڈھو قتل 
وافساد فی نفسه وانما شرع لاعلاء کلمة الله تعالی واعزاز دینه ودفع 
الفساد عن العباد فاذاحصل من البعض سقط عن الباقین ‏ () 

زیر ےہ :' جہارڈن کاب کوک ىہ اسلئ رو تا ایز ڈنیل دسا سے پک 
اتل کے کو بلندکر نے ٭3 می نکی مر بگنلدکی اور بثروں ے لا دو رر ن ےکسیائ رد ہوا ء میں 


ج نف سے مقصیدعاصل ہو جات گا نو ای نعل سے جبادساقط ہوجا ےگا 


7 وھ 
(١)۔عنا‏ ہیی حائش ‏ ااقدی: ۱۹۳/۵۔ 


پچ ', 





م446 
(زفتہا ءٹا ن ےکا ظرے ) 

علا مہ الین تچ رحستھما فی (رح: مض مل )فر مات ہیں 
ظط فھو فرض کفایة علی المشھور الا ان تدعو ا الحاجة اليه کان 
یدھم العدو ویتعین علی من عینە الامام ویتادی فرض کفایة بفعله 
فی السنة مرۃ عند الجمھور ومن حجتھم ان الجزیة تجب بدلاعنه 

ولا تجب فی السنة اکثر من مرۂ اتفاقا فلیکن بدلھا کىذلك ۹چ )١(‏ 
نر حججہ : ا مورقول کے مطا ان جادفرش کذا ۓگھر جب ب ا لک عاخت می ٦‏ نو ہیفر 





ین ۷ چاتا سےاور چچیار را ہراں 2 پر زم ہوجا ۓےگا جس سکو اکم وت“ می کر ہے و ر مہو ز عنام 
ك ,/0 فا یکوسال یں یک مرعہ پلفعل اداکیا جا ۓگا اور ان نما کی دھمل ب ےک 
زی جباد کے بد لے داجب ہوا ہے اود ا بات پرس بک انھاتی ے۶ از سال شی ایک سے زائمد 
رد اج بیس ہو تا وج بیکابدل( ہما )کی سال شش ایک عرجت می رٹ ہوگاں' 
خلاثأأے گی شالیا(رم: ہن میہف ماتے ہیں ٤‏ 
پل کفار اہین شہروں یس ہو ںو اس دنت ان سے چچمادک ربا ذ۶ للفادے سے یں اگ رکوئی مسلمان ان 
ے اہ نرک ےار ووخما ممسلما نیگزا رواب لے )۲( 


(نتھاهب )نے پ" 
رامع شع اھ ھی (رمۃ:دضمل )اف رماتے ہیں : 
والجھاد فرض علی الکفایة اذا قام بە قوم سقط عن الباقین: 
معنی فرض الکفایة الذی ان لم یقم بە من یکفی اثم الناس کلھم 
وان قام بە من یکفی سقط عن سائر الناس فالخطاب فی ابتداثہ 


۔٣۶۶/٢۹:كراکہ سم غاد ی شر‎ )١( 


جح ) 
(۲) روط لا بن ویر 5 ۳ك ١:۱۰/٢۲۔‏ 
کت ھا یل ہر رہ ہر کہ کک تک رلک ایی ہر ہت و اکلہ وہ ہہ تہ ئا لد لہ رہ دہ دہ اہ وہ لف ہیں تی ٢‏ 





سس ۔ سی 





۰ )47( 


شون یسمیم عورمن اناقاو نف کدکالائن اتالزطاھان 
یسقط بفعل الناس لە وفرض الاعیان لا بسقط عن احد بفعل غیرہ 4 

سر جم چھارفر ش کنا رے جب اک سم چہا دکیا نگل بڑ ےکی فو اقیوں سے ریفرت ساط 
ہو جا گا .او فرش کا کا ,نا ےکا ارز رکذایت لوک تاد کی لکل ہیں لو وپ لوک زا گار 
ہوں گے اوراگر پخز رکذا یت لوک کل بٹ یں نو اتی سب سے جہہادکا رن ساقط و جا گا ۔ ا بتقراء ٹیش 
خطاب س بکوشال تھا جیما یی فرٹل یی سے۔ پچھردونو ںعھ کلف ہو لئے ال پچ رن لق ایض 
7 کن ا ں سےسافطا * و جا ۓگااورڈرش شا ن لی ایک ک ےکر نے سےسا ق ئدہھگا۔ )١('‏ 

ب(فقہاءا لا ےھ 
علابژٌ شا شنائی ال مالگی(رن: نی فراے ہیں: 


جوسلارمان و“ شیع ہے وو ناد ان پہ جھادڈرخ کغابی سے ای ط رح اکم ای خلا تے فا رم لکگردبکی 
۲ ان چہادفرشش مین ہی ںاج سلہالوں پرکفارتملہ نگر 0 اُن 4 چہارفر شکذای ہہ گا ۲)۹( 


چو :خلام بعورتءاند ھھےلنگکڑےاوراپا پر ہار یں ہے پ 
ما سی ران انا عابلر بنا شی (رم:دض علیہ فرماتت ہیں: 


ْ ولا بفرض علی صبی وبالغ لە ابوان او احدھما لان طاعتھما 
إفرض عین و عبد وامرأۃ لحق المولی والزو ج واعمی ومقعد 
واقطع 4 )١(‏ 

ترجہ :' ہے اورا بے ہلغ بر جہا وف یں شضس کے والمد بین دونوں موجودہوں پان شش سے 
ایک موجودہو ال کہ والد ی نکی اطا عت فرش عین ے اور ای طرح طلام ادرحورت برجھی چہاو فرش 


(ا )ا نیل جن نام ؟ ۸۔ 


لا 
ھا ۔اقال الا ٣م‏ ۵۰۔ 





٢)‏ ور 07 و گیش مںی؟ ۷۰(۸۷۰-ے 








448( 


کی ں کیو مولی اورشو ہماع او ا ےاورآ ند ھھے ای جاور با تھ کی ہو ۓٹخس بھی چیادفرشس ہیں 


























تد رر 7ت تد ۲ 






آلسےموززریں۔' 
0 ,0 

ٹڑ ولا یجب علی صبی وامرأۃ وعبد وا عمی و مقعد وا قطع لان 
الصبی غیر مکلف وکذاالمجنون والعبد والمر أۃ مشغولان بحق 
الزوج واپمولی وحقھما مقدم علی فرض الکفایة والاعمی ونحوہ 
عاجزون ۹ )١(‏ 

پر ہد :جج مکورت :غلام :ان ھھے؛ ابا جج اور بات کے ہو ۓ تس پر ادف ٹیس ال کہ 
پچ اور ون 2 ملف شر نی اور خلا مآ ا گی خدصصت میں ہی گکعورت تو ہی رت مل 
خرن ۓ اور ان دوفو ںکا تن فرش يکفا نی بر مقدرم ے اورائدھا اور اس گے افرار اہر ہے 


"1 


ما ہیں“ 
علامہ الال ین ان ہنا م رہ یی اف مات یں ؛ 

طڑ ولا تقائل المرأۃ الا باذن زوجھا ولا العبد الا باڈن سیدہ الا ان 
یھجم العدو علی بلد للضرورة وقال فی مقام اخر ولا یقتلوا امرأڈولا 
صبیا ولا شیخا فانیا ولا مقعدا ولا اعمی ۴ ر) 

نتر سے٭ہ٭ :”کور ت ا ےش ہرک اجازذت کے ایر چھادڈئی کر ےکی اورغاام ا پنےا کی اجازٹ 
کے خی چھا کی ںکر ےار پ اشن یر تھآدرہوچا بل ۔اوردوسرے مق مھ ارشمادف مایا کہ 
عورت :یی ش فا ی۱ا با اوران ھا جاءکیلنےنیس ایح 


عل یی بن اٹ یک رم خینای (ص اف عای اف مات میں : 


(۴9۱ۂ۶ ران ذاےے 


(49 
ط ولا یجب الجھاد علی الصبی لان الصبی مظنة المرحمة ولا 
عبد ولا امرأۃ لتقدم حق المولی والزوج ولا ا عمی ولامقعد ولا 
اقطع لعجزھم ٭ () 

تمر جہجسہ :”ساب بایٹراے ہی ںکبچوں پر ما وف می ںوہ ہچ شفقت ٹنتد را لکل 
علاصت میں اور غلام او رگورت پرکھی چیا طر۶ ںاہی ںکیونک ممولی اورشو ہ کات منتقدم ے اوران ھےء اتجھ 
یٹس اور پ بھی چھا وھ کی ںکیونگہ یسب ماد سے عاجتزگیں۔' 

عازن بن پیلی لی تی (ید:ہذ می افرماتے ہیں : 

ولا یجب علی صبی وامرأۃ وعبد واعمی ومقعد واقطع ولان 
الصبی مظنة الرحمة فلایؤتی بے الی المھلکة والمرأة والعبد 
مشغولان بخدمة الزوج والمولی وحقھما مقدم علی حق الشرع 
لحاجتھما وغنی الشرع والاعمی ونحوہ عاجزون والتکلیف 
بالقدرۃ 4 )۲( 

ن جع :''ادر یچ ورت لام ان ےہ تھے ادا اپ اف رسل ےن 
شمطقت ازع ای گی خلاصت ہس لی اٹ یں سا اہر فکی ر تک ں اا با جا گا اورحورت اود لامش پر 
اور :کی غدمت میں مسشغول ہیں اور ان دوفو ںکا تل شرلیعت ک ےک پر رم ےکیونآ تا اورشو پرکونو 
بوگی اود ملا مکی ضرورت سے می ہج ربیعت ان دونوں سے ہے میاڑ سے اوران جےاورا پان ونیرہ چھاد 


کر نے سے از ہیں اورش رایت طائت کے مطاب ملف بنالی ہے" 


ظ جب شن تملآورہوچا و کور اف راوکا لکنا بھی فرش ۷ 


علا ملا 7 





' 
(۱)۔حدایاوشن: ۵۳۹۔ 


7 ےج‎ ١ 
.کین اوقا فی شر حکشزالدقاضَ: ۲۳۸۳۔‎ )( 


سر سد و و و ہی لد لہ لہ لہ ہل ہہ یں لہ تہ سے ری رر رت :رص کک هر 


























450۶ 

ان ھجم العدو فیخرج الکل ای کل من ذکر من المرأۃ 
والعبد وغیرھم وکذلك الغلمان الذین لم یبلغو ا اذا اطاقو القتال 
فلا بس بان یخرجو ا ویقاتلوا فی النفیر العام 4 (۱) 

نچ مہ :گر نآ دو جاے رش و رت اورلام در ما چا رکیل کنا ڈرض 
ہاور ای رح دہ پچ ج پا نہیں ہو اکر دہ بین فکر ن ےکی طاقت رھت ے ہیں ف ذکوئی تر خ نہیں 

کمخام بتک کے وقت ہی ےھ کم ادر جک کر یں 

علا امن الد نا انا امم ۃافملی )فرماتے ہیں 
ڑ ولا نقاتل المرأۃ الا باذن زوجھا ولاالعبد الا باذڈن سیدہ الا ان 


یھجم العدو علی بلد للضرورۃ ۹ )٢(‏ 
رجمہے:''۶رے ت اپ ش ہرک اجازت کےاٹیاوفلام اپآ قا کی ات کے افی چہادکیے 











یس ا یی یی و ن عا متملہکرد ےو أم ں دق ت ترورت کے یی نظرب سب أفرادکھی جار 
کین بجر 
لا میگی بن ای نگم شا لی :دہ فر رات ہیں: 
تخرج المرأ ة بغیر اذ ن ز وجھا وا لعبد بغیر اذ ن المولی لانه صار 
فرض عین 4 () 
شر جمہ: یی ال ای پر عا تملرگرد ےو تمام لوگوں رش نکودورکرنا رین ہی گنن 
اپنےش ہرک اجازت کے اغیراورغلام اپآ تاکی اجازت کے ایر جہا دکیلئنلیس م کیو اب سب 











رام روہ لے راو یی شال ٠۶‏ ٢١۔‏ 


. 


۔۵٥۵‎ ؛بدقلاا۔)٢(‎ 





(۳)۔ح اراامن: ۹۔ 


ا ہد اہ ہچ یک چک ھا ار اہ لہ وہہ ہہ :و و 7ھ لہ اہ ور رہ ہر تہ تہ و ھت ہو ہہ تہ تر ہت ہی ہے 














مد لن بی ھی تنیز یی ؛فرہاتے ہں: 

طوفرض عین ان ھجم العدو فتخرج المرأۃ والعبد بلا اذن 
زوجھا وسیدہ لان المقصود لا یحصل الا باقامۃ الکل فیجب علی 
الکل وحق الزوج والمولی لا یظھر فی حق فروض الاعیان 
کا لصلوۃ والصیام بخلاف ماقبل النفیر لان بغیر ھم کفایة وکذا الولد 
یخرج بغیر اذن والدہ وفی غیر النفیر العام لا یخرج الا باذنھا * )١(‏ 

نز چد :"اک رجش ن تم آورہو جا ےن چاوڈر کین ہوجا ۓےگالہذ اعورت اور لام اپے شو ہر 
ارآ گی اجازت کے یں کے اس کہ چہادکا متصرسب کے کنل شی حایس لی ں وگال ہر اسب 
پر انا ڈرنش ہوگیا ادرشو ہرادرآ تا کاضن فرش ین کے تن میں ما ہنیس ہوتا جس طر حم نماز اورروزہ 
تخلاف ا لصورت ک ےک نب ما کم چماواڑیں ہواإ س ۓ کا سس وقت ان کے کے اخ بی رن يکفا ہر 
ادا ہو جا ۓگاادر کی طرع با بھی اپنے والمد ی نکی اجازت کے افی نل سنا ہے خی نغیرعام نہ ہونے 
کی صورت بی بنا بھی اجاز مت دالد بن کے ای کین جا ےگا 


اش نکوزحوت اسلام دی اب تب ے؟پ> 


دس انال ئن ہام ند فراے یں: 

















ویستحب ان یدعوھم من بلفته الدعوٰة ۷إ () 
پر سےےےہ:''ادرش ناو ںکک دوتا لام چگی ہد نکودکوت الام د یناصصقب جض 
ظ وندعو اندہامن بلغته 4 )۲۳ 


۰ کی ک2 ٌ۲ 
: این مم رع مزال رم ان ۸۳۔ 








-)٢(‏ :۵ء4 


(۳)۔۶ اارالفیشرخع کتزال رقان: ۵ے۔ 





452( 


پر ججہ: ن1 کو ں کیک رو تہ اسلا )یع گی ہا نکودقو تب اسلامد بناجب ے_' 


علامہ ان عم بلہ بنا شما گیا (رح:؛ضتیی)فرماتے ہیں: 

ط فان حاصرنا ھم دعونا الی الاسلام فان اسلمو ا (فبھا) والا 
فالی الجزیة فان قبلو اذلك فلھم مالنا وعلیھم ما علینا ای ندہا ان 
بلفتھم الدعوۃ 4 )١(‏ 

نر ےید :''اگ رہم ڈش۲ نک موا رہک ہیں فو ا نکو الا مکی زکوت دمس گے پوس اگمروہ اسلام نے 
ریو فبادردہأا نکوجز کاعگد سی گے ہیں اگر دہز یتو لکرلی و ا نکیل دہ ہو جاۓ جو ہمارے 
لی ے۔اورآن کےخلاف وہ ہو جا گا جو ہمار ےخلاف سے مجن ان کون اور ا موال 2022 
خون اور أ موا لکی ط رح متفو ظا ہو جا زیں گے۔اور یی دکوستت اسلام د بنا بجی أس وق تخب ہوگا جب 
انتک دکوت اسلا مغ پی ہر 


علوسگلی بن ای رم قنا ارہد اف مات میں: 
وبستحب ان یدعومن بلنته الدعوۃ مبالغة فی الانذارو 
لا یجب ذلك ۹ ر() 
تر ےد :''اور جن لوگو ںکک دکوت اسلا پچ گی ہوا نکو گت اسلام د ینا جب سےڑ تبیاعیٰ 
یش مال کیل اوری واج ٹیل ےت 


ذا ین بن مکی گی تی (رش:ض ہف ماتے ہیں : 
پا کہ جن لوکو ں کک زیو تتراسلام ٠‏ یں گی ان کے پار ۓے سپ ہج ےک أ نیل ذگوت اسلام دی 
جاے پ4 (۳) 


)ا .۔- اھر و ف ,دی شا ى: ۱۲۸/۴۔ 
(۲)۔عدا ادن ۰۔ 


۴۴۳/۳ : ین اوقای شر کخزل نی‎ )٣( 


۰ 
یر 7ک وت ا وا ا ا ور ا اہ اہ ایر ال ہہ وہ رر چا وی و الد لد و ہی ہر وہ ہر دا و ول ول ول و ور دہ سی رر ہی وت لہ ٣‏ 


(53)_ ۱ کر 








عون انترعلے )اف نے ینا 
ط ویستحب ان یدعوالامام او راس الجیش او السریة من بلفته 
الدعوۃ مبالغة فی الانذار لاتھا رہما تنفع ٭ )١(‏ 
مت ےک ہن لوگو سکودکو تی اسسلام د ے ینتک 
رت الا ہی ہوئی ے۷ لاٹ ار ٹیس مراف ہو جات ۓکیونک ہما ت ىہ بات مفیرماہت ہو لی ے 
وش نکوزکوت الام د بنا رم ٤‏ 
ائکماأئی الد گن ان ہمًا مس (رمۃ اف علیہ اف رماتے ہیں: 

ڑ واذا دخل المسلمون دارالحرب فحاصروا مدینۃ او حصنا 
دعوھم الی الاسلام ای فان لم تبلغخھم الدعوۃ فھو علی سببل 
الوجوب فان اجابوا کغواعن قتنالھم لحصول المقصود وان 
امتنعوادعوھم البی اداء الجزیة ۲(۹( 

سر نم :ارچ ا ن دائز ال ھرب می اٹل ہو ں تو شم یا فا کا اص روک ری اور نک 
الا مکی دو 8 ت ذیل غچئی اگرآا نک تک دقوت الام ہنی تی نو می واجب سے نچ اگ دو ا لام قیوا لکرٹین 
نو ہلان ان ہن لا لکن ے رک جا ا ایوہ چادکا مقتصیر حاصکل ہہ گیا ے او راگ وہ الام 
لان سکیس ین نیز اکر ےکا ََْ 

پدکوت الام دے ایر چچاردرستکٌل 4> 
علا رامع عا بل بن شا فیا رض علیہ اف مات ہیں : 

ط ولا یحل لنا ان نقاتل من لا تبلغه الدعوۃ الی الاسلام وھو و 
ان اشھتر فی زماذنا شرقا وغربا لکن لا مك ان فی بلاد الله من 
(1)۔النای(ٛجنی )ش رح حد اي ۵۰۸۷۰۔ 
([٢)۔الدب؛‏ ۱۹۷۰۱۹۵/۵۔ 


(4ی5> 

















لاشعور لە بذلك ۴ )١(‏ 

تع سے :' ہارے لیے یدرس تک کک مان ےق لکر یج نکک دکوت اسلا فی سکپئی 
ار یراملا مآ چہہارےز مانے میمش رقی ومغخر بک ککگیل کا گر اس بی سکولی خی کی ںک راد 
کے شیروں میس ایی ھی لوک ہیں نہیں اسلا مکا الک لشمو ری لہا دکوت اسلام‌د ینا ردری ہے 

لام ڑ ]الد اکم سد افرماتے ہیں: 

ولا نقائل من لم تبلغه الدعوۃ الی الاسلام ای لا یجوز القتال 
لقوله 4 فی وصیة امراء الاجناد فادعھم الی شھادة لا اله الا الله 
ولاٹھم بالدعوة بعلمون انا نقاتلھم علی الدین لا علی سلب 
الاموال وسبی الذراری 44 () 

نس چے*ےسد:''ادر ان لوگوں ےق لیو سکر یں گے جج نکودکوتی اسل می کی لین یتال 
چائزی انل ہب اک یٹ نےلنکروں کے امیرد ںکودعی کر تے ہو ئے ار شاوظ بایاکی تم ا نکو 
لا اله اا اللہ کیاکوان کی دکوت دو 'اوردوسرکی وج سے ےگ دو تی اسلام د نے ےکفار سے بات 

جان یش گ ےک۸٣‏ فک ین اعلا مکی م ند کیل جبادکر تے ہیں فا ر کے مال سل بکر نے اور 
















نکی او لا دکوقیرکی بنا“ ای ا 
لم می بن ال بکرم غینا تی ( رر علیہ اف ماتے میں : 
ولا یجوز ان یقائل من لم تبلغه الدعوۃ الی الاسلام الا انہ 
یدعوہ ٤‏ () 
رجہ :'ادرسلما نکینے یہ جا نز کان سے جہادکر ےج نکودکوت ا سلام فی کپ یگ رک 


لے انکور کو بک اطام ےت 









)ا )رد اکنا را رر لبیٹ ل: ۱۲۹/۳۔ 
٢‏ 

(۲)۔۱۶قي:۵/۵عء۔ 

(۳)۔مد اون : ۴۰۶۔ 


ا ا یت سا مر سس رر ہر ری حور یسور ہے دی ےی نی جس رو و خی 








٠ 
ات‎ 
ر برح ید حر بعر سج حور حجہ بعر حبہ بد حیر حر حبد بی در حر تہ دعب حر ید ید حر ید حر ویر جاک ول وا وا ور نی ول حر الد "نل یل نویل نز ال از ال نال ال ناک ال الک الد اف زار ا لو ار و وہ وو یں ہی رح ؛‎ 
- ٠ 
ْ ۰ ۰ 
ٰ 6 حسم - ے‫ روم‎ 
ایف دوسر ے متام رعلا مغینا ارد یں لے ا 7راو اسلام ہے کے انی سے با‎ 


صر ‌ 


ریچ عو ا ہہ سے یا۲ ص ۰ ما و و و 
ار ےکا نو زا گکار :گا نورڈ لا ا گل یھہ ےگ اپ ے ا۸۱ر۷۸۸۱۴] اخ ٣‏ یرم نے 


َ‫ ا ام ...بت ۰“ 
ای واقلت کے خی تک پا نت جن ای لگ تا سام مہ بات 


نان ب یگل زپٹمگی یذ ہزبیہ الات ہین : 

ٹ ولا نقاتل من لم تبلغه الدعوۃ الی الاسلام لما روینا ولانھم 
بالدعوۃ الیھم یعلمون انا نقاتلھم علی الدین لا علی شیء اخرمن 
الذراری وسلب الاموال فلعلھم یجیبون فیحصل المقصود بلا قتال 
ومن قاتلھم قبل الدعوۃ یأئم للٹھی * )١(‏ 
تیر ہم :'' او رہ ان تقا لی سکر یں گے جج نکودکو تب اسلا صن کی ا سل عکیتضور نے 

1 


عو .اص ا : : 1 ھ ص :' ۰ 8 
یابتے بح ترجا ے اور ١ج‏ ۷ دتد نے ےوہ لفارجان ہل نت ےکپ اکنا سے مممرف دن افقتہ 


۳ 
)۴ کل ہے ھت ا کو - ۰ میں وی و کے 
نے ما لک جج ہیں ٠‏ کی اور سر کی چو ںلوفی ری بتا ےے انال وحن وس یکر نے ےی سٹو شا 

ولا کر لا وی می وک ا ے 9 
وو 1سام ول لکربی ںاو صا من صود اخ تشگ کے عاصل ب جا ۓگ ادر شش ے ار ے (گوٹ اسلام 


ہرگ مگ 7 و جرہ بے ۱خ سر 
ڑ ہے رفا لی نیالووہ زا کا ر ہوک ور کت بے و تم 


با 27 سے آلاج ےتے۔ 


کفار کے درضنے ںکوکا ٹااورجلانا جا پچ 


امہ ما الر نا اکنا امام (م اض می ات ین 
ظإویستحب ان یدعوھم من بلغته الدعوۃ فان ابوا ذلك استعانوا 
بالله علیھم وحاربوھم ونصبوا عليھم المجائین وحرقوھم وارسلوا 
علیھم الماء وقطعوااشجارھم وافسدوا زروعھم لان فی جمیع ذلك 
الحاق الکبت والفیظ بھم وکسرشوکتھم وتفریق جمعھم فیکون مشروعا) 





اع وا دی یں ہے قد 
(۱)۔ن اح قای ات رارق ك۳:۶/ ۲۲۳ھ 


سیت ض۰٥‏ و سضر رہہ رہہ ے 












5 لوان 0ظ ٦۰.‏ 


و و 
پر قشمہ :ارک ار رں کی تو تاساا مج 








دواعلامم اث سے ا :کا رگم ںاو مل مان ان کے خاا فک الد ے 


ا ریم شا رں 6 
ریا سے گر ائ نوز 9 ماع ام ورجا مر ہوا ہے۔ )١(‏ 


فی ال باتک ( جا خای افر مامت ہین : 
ڑوندعوا ندہامن بلغٹه والا فنستعین علیھم با للّہ تعالی و 
مخاربھم بنصب المجائیق وحرقھم وغرقھم وقطع اشجارهم وافساد 
زرعھم ورمیھم ١۱)‏ 


تع عیے 
4 ای اک و ا ار پر ا حم 
نر حججہ : اور نک ووں یب دو تا سام تق بی ےا ہیں دکوت |صبھ سناس 














بھی مو َُ شی 7 گی اورصا 
8 (نمدر فلول اور مکی مرائعت ؟ ۹ 


اڈ پیلد ین ای نتم دہ نف عایہ) فر مات میں : 
ٹھیناعن غدر وغلول ومثلة لقولە ۶ة لا تفلوا ولا تغدروا ولا تمٹلوا 


(١)۔‏ ٣ق‏ باداء۹ا۔ 









(۴] بک ران داٹےاے۔ 





پت 7 ا ۰ 
‌ 5 َء ٭ وم یہ کت یڈ یک یھو مور مومج آی سس و مہ 
ہچ کی ہک یں کا ا جا ںء سے 4+ میں ھے 





یف مد ند یدع دح دح حر یہ حر ا ور و و یہ یر اعد ہہ و وت ا ار ند دح سی سی حر ہد حر وچ ا و ا یح دب ہہ تحت ٣‏ 





457( 





رص ضصضصضص سض ضضضض ۂ ضسثس 


1ر الکیانۃ وضن انید والتول الام المغٹم 4 ( )0( 


شر جمہ : دن ئز کال وم سے ا۷ یا سے بی ناک _پیے کے ا۴ ں اداد وہ رے 


رت غارل ورزاور ماد ات ہس اورفاول ما لنحایمت میں 


“ 7 


پورگ یکر ٹکو کے مین 
٠ہ‏ اکمالئی ال بین ای پنیا ( رم نیہ اف رما تے ہیں : 
وینبنی للمسلمین ان لایغدروا ولا یغلو ا ولا یمٹلوا لقوله ۶ای 
بحرم علیھم 4 () 


7 ۰ و ا و 7 و ا 
ٹشرچمے:'اوراوں لئ یا سب ہ ےکردو حر گرم جلول ادرمشلہ نکر یئن با ک | 
۲ 70 ز7 )مخ ٴُ 


رہ یہ سر 


تہ کے إرشا رن نے سس نات 


مر مث یہ سیئر 249062 
یں مھوان صا کے راب علا می اور فلا مے "یل نے کے )٣(‏ 


(عورت: پچ نذا فی ءاند ھھےاوگڑے کے لک یعمانحعت پہ 


عاإء ۔ کال الد بین ا:لئ 7 ۴ نے اق ما اف مات ین : 
ولا یقتلوا امرأ ولا صا ولا یکا قانیا ولا مقعت اولا اعمن 0(4 


: قفمد او لازنا کوارت ؛ تچ تن فا با اوراند ھھےکڑل شکر یی 


لی بن ال یجکرم یا گی“ ند لمات ین؟ 
ظ ولایقتلوا امرأۃ ولا صبیا ولا شیخا فانیا ولا مقعد ا ولا اعمی لان 


۱ لیم للقتا عندنا هو ا ب ولا ی ملف م۴ )٥(‏ 





(۱) گال :۵د 


١/۵: قرب‎ )۴( 


۱ جع و شوج 
([۳)۔جہ اہ ہشن ! ۳ ۵۴ے ۔ یھ حدا 1 38171 تن اک یھ حغکھزائیغانئی ۲ ۲۴ز 


ف‫ 
(٤)۔‏ نع :۶۰۱/۵ 


- ط۶د 
1 ۔ بر اے اسی) ۵ے 


لسہم رر رر ےو و نے و شض صیضص ض ص سض ص رض سس سض ضس ضس سس 































نیت 








ر رر یر ار اریم بر یر ہے سے 


:. و کل یں 72 ُٗ/ 
بر چ مہ : ارہ ٣مان‏ کقورت پچ فا :ابا اور نے وی کن کی ات 


کو چائ کہ نے والی تی ہار ے نز دی ڑا یکر نا ہے اور یہ بات ان سب میس پاگی جا ی ۔'' 
یی وع لا گی ا ا ری لکاے:(١)‏ 
رین سے کا جاز ب 
عاان ری ال۸ ا کم (ہۂ یی افرباتے ہیں: 
ونصالحھم ولو ہمال لقوله تعالی " وان جنحو اللسلم... 
(الانفال:٦١)لان‏ المقصود وھو دفع الشر حاصل بە ٭ )٢(‏ 
نسر سے :ازریم دننوں سے کر ےار چہ مال کےذر یج ہو و سلۓ/ لد تھاکی نے 
ارشادرما اک اگکرد! کی طر جھکیسڑ تم بھی ا نکی طر فچچکواور از تی ب رو سکرو 'اوراسلغ 
کہ چہادکا مقفم درکذار کے شرکودورکر نا سے اور پا کےذر یی بھی حاصل ہو جانا سے" 
لد.. صلی بن ا یرم شینا کی رت افرماتے ہیں: 
ط واذارأی الامام ان یصالح اھل الحرب او فریقا منھم وکان 
ذلك مصلحة للمسلمین فلاباُس بە)4 (۳) 
ترجمدہ:” ارجبء ام مل ار نت یوق ےا مرخ اب تھے اور اک ار )صائوں 
گی لوت می ہو اس میسکوئی حر نہیں 
+/٭+/٭/+/٭+/+7/٭ 
ھ/+/+٭//٭ 
//٭ 


(ا )گی خر ھدای: ۷۹٦‏ ۔ کین می یز ارہ ن: ۶۴٣‏ 
)٢(‏ کا :۸۵ء 


(٢)۔حد‏ پاوشن: ۷ئ 





ین یش أنصار کے علادہ بہت سے بہودجھیآباد تھے ۔ ان بہودیوں کے ین قیطہ بنوضیر 
ہو ریہ اد رہن قینقا ور ببنہ کے اطراف مم لآباد تھے ۔اہثرت سے پہ یبددبول اور انصارٹل پیش 
ا لاف رہتا تھا۔اوروہ ا شتلاف ا بگھی موجودتھا اور انار کے دو قب اوس وگ رخ بھی بہ تکمرور 
ہو گے ت ےکبوکہ ان دوٹو ںقبیلوں کے درمیان مشبورلڑ ای جب بحا ٹ ئک شی شس ا رون 
قیوں کے بڑے بڑے مردا رآہپیں میں لن کر مرگ تھے ۔ اور یبددگی پیشنہ اح مکی نم چیروں اور 
شرارقاں یس گے رج ےک ہآنصار کے بیردونوں نظ لی شآ مس ا پڑت ر ہیں اوریھیشتیریرہوں 
01 کے یش نظ رتضور پٹ نے بہودبوں اورمسلرمانوں کے آ دہ نعانقات کے بارے ایک 
ابد ہ کی ض رورت ںکی تا ککہ دونوں مل صن دکون کے سا تھ ر ہیں او رآ بس می ںکوگی تصادم | 
اور اؤنہہو نے ہاۓ ؛چناغ تضور لٹ نے اُنصاراور یہ وگو جلاک مجا ہر ہکی ایگ دستناویہلکھوائی بس پر 
77 پ ‏ 0 
ا ں معاب رہل دذوا تکا خلا ےصب رپ ان سے 
طإ بسم الله الرحمٰن الرحیم شا النیی هك ---4 
یف رک ععبد نامہ سے جو بی ای طرف سے مسلمانوں ہانصمار اوران بیبود کے درمیان سے جو 


7 ۔ 7 فا یھ ے‫ ءُ‫ 1 
ہرالوں کے ماع ةوں اور ان کے ما تھ الات چا ہیں ۔ ہف رن ان اپ رہب برنٹائم دوک رأمور 
یل کا پابندہوگا: 


:)١(‏ فاص ادرخون با کے جوطر ہے دم زان نے ےر ہیں ووعدل وانصاف کے 


کو کو یکن عٍ 
اعد برسمو رام فی نے ۔ 














(460 
:)٢(‏ رکرو وکوعدرل دانصاف کے سا تھ اتی جماع تکافد برد ینا ہوگا نی جم سقزی ہکا جوقیری ہوگا اس 
قد یکونچٹران کیل زیر فد بیکاد بنا جھاأ ی فویل کے زر ے لام ہوگا۔ 

(۴) :عم ءم مد ون اور ڈماز کے متا یں سب تلق روس گے ا پا ےس یک یکوکی رعایت 
شی جا ےگ اکر چو یکا باج یکیوں زہد۔ 

3 گوئی مسلبا نکی کاخ کے دنا ثے بی ںا لکر لن ےکا ما ضہہوگا اور تیمس ران کے متقاثے بی 
یکافرکی یٹ مکی مددکی جات ہوگی۔ 

(۵): ایک ادلی مسلماانکو پناود ہی ےکا دج یفن ہوگا جو ایک بڑ ےم ریہ کے سلما نکوہوگا ۔ 

(۹): ج یبودسلمانوں کے ما ئع ہوک رر ہیں گےاُ نکی خلت مسلمافوں کے ذے ہوگی ہانپ امم 
کاو یلم نہہوگااورشہان کے متا بے یس دش نکی مددکی جات ےکی ۔ 

(۷: لس یکافر دشر ککو تق نہہدگاکیہسلمافوں کے متا بے ب۳ تی کیاکی جان یا ما لکو پناوادے 
ریش اویسلمانوں کے درمیان عال ہو۔ 
(۸): چشگ کے وقت یہو دکو چان ومالل سےمسلمانو لکا اتد بنا ہوگااورمسلرانوں کے خلا فی یکی 
دک اجازت زم گی۔ 
(۹): یپاک ھپ کاکوکی دن اگر ور ید کر ےل یبد یآ پک مددلا زم ہوگی۔ 

:)۱١(‏ جو ال اس عبداورعلف بی ش یک ہوں اگر ان بیس ےکوکی قیلہ اس علف اورعہر ے 
دی ایارک ناچا جا آ پک !جات کے بفی رح دگی ا خقیارکر ن ےکا مجاززہہوگا۔ 

:)١ 7‏ یڈہ پدادگی مد با لکوکا ند ےکی ا جازت طہ لگ ہج وش ای بک مدوکر ےگایا 
ا لکواپنے پا شھکاشدد ےگا ذس پ از دک انت اورضب تام کک ہوگا اور ںککاکو یل قبول 
کان 

(۱۷): مسلمان ا ری سے کر جامیں گن کی ای ےار یت 

(۱۴): جوکوئی مسلما نک کر ے اورشہادت موجودہوذ ا کا تسا لیا جا ۓگ الا کول مخزل 


زیت پرراشی ہو جاۓ ۔ 








(461 
:)۱١(‏ جب مگ کوئی ڑا اکوئی ہا بھی اختلاف ہو جا و ابڈداورا س کے سو لکی ط رف جن کیا 
جاۓگا۔ )١(‏ 













(ٹاق م ینہ کے تا اوراثزات 4 





ڈاکڑرمییدر الد اق د ینہ پت رہکر تے ہو نے فر مات ہی ںکہ 

”ایک چچھوٹی سیت یکو جوتق .ہی حاوں مشق لی بشبر یمک کی صورت می میظ مکیاعگیااور ال 

یی لگ رکز الا نام لآ پادئیکواکک کک داراوررقابل مل دسقور کے ماحت ایک مرک رمتحدکیا اگیا۔اور 

ان کے تادون سے شرع ینہ میس ایک سیا سی نظام ظا مکر کے چلا گیا جو بیس ایی ء یرپ اورافر یقہ 

کے تک برانظموں بل ہو 1 ایک وخ اور زبررست شہنشا ہی ت کا بای رقت کے صدر مقام 
نگیا۔ (۲) 

دی از لع ([٢٥٥ں۱١٥٤١-۷۸۷۵۱)‏ آعتاے۔ 







"٢5ط‎ اٴ٢]: ۰اما۵۸۲3‎ ٣ہ‎ ٥٥ 1] ۵: 8 7۲ 0 5 
٥:اداحمااذ‎ ٥٤ ۷ط‎ ۱۸۷۲۰۲۸۲349 ) ٥٥٥ ا٥‎ ٥٥ہ‎ ٣٣١ (۱٣ ٣ا١‎ "(۷ 


ہ٤‎ ٥۱۸۸۵۱٣۹ ,۳٣۲ ہ٥‎ ٣١١ ا٥36‎ ہ٤‎ ا٥١۱٥‎ ۷۲٣ا‎ ٦3٠۷۲١۸۱۱۷ )59 









ا٥‎ 1۷٥5۷ ۸اط ہہ و١٥۲ ٤ہ 13۵1 ط٥ا ]اط,‎ ٥ہو‎ ه٥‎ ٥" 

ایل اکمانہ اخیارات کے ساتھ پہلا مر لی معاشرو رت یر چا کے پاتھوں شور ینہ یل نفائم 
ہوامن خو نکی یاد پنکیس جوا عوالہ اختلا فا تکوش خم د تا ہے بد بی نکی یا رج کا ا طلاقی ہرفرد یہ 
کیا ہوتاے۔' (۴) 


فورپ ین یر" اکن 2 ا ا کن 





(ا )یٹ از الہدابید تھا : ۳ ۔ سرت این مھا +: ۳/٣۱۔‏ 
(٢)۔‏ دن می ظا متکرال: ۹۹۔ 
٢(6 ۳٣۰٥٥٢٠٢٢٢٢ ۶11:۰٤6: ۷ ١٥ ٤ا٥‎ ۳٣۲۱ ۱۷۰۱۵۲٢۴ ×۷ : 1‏ 











۲٥٥۲۲٥۸ ,۱۱ ۷۷۸۶ 1٣ ۷‏ 3:110۱ 301 ٢3۱۱ء‏ 8 ۷ اطا05]655" 
٥٥3٤ ٢‏ ز( ٦٠٢‏ صەممں دا ”دم ) ۱۸۷۸۸۲۱۲۱۹۰ . ٢٥اا ۲٥۷۵۱‏ 3 


ہ٥ا۷‎ 5٥۲(۵ ہم٭٥۱۷ ۱ہ‎ ۱١ 11١606٥٦٤١160٤6 ٥٥ ٥۱٥٥ ١|٥٥ یاٌا,‎ ٤٥ 











۹1٥٥٥۷٥٥٥ || ,۸6 ٥ا٥٠ ۷ط,‎ 55۱١٥۸9 ٠ا١‎ ٣٥٥٥ص٤‎ ہ٤‎ ۴٥۷۷۵۲ ])۱ 
۲)١ ا٢٢٣٢‎ ٥٥ )ا١‎ ٣٥٥٥٥٥ ۸۱٣۷ :80٥01 3ا٤)٤8:٥۸٥٦‎ ]]١ ہ٥٥‎ 
1٥١ا‎ ۹8680 1٥۷۷۰ 8جں66 ا( ا ۲۶, ٢٢5۱ں۱۷۸ ۷۷۱۱3۹ 85 39365۹م‎ 
,۷۷۹۵۲ مہ کا‎ ّ٥٥٥٤ )36160 ٠6 )٥٥٥٥ 31۱ا۱,‎ ]]١ ۱۸۱۷۰۱۱۹۰۰۹ ۷۵١۹ 


٥۵٥٥۱۲٥٠٥٢ , ۵۲١٢٢۹ ٢ ٤١‏ ۲م ٥80٥٥ ا٥٥ )٢١‏ ٤١ا٥‏ 3001, ۱۱۷ء۵ 
















09۸۷/10۱060 513٤6.')0( 
نر :میلو برای اط اور ماہرالنہ ا صلائج بل ہدرتفیقت ایک انقا ب تھا جرد چا‎ 
نے تا لکی خو دنا 07 ۶ھ ےم ر- اورانیامکا رع رک تو تفیلہ‎ 
سے معا شر ہکی طرفٹعف لکردیا۔ موانشرہ یل اگر چرمسلمان ہیبدداورمشر کبھی شائل تھے اوردہ اے‎ 
اٹچھی رع جات اور سے ان کے ڑشن خ دک گرا نکی ناو ڈدد زس نے دک لیا ھا ای ۓے‎ 
)۱(' دای ربا ست ٹیل مسلمان ہی منص رف ٥ال بلہ ا لکا الاب حصہہوںل گے‎ 
رکم شاوالاز پری رات ہیں:‎ 
وس منشورکی ا تپازی فصرعییت یہ ن کہ اس می نم نٹ اورقیلہ کےکس یت نکوخص بک یا گیا‎ 
ہے اور نکی پہ زی قیدہ ی لکوئی جب رکیا ما ہے ؛ نان کے معاشرے میں ت ذ اع پڑ مڑسوم ور وا غگو‎ 
یٹ ایا سے اور نہان کےٹی معاملات کش مکی مداحامتو بے جا کیگئی سے سن ینہ کے لوگ جھ‎ 
مدتییدداز سے نک وجدا لکی پیٹ ی یس بل ر ہے تھا نکو با بھی اکن دس کی ات دکی جارعی سے‎ 
ای لے تام ال عرب نے بای اور نی اخافات کے پاوجود ا مو رکوصرتی ول ےتول‎ 





(دہ4 
ایک دوسرے مقام پر ارشادفرماتے ہیں: 
اس مطشور سے پیےعرب حددرحہ انفراد یت کا شکار تھے ٢‏ دو سی امائون کے پابند تھ اور سی 
قو تع امہ کے سا نے ے لی مکر نے کے عادی تھے ذواپ یل یح یکا۔یزادا نے ز در ےکیاکرتے 
تھے ۔وہا ںکوئی ایی اش عیاقو تی ںی جد ان کے جائن د مال اورز تکی جفاظ کی لمات دے۔ 
گن اس مطشور میس :ان سماری انفراد یو ںکوز دو 3 رگورکرد امیا اور انل مخ معاششرے میں ایک الا 
مرکڑئی قیادت ائمکردیگئی جن سکی طرف دہ ہرموقع پر جو ںحکر سے تے دہ اصولل (نفراد یت جھ 
الام سے پیل عرب کے معاشرے کے طر٤‏ اتیاز تھے ہایس اس نو شننہ کے ذر یج ا ایت سے 
پل دیاگمیا۔ یو ں طواث الم وک یکابھی ما ہہ وگیااوسلی اور ہی لیا سے شش راف رادئیک لٹڑکی یش پر 
د بے من تام مرکزق یں ایککل می ٹم ہوییں اورتام پاشندو ںکویساںمقو ق میس رآ مھ )١(‏ 
ان تما مأقوال سے یشاق بد ینہ کے مندرحرۃ بلاغ اٹ ات معلوم ہو ے : 

(۱) :اس مفاق یکا قییہ یہ واکمسلمان ای کقو مکی حیفیت سے رے گے ۔ 

(٢):ۃ‏ ی نکوڈ نیاوی معا لات پل قیت دی جا ےگگی۔ 
۱ (۴):انفرادی تر ججا تکی ہجاے انتا گی سو یق پان بے ن گی ۔ 

:)٤(‏ شنھ یآ زاری ٹیس سماواتکا ا صو لکارفر اہو نے لگا۔ 

(ہ): مسلمنو ںکو اعل ینغ کا موق م لگیا- 

():یثاق مد ینایک سیا اورمعاشرقی منشودھاج٘ کی بمیاد ہا سلاید یاس تکی یدرگ یئی۔ 






ڈاکڑجمبر اڈ کین مہ سک یڈ نا کا سب سے پا مرک دستو کت تھااور ا لکا یک یک افظ 
اوراق جا رن می تفوظ ےںٗ“ 
(۷) :اس معاہرے سے بہددکی خی وجا یت حاصی لکر نا ضور ےکی بہت ب کی سیا یکا میا گیا ۔ 
(۸): اتی مد ین کی دو سے م بین مود ہکوعرم قرار دی سے ن حرف حد یب گی ط مگ عدودقائم 
کرد یگئی۔ 


)١(‏ ضیاءانٌی: ۱۹۹۰۱۸۹۔ 








(464 
پل ہکم کے تن دضس او مکردبامگیاادرید ین منور ہکا تق نا مکرد انان 
(۹): تام تماز جات میس ما جدار امیا ہبڈ کو ال ٹف ضلی مک رمیا میا یٹس سے سای اور عدامقی لیاظ ے 
؟خری اتھارٹ یآ پکقراردےدیاگیا۔ 











ہل لو ار از سار مار ما جار ما ار مار ما رج 
جو ےہ لہ ار ا جار جار جار جار جار کر 
جو جا جو جار جار جار ار حر بی 
ب‌(00202٭ 
01 
2 





عد ایک سم سی ہہ یہاں عد بنا مکا ای ککنوال تھا ء یکنواں اس درشت کے پا تھا 
مس گے یچچ ول پا ک پٹ نے صحا !کرام وپ 3-10 کر مہ سے ایک مرعلہ 
( ایک د نکی مسافت )پر واںع ہے۔اورید یدمتورہ ےو (۹) مرعلہ پر داع ہے ۔عد یش پاک میں 
جا و وا ںا ین خض رم ے اون نما رج ازقرم ے اورتضرت ما تک بن 


مس ڈنف مائتے ہی ںک تما م عد یر یمم سے ہرم ہیا اکےساڑ سے پا سال بعدی اک ڈو نے 


حدییکا داقن اننیل 


ڈوالعد و۷ رہ بیس تضور پچ چودوسو مھا (شھم الرضددن ) کے جع را وعھ رہ کا اترام پا دوک رمک رم ہکس 
روا یہ ہویئۓ ۔تضمور پکو ما لی تھا کہ شا ہکغا بجی عم روک ادا 2 سے روکیں۔امل جآپ نے 
بی می فی اعد کے ای کن کوک بے دا ھا جا دہ و کغارمکہد کے آزادو نک یجرلا ۓے ۔ بج بآ پکا 
قفا متام ”عفان قرب پان دیس ٹرلا اکرکفا رک نے تا ا عرب کےکافرو کٹ 
کے بکہدد یا ےکیمسلمافو ںکو ہرز رک مک جس دوائل ضہہو نے دبا جاۓ چنا نچرکغا رق ریش نے اے 
موا قمام فا لکوتم عکر کےایک فو رن تیارک کی اورمسل مان ںکا رات دنک ےکک بک ے پا شک لکر مقام 
”مدع یش پڑا ڈال دیا۔ اور مالمد بن ولید اوراہوشچ ل کا با گرم بے دونول ۲۰٢‏ ووسو نے ہوۓے | 
سوارو لکارسا ےک رام" کت دن گٗ ۔ جب ورپ کو راستہ ٹیش خ‌الد بن ولپر کےمواروں 
کیک رر کی آپ نے شاہراہ سے ہ فکرسفرنرو کردا اور عام راسنہ سے ہ فک رآ گے بڑ ھھے 


(١) خمت‎ 


خَ ۱ یں 
ما ہے ازم رو دی :3ل 3۴۴ ۔ جح بنا رل۰ ۹۸/۲ ۵۔ 











4٥٥( 








۔. 


سرد روہ بن مس تو دکھ ٹاہ وکیا او رگا ذاےۓے شش !کیا ہار ا پئیں؟ سب ےگہاکہ ا اکیوںی 
یں !نچ رس ن کہ اک ہکیاغم لوگ مہرے ےکی ؟ سب نت ےکہاک ہا کیو نکی ابچ راس ٹن ےکہا 

















.- ض ×؟* وو )ں) 
کہم رے ہار ےنم لوکو ںکوکوٹی بدکمای فو کہیں؟ سب ن کہا کیہ ہک مین .ا اسں کے بعد عردہ نت کیا 
ر ۴۰ 1: رہ تر / 
یھر چٹ نے ہبی کی گیراری او رعلاٰ گی با تکی ےلب ام لوک مھ اجازت دوک ٹیل ان ے 


موا لاٹ رک دن سپ ے اجازتد ےد یک ہت اتا آپ پا نین 


و جا َ ۰ در 0101:1 گ٠۔‏ 
خمروو من ودوپاں سے چو ليکرعد یہ کے میدران یس پہٹا او رتضمور پٹ ایا طب ہہ کر کے لا کہ 


اہییے چ رون ود رما ہو ںیکس بآ پ کت ڈیا سو ڑگر رز چھاک جا وم چملکن ٭ رج ت‫ 


ااورصد لی یچ کے روطب طدکی تاب نددتی ادرآپ نے نڑ پک رک ماک ہا ےمرد !جیپ ہو جا ای د لوگ 


٭٭ 
٭٭ کٹ 


7-7 ۴۰| اک رر اق آ ہے یک سے : ۰ 
لااث سی مرکا چوس کیا بھم ھا ند چا کے رسول ٹوک چو ڑ۴ کر پیم پا زی گ؟ عروواے 

2 -۰ 

َ ۳ 2 ۰ 
جب سے می تھا رکون نع ہے؟ کون ن ےکہاکیہ برا لویکر ین عزوہ ٹ گیا ۱ لیے اس زات 








کیہ بس کے قض میں می ری جان ے اکراے الو گرا اجب را ایک اضمان بجھے پ رزہبوتا ہیس کا یں نے 
برلرائگ ی تک چکانا ہےاے یل تیر ال رن با تک ضردرجواب دتا۔ 

ا٠‏ کے بعد روہ نے پور ہے اشک رک ھا اور اور اشککو کی ھا لک رکےواں ےروانگوگیا ےگھروہ 
نے میدرانع خد یدن یصو ےکرا مکی حر ت انیز ارب شیع رت دحب تکا جومنفظرد ہیک تھا ال نے 
اس کے ول پہ ڑا گیب ار ڈالا چنا نیس نے می کے پاس چاکراپنا ات ان اللفاظ شی بیا نکیا کہ 
”ےم ریقوم ا خدااشم اجب بوڈ ا ناذا رتھو کے ہی د ہکان کا سنا ای لیب پڑت ہے 
اورووڈریإخقیرت سےا ںکواپنے چرےاورا ےمم پیل لتا ہے او راکرد وی با تکا ا نکوم د نے 







٠ ۶ 12 1‏ و ۰ ۰ - 2 ُ‫ 
ہیں فو سب کے سب ا سکیاتی لکیلنے یٹ ہڑتے ہیں اور جب دہ وضوکرتے ہیس پو ان کے ا سحاب 












(469 
ےپ ودنہ ا کرت ہی کرک اس کہ 7 ئ6مو/ 
ےکی اورجب :پمگوکرتے یں ام ساب نام ہوجاتے ہیں اوران کے ساتھھوں کے ولوں 
پیا نکی اتی فلت ےک یکوئ یفن بھی اُ نکی طر ف نزیس دک یسک ۔ اے میرک قوم خدا یتم 
۲ت سس تن وا س2 کید پاز ول لن باریاب 
ہو چک ہو گر دای ایل ن ےی بادشاہ کے در بار یو ںکواپنے پادشاءکی ا نظ مکر تے ہو نہیں 

دریکی ہنی “فی پیے کے سای ا نک یکرت ہیں یا 

خردوبنمسعودکی ینگ نکرقیلہب کزان کے 1ی یجنک نے ج سکاب مر اعلیں “فا ءیکہاکہ 
تم لوک تھے اجازت دوک ژیل ان کے پا ,ھ7 کین م بھی ضردر جا پھر ان ک٤‏ بعر 
آ ہنتف تفور ک فک کے پا ؟ پا تضمور چا نے فر مایا کہ پیگرز ےہ بڑاج لھچا دی ہے۔أس 
سےکنفنگوش رو ں کی ۔ابھی أ۶ کی بات پپار بھی ندہوئ یش یکا اف ک کیل نعحردآ گیا ۔اس 
ا۰"(ج۔۔۔ےےت."ہ آیاے۔لوأ بکتہارامعا مل پل ہوگیا۔ 
چنا نی یلین ےت ہیک ہاک یآ بے اہماورآپ اپنے اورپ کے درمیان دستاو گی تضور بے 
ا سکومتطورفممالیا اورنفظر تی نپ کو رستزا وی لگن کین طلب پر مایا کیل ب ننعمرواورتضور بے کے 

درمیا نکاٹی دم یت کک کی شرا ئا یرش ہوتی ری بالاھ رس اک : 

تضور پان ضر تٹلی ٹل دکوف ا یاکک: "ہم اللہ الزخمن الزجیٔم :تل ےا 
کہم" خطن اکویں جا کہ کی ہے؟ اس غآپ ۷بض جات الله مھواپے جوہمارااور 
آ پکابرانادمتور سے جضور ”نے حضرت لی “نے فرما اکا ےٹی !أ ا" پمِاك اللْهُمٌ " 
یکو پچ تضور چان یما کہ "هذَا مَا قاطٰی عَلَيْه مُحَمّد رَسُوْلُ الله تل 
رک ا ٹھااورسکنے لگا کہ دا یکم اگ رہم جان لی سک پ اھ کے رسول ہیں و بج رآ پکو بیت الہ 

س ےکیوں دو گے ؟ اورآپ سے جن ککیو ںکر تے؟ ا سل ےآپ ہار نز دیک ''محمد بن 
ا عبد اللہ ہیس :ابذ اپ میاگھوانمیں نز تضور چپ نے ارشادف با کہ خدا ا مم!ش ×محمد 





























رف 
رسول اللّه٠‏ گی ہوں اور* محمد بن عبد اللہ ہ×چھی ہوں؛ ببادد بات ےکآ یتم 
میری رسال تکمٹلاتے ہو۔ بیکہک رآپ نے عفر تم خ ایک" محمد رسول اللّه“ 























منادواور نس تہ دیحیجمدں بن یں اللگھو حضرت “لچلہ سے زیادوکون مسلما نر بانردار 
ہوسکنا ے؟ مک رحبت کے عالم یس بھی ایا ما چھ یآ جا جا ےک ہے مع کو ا پنےمحبو بکی فرمانبردارگی 
سے محبت بی کے جن ہہ میس !نا رکرن بڑنا سے ۔ اسلغ ححضرت لی ند نے عر سکمیاکہ یارسوی 
ایل لٹ ان آپ کے :ا مرکو ہرگز ہیں ملا سکنا یہ ںآپ پل نے فر مایا کچھ یھ رکا ک می انام 
کہاں ے؟ ضر تک ید نے دو ئگ تائی قتضور لے نے اس کہ سے خود × رسول الله *مٹادیا 
ابر محمد بن عبد اللہ ٠ل‏ گھوادا_ 

بہرعال یی کین گل ہوئی ء کی دستادیۃ یش : 
(۱): رین کے درخما نآ دو دس سا لک لڑائی ئل موقوف ر ےکی ۔ 
(): مساران اس سال برجم روک ادا گی کے والپں چے یں گے ۔ 
(۴): آنندہسمالی عم رکیل کہ نہیں گے اوزصرف تین دا نککہ ی تھب میں گے اور پچ روا ٹیس لے جانمیں 
یں 
(6): موار کے سوا ءکوئی دوسرا تھی ر مات نیش لاٗمیں گے اورنگواربھی خیام کے اندد کوک یل ونیبرہ 
و نیت 
(8): کہ بیس جومسلمان پیل ے کیم ہیں ان یں ےکس یکواپنے ساشھھ لہ نے جا میں اورسلرانوں 
0 مکش ہناچا ہس ق ا سکونہروکیں۔ 
(0): کافروں پامسلماوں میس ےکوئ یمن ارم ین چلا جا فے وا سکر دیا جا نے گان اک رکوئی 
ملمان ھ بی کہ چلا جا فو دووا ںی نکیا جا ت ےگا 
(۷): ئل عر بکوافقنیار ہوک دوف یقن یش سے جس کے سا تج ہیں دوت یکا متا وک ری ں 
بش را زط بظاہمسلمماٹوں کے حجخت خلا ف یں او راپ :کرام ( زان امم )کو ال زیر ہت اگوارگی 
















: ا ہشیر نت یں جس ومن 
ا 














طاہ ری ے۔ )١(‏ 






گیی--09] 22+ ”کل پا 

اما ےہ رگیافر مات ہیں: 
نے دی رای فی الغان ٹن تج یکہ اس ٹل ا شا نکی ھی یں ہہوئی ۔آ نو نک 
ٹا یکی وجہ سے ایک دوسرے سےکل مل بل ہنیس یت تے سک حد ی کی وج سےلڑاگی تم ہوگی اون 
وڈ ا اب دہ اعلا ہام اسلام با لا نے گے ۔آ ہی ںکی 
ملا مسمائل اساہ می رگنفشگو اور مزاظ کی نو ثآلی 


قر دنک ری کو نا 0 ں٤‏ ای ار یہب کہ وی نے کک اس فرکشثرت ےلوگ 


ۓج 
: یی 1 : 
مفاشرت او رکش کی دور ہو ی ؛بات چقت اوخ ا 





اسللاماا ث ےک اہشراء بحشت سے لے کزان وت نیک )ٛئ ےمان ھ ڑزۓ تھ۔ (۲) 






مو بد ریس کا :دلو یکت ہیں 
”سام کا رم أخلاتی اورگا نی ںآ ما کا مدان وس پیش اورقا مخ بیوں اور ھا کیو ںکا جو تھا 


بی یکن حرات ۳ ا کرام ردان اہ مشچ )بھی و مال دیما نکی زند (أخوب تج ۔ا بتک عزادومافرت : 





اور' نس سار کی یں ان کے اورا' تپ ےی ان جا اب کی وجہ سے خنادومنافر تکابردہ 
گھوں ے یق مل مکی لف ریب تمادعر نے ابی طر فکیٹپائیع سے پی فا لکن لایشتر دن کے 


ِّ۔ 7٦١‏ ' ٴ ُ* صا ۰ 
صراق تی !س۹ اساماورسمان ان نے شید کےاب رن کی وجہ سے جب عداوت ومنافرت 






رون سے وو ر ہوئی وو وی شعور من اوران لوگو ںکی پیا کا پور نکونظرآی“ )٢)‏ 
مو )عپ راتا رکیتت ہٴں: 










ایر 
[)۔ج× :1ز ۳۴ _سرت ای نم شا ۶: ۱۵/۳٣۔‏ 


1 
۴ح زمال: ۶۵۹(۵ ےم روڈ ۸۱۸۱.۰۴۶[ر یں امش :۳۴۹(۲ 
۳ : پا رم ۷ 













(٣)-ے‏ کےا حضی م۷مم ۵١۔‏ 


























0 ما کا انام بیدا کرک ہوکیاادرسمارےکگردا لےسمان ہو گے اورلوگ اللہ کے دن می ا 
دنع داشل ہوۓ ‏ سے پیلک وانے مسلماوں کے اتیل جول یس رک تے اور نماک 
پل کا مور سے دا کی بہوۓ تھے اور جولو کآپ لق کے عالا تغل طور بر جانے 2 کے اہ 
جنر انی سآ نے کین دن مم گال اف اس سن کل دی 
دا کک بیغ دز فان ری سے کن ۔انہوں نے اپ دوستول اوروات فکاروں رے 
تال“ خیا لکیاء :بی اکرم چا کےا وا لا ؛آپ چلال کے جات اورنیو کی علامات او رآپ کا طرز 
دی یلپ ہے سنا کددالوں کے دل ایما نکی ططرف مال ہو لن ےکی کب والوں مم 72 0 
پ ا ا و مس 
ب گے ۔ جیے خمالد بن دلیراو مرو بن خائل وی رہ بارس دن بک رک ہداتق دوسمارۓمسلمان ہ وجگئ ۔ 
انت ات 
چنا چ جب قربیٹ مسلمان ہوئۓ فو دی رعرب وا لب ےبھی مسلران ہو گے جس طرع می نظیم نے پا 
ائث گی۔' () 


















بجر ہلل خا نکھت یں 
ناسل معاہر ےکا سب سے ب؛ڈافانندہ یھ کیہ ال مواہرے ن ےتور بے کوف ریش کےگردوزواح کے 
معاطلات میس پالنقل غیمر جانہدار بنادیا۔حد بے دالی پر یہی عرصہ بح تضور ا قر لی پل آور 
ےو ال رٹل ودرر ٥ک‏ رصرف شا گب ماز نع آ آ فا کی عکمت یت یک1 پ چٹکی 
کی کے مات پاق ل کی تج بئان دانے انگ اف ےکی اگوی ودر سے ظز 
مکی دج ےک أطدتعالی نے ف ر1 لن پک می اک اکور ین کے نام ے جیا نکیاے۔ 

چنا نچ ارشادباری تھا ے: 

فُتْنَ لَكَ فُتْحا فُبینا 4 رہ 


(١)۔‏ یر تک نترب مبرالتار :/۳۵۷۔ 









)سام 5ت 


473 
تر جمہ: کا ہو ںای ك٢‏ 
ڈاازشس اکن فراتے ہیں: 

عد ید ےکی ش رای ہیں جس برمسلراوں کے پدۓ پڑ کراب رض غ لک رأ جح ہیں_۔ 
اکر چ نما ہر الفاظاورشرا ئک انۓ منمستکا ما ہروکر تۓ ہو ۓ معلوم بہوتے ہیں او بچھراسی شر ئا 
تو لک رن چوضرائوں نے اپ یڑ یک یز گی یس یھی تو لین کی ںین .اب 2د می کے ای 
پارقی فوخ اوج طافئت رک ہوۓ ملست خوردگی کا مظاہ ر ہکرنا اٹ ی جب کا پا وٹ معلزم 
ہوجا سے بر ائل تقیقت اور اس کے اثرا تکا کم فو فوخ س ےکمانڑ راور انتا انی نیت 
بن می ںتغو فا تھا جو اہ رین لوگو ںکی نظ ری تھا ۔ 

کے "ےت رکھا جہاۓ اور وش نکی جانو ںکی 
مال ت کی جان ۓےکی ون کلک لوگوں نے اسلا قوا لک کے انقلا یت بک کے دست دہاز وبڈنا تھا۔ 
رت کن لوکوں پرکیا جات ےگا الہ ان کے خو نکی تفاخط تکھی 
نی ضروری تی جن یکس یکا شیڈیارکوا بیکش یکی ضرورت ہو َ ہے۔ دوس افانجدہ اس معاہردے جو حاصل 
واءدہ یاصول او رق عدہ ہ کہ دوممیبتوں می سکم اکم مصییب تکوقو لکرنا چا ہے ۔ اس م وٹ پر ایک 
مشکل اور نے والی ابی جو چیک ہو نک لی صورت می ہی لآ یی وی وف گی .“ور شک٘ل 
عمرہ چھوڑ دی اق او رر تھا جن سکا باوجودطات رن کے مچوڑ د ینا درم اور ڈائ یکوظن تکا 
باعث جم سے ۔گگر یقن صر فکانڑر ١‏ یکا تا ےکددووی صور ت افیاررے۔ 

رکا نک اکٹ صا کرام (ر شون ؛وذعن )ہن دی کر تے جے 
کین ےی کت کیب و1رنی ی۶ بی بات کہاگ رمش کی نب ہکاکوکی فر دای راجازت اہۓے ٍ‌ 
صریرست با مالک کے مسلمان ہوک رمسلمائوں کے ساتحنل چا رت 
ا سکووایں جانا ہوگا او راگ رکوکی ملا نکی وجہ سے کین نام کے پا س چچلا جا ۓ ےا لکووا ھی پر 
وی کیا جا ےگایشنی بک طرفہ بل ذق و لکر نے کے متاوف ش رگا ۔ 


َ 
(۳)۔ش کاراب عادرسوول نی ہنی رے کی او رر رد تاعکر نوز :۹ ٢٦غا۔‏ 


صسصص ‏ سس سض ےر ہے 


8-97٦ 











(474 
تح ےپ جا ےل شر ایی قو کیا جاۓے ن2م ں چرنلز 
سذ ںکیا جا سنا :وہ ہوسکنا ےگ جومسلمان بھا ان فکر اب ےکٹرو تید ےکی وج ے اور باتوں 
سے پنن ہوکر جانا سے ا لک چلا جانا تی میٹر ےکیونل دو ذہنا صرا یلیم پہ ج کیل تار نہ ہاور 
اس حاات میں رمسلمانوں میس ر ےگافو نقصمان کا باعث ہوگا ۔ کی رع جومشرک اپ شیلے با 
نادان سے پھان گکرمسلمائوں کے پا ںآ جاجا نے اس شرط کے مطا نی جب ا سکووائ سکیا جا گا 
ا سکی صرف دالبی ہوگ دالر یما عقیر: رتحکمم ر ےگا و ملین میں روک ربھی مسلرانو ںکیلئے 
میاؤ نکی حشیت ےکر دازاداگر گا ۔ ال معابدۂ ید کی ایک ادرشرم ا میتی معلوم ہوٹی ہ ےکم 
سک جوا بیس اوردو ش رط ہہ ےک رد سا لک ککوئی فر نی نک یس حص یس ل ےگا ۔ اس شرط سے 
ناد + گا خون را یفخم ہو جا ےگااود پر اص نطو پف کی جہا دکیل ےکم چارکی ر ےگا اورسلرانوں 
کوٹ گی اط سے اہے؟ پک مخبو کر ن ےکا موںم بل جات ۓےگا اد رک بھی دس سال یں اپ ُثرات 
و ۔ اسلا کا ادگ ٹارک ٹ گی یہ ےکیظمام انماضمیت راو راست پہ 
جا ادرا بے مش کا زا“ سے ناب دک الام کے عاقہ بی ہوجاۓ ۔ بل" لا ِكْرَاهَ فیٰٔ 
ور اتی ز پرز یکو اسلام می داخل ای سکیا جا سکتا ۔ )١(‏ ٘ 
تی وا ےی کے مض ای از اکا : 
(۱) :مین 

ملمان جب عد بیس سے معاہدہ ےکر نے کے بعدوائیشں یو بینمنودہ جار سے فو دا نی رنہ 
نزک دقعال یکی طرف سے سور ءا نول ہوگی جس یں ہج کا مین کا نام دماگیا اور 
ملزانو ںکوٹنٹری د یگ یکن جب ایک اورلڑائی میں نعیب ہ گی اور بہت زیادہ مال نشیس تھی 

عافصل ہوگا۔ ال طرع بط لک قو خی پاش پاش ہو جا نمی گی اور نکوخاہ حاصل ہوگا۔ 

(۲ :سای خلبہ 





(1) خرن اق ب:۴۶۰۲۶۱۷۔ 





(75 
ںی کے بش قریٹ مر افو ںکوسی طرم شال ریس لا تے تھ اورپ کی کے انل تھے .ا نکی 
ہرمک نکش تھی بہمسلانو ںکوصفیہ جستی سے مادیا جاۓ جاک دہ اسلام کا نام شر لی یں 
کی رت للا فا سے ا وج زان رح رڈ کی نے مس انان سے 
اققرا رکا لی کرلیا۔ 
(۴): عرب پان پراشرات 

وہ ال معاہرے می امن و کوو یت دب یی اور مہ بات اب تک یک کہ اسلام من اور کا 
پنامد تا 0 812 اس کے شبت اشرات مرجب ہو ۓ 5 عدیی ےت کفکذار کے 
لو ں کا ڈر اورشوف رہتا تھا ج صکی وجہ ےکن ہل فومنٹیس دگی جاعکق تھی ا لی کے بعد 
مسلمانو ںکوا تی میں اسلام کے پغام مان بر فگر ےکا موش لگا لف خاش نے 
مسلمانوں کے سا تھا نعاقا تا ستوار گئۓ _ 

4٤)‏ : گت ما 1 مومع 

وی غسرےلیوجیصلاؤن ےا سیل ویپرگفیکممگٹئئہا 
ہوئی ۔لوگوں کے یل جول سےلوکوں یں اسسلا مکی متبولیت میس اضافہہوا۔ دج رقبائل نے الام کے 
اُصولوں پ نو رکرن شرو غعکردیا نس کے نت یں عرب ےئش ہو رقائل دائ ٤‏ الام شس دال ہو ۓ 
جم سکااندازہ اس بات سے لگا یا جا سکتا ےک حد بیسہ کے دوسمال بعدمسلما نو ںکی تحدراددل زار کے 
لگ پیک می 

(46۵: فریش سک کااختزافیگلشت 

ہے ہت تر جک اتی وا ا سز تقر رٹ 
شمامہ بن االل نے الام قبو لک رلیا ق سن ککہکو مل ہجینے پہ انی لگا دی ۔ اب کہ پی یکا 
شکار تھے لہ پر پا بندقی کے بعداورز یاد وکا سالی ہوگئی ال وشخیان مر ینذمنورہ یتور چٹکی غرصت 
یس حاضر ہوااد ررش شک یکہآپ لٹ توم قط سای سے بلاک بوری ہے ہپ ا نکیل دعافر انہیں 








(476 
رسوگل پک چلاقانے دعابھی فرماکی اور پا سوہ ینارشھی عطا عفر ماۓ ۔ابوسفیا نکوجرو ںکا ہد ہیی دیا 
اورس تھ نکی تما مہ بن اخا کو پراجی کچ یک یک رد و ریش کا ٹلرٹرندلرۓ؛الطرر ےف رین سک کا 
پپہلا اخترا فلت تھا۔ 












: لا نکوزگوٹاسلام 

سیا عد یی کے بحدمسلمانو نکوکذا رک ہکی طرف سے نکی ہوئی پھر رسولی پاک چانے 

ینمنورہ یی ا سلائی ریا سکیل شرو کی اورآپ نے جسای ہما نک کے م برا نکو اسلا مکی 

رف زاون باے ازنمالی سے شن کے می سی م ردان نے الا مق لک رپا روڈ نے ہی 
عم سے میں ا سلا ایک ٹائی الاقو ای نرہ بکی حیثیت حاصل ہوئی ۔ 

(۷۸ :و ککہکا یش مہ 

سی عد ید کے انز نللمافو ںکاکفا کک طرف لو نک خر گیا او سنا فو ںکوتز تی ال 

٤وی‏ ۔کذارککہ نے خودن کآکرمعاہد ےگ مر نےکااعلانگردیاجنس کے نٹج می مسلمانو کو کو 

کر کا م وت عیب ہواء اس طرح 7 رہ کیا ٹپ خج ہابت ہوئی۔ 










چا جا ل/ جال جا کر جک جل لج جج / بل / ٭* 
چللر جال جٹ لج جا / ا / +7 +/ جب 
ہ/+/++/+٭/+٭ہ/ك7//َ٭ 
/٭/+ج/٭/٭ 
1۳+ /٭ 
٦‏ 





7) 






/20 


سیل خی 

پرصغیر پاک دہند پر اگمری: قاجئش ت ۔ بی نی رکے مسلمائوں نے اسلام کے پر چم سے مور 
آزاد یک یہ رک چلائی اود با لا خ ر1 زادی اور الا می ُصولو ںک وی جامہ پہنان کیل ایک مبحد و اشن 
اص لک رلیا۔صول اورضا لے کے مطا نی یمن رک یآ زرادیی کے بح شی کوا مکی میشی او سلم اریت 
کے انار ے ہو یی نیان :حا ہتشمی کا مہاراجہہند وق اس لے کی خوا ا یی یک می پوار تک حصہ 
بن جائۓ ۔ ہا راہ نے پا اکتتان اور ار تکو جو ںکا نول رکا معابر ہکیا من در بردودہ بھارت ے 
لاق قک یکیششی کر نے لگا۔ دوسری طر فکشیرئی مسلمان پاکتتااع سے !لاق نکر ےکیلئے بے بین جے 
جب أہوں سو ںکیا کہمہاراجہٹال مٹول سےکام نے د ہا ہے فو اھھوں نے مبباراجہ کے خلاف 
بد تکردگی۔ اریہ نے اتی مدکی بچانے کیل بارت سے !لیا کر کے فو گی إمرادطل بکی۔ 
بارت نے ہوکہ ےی امیا تھا انی فو حا س شی رنواد یں اور پھار گی فو جو کی شمرکی مھا ہر بن سے 
تک روغ ہنی ۔ چاہے فذ بی تھاکہ پاکستا نکی فوع باقاعدہ عم لکرثی چنا خ قاتشم نے اگ ریز 
کھانڈرانچیف جنز لگرڑ یکو جم ےکا عم دہ گر وہ ماؤونٹ نیشن سے ملا ہوا تھا ءأل نگم ماشنے سے 
کردا او رش بی مسلمان بہ جھوڑاعلا تہ یش ےآ ز اش کے ہیں ہآ ز اوک رانے می ںکاصیاب ہو ئے ۔ 
اور بقرعلاقہ پھارت کے یی چیا ۔ 

ار تکاالفرام اود پاکتا نکی تر دید 

اھر بھارت نے بے الام لگادیاکہ پا اکتتان ے شی پرکملیگیا ے اور ہہ بارت اورعمی کے 
لیا نکی وج ےھشمیم بھار تکا حصہ ےل امیر پرمملہدرتفقیقت ہھارت پرم تھا ۔ پاکتتاان ے !نا 
رما تکی نر وزنترد مگ اود فا یکی قا وی حیگی ت لن ار تاب کید رتفیقت شمیکاعوام نے رلجہ 
22 کےغلاف پذاوگردیتھی اود ىہ چا پا نشی سےےمسلافوں سے “تک کا فیصلہ پتددزاجہ 


























(478 ہے 
نی ںکرسکتا لہ دہاں کےکوامکواپے تم ل کا فیص اہر نےکاضن ہونا این لہ اپاکستان نے ےوتف 
اخفنیارکیاکنشی کا فیصلہ اواب یڑ را شمارکی ٢ےد‏ بی ےکیاجائۓ۔ 

سی لئاوا ٌ میں 

جب بھار تی فو میرک ماپہ بی نکو اکر نے می لکامیاب نہ ہوگی فو بوارت نےکشمی رکا متلہ اتی 
کی تار گی کان مرو ای فا رکا کی ارت ہے الا قکر ہکات اور 
پکنتان نشی پملکر کے درتقیقت بھار کی سرذ ین پپہتملدکیا ہے ۔ 

: و7 ارداد وگ بٹری 

کال ٹہ اس ے کے بعد سلامت یکیسل نے اتی قرارداد کے ذر لی نشی میں جنگ بد کی ا کی 
اور ا جا تک لی مکیا انی سے تتتضی ل کا فیھ لی عحیریعوام سے تصواب راۓ کے ذر یکر یی گے 
جوأقو ا مد دکی زیرگرالی عق ہوگا: بھارت اور پاکستان نے قرارداوک کو رک رلیا کم جنورکی ۱۹۴۹ء 
ےکی میں جنگ بندکیکاعمل شردئ وگیااورینس مقام پرفریقی نکی فو ی نی أسے یلک بند کی 
ئن ترارد ےد یا گمیا۔ جوعاا ق مشیر میا ہد بن کے قیضے می ںآ گیا اس رآ ز اتی کی عکومت تا مک دی 
گئی .ا قوام ند و کےماتندوں نے شی می سپ کر اپٹی ذمہدار یاں سنال لی تارف رین جک بندی 
کی خلاف ور زی شر میی۔ 








بھار تکا انار 

چک ہندکی کے بعد جب راۓ شر یکران یکس غکزششو ں کا آ نز ہوا بھاارت نے خال مطول سے 
کان لھنا نو غکردیااددروڈۓ انان مرو حگرد کیو رتشن نز جانا تھا ہاگ یی اذا 
راۓے شا ری ہوئی شی ری مسلمان پاکستان کےتقن یل راۓے دمیں گے ۔ اس کے سا تھسا تقھھ چھارت 
ن ےکی می این قذم مفبو طاکرنے رو غکر د بے اود بڑگی تداد می فو جی سک دمیی اودرقام ام 
عیروں پر جندوو ںکومتقر رک رد یا اط رح نب مشیر پہ بھارت نے اپناقضہ جم لیا و اس ے راۓ 
شمارٹیکرانے سے المکادکرد یا أ سی نے مہ بہان لگا شی ٹس راۓ شمار یمک نہیں ۔ 





و7 
ہے اش قرارواد گل 
پاکنتانع نے دوہارہ ا قوام مد دکی سداپئت یکس میں مل مشیر ٹھایا .لمت یکول نے اپ ےکی 
مائندرے پرس خر جییچے تاکہ بوارت اور پاکتتا نکی تومتوں سے بات نیت کے بععد را شارئی کا 
درو ہس کر ہیں _ پا مکششی اورا قو ام منید وک یقرارداد بک ب ےکا طایت ہو میں ۔کیوکگہ بھارت نے 
انا دہ لو راگ نے سے صاف !کا رکرد ہا جو اس نے سلامت یسل میس ۱۹۲۸ء می سکیا تھا . بل طرح 
ار کیل ہٹ دع یک وجہ سے بی منلراچھ یت ککھٹائی می پا ہوا ۔ 


موب”وروضورت مال 
ا پگ یی کے وا این غاب ہرووں ےآڑزای ہے دہ پاککتان کے سا بح 80 2 
خواہشمیر ہس مین زار کی علومت ے لال ڑھد خلام بنا رکھا ہے اور او روصت پاکمتا نکی 
عاات ہے کہ یسل ہمعھیر میں پت ڈا لک ہھارت سے دوستبوں کے معاہر کرد ا ہے ۔اگر بھی 
صورت عالل دج یذ ارت اپٹی چا لاکی دکھاتے ہو ۓےبھ بھی مس کشمیرک ننس ہونے د ےگا )١(‏ 


۳نو چڑو / ۳/7۷۳ /+۳/:/+1/+/ ۳/٦/۳‏ 
/7ب۳/7/17/۳/1٦1/+/+/‏ 
۳/1۳/+/+۲/+/+/٭ 
7///7/+٭ 

7/77 
2 


٢گ‏ ازڑارروزائ و+وارل اسلاہے :۵/۱۰ ۴۹۔ 








480 
لال ما۰ 
سیل فسٹین 
فلسٹ نک جاربئی پہں منظر 

جی اک ہآتند+صفیات می بیان ہوگاکیہ ا وقت دنیا کی معیشت پہ کی کی یبد زیو ںکی 
ا جارہدارگی بے اود پکمپفیال اتی بٹکی ہی ںکرکئی چو لے تو نے ملک نر بدستی ہیں ۔ ایک سردے کے 
مطاإن جس طرح پودی دنیاکی معیشت پ ا نکپٹیو کا ورسوغ بڑھا ہے اودمر یل ڑھگ پا ہے انل 
سے و و لکنا ےک ہآ تندہ چندسمالوں میں پوری ناپ انچ مک پذیو کا راع ہدگا۔ بی یما چا می گی دییا 
تی ہوگا۔ ان قمام بڑئعکیپڑیوں کے مالک یبودی ہیں اور ود یو ں کا بس وقت دنا کی معیشت اور میڑیاا 
پر قضدے۔ بیاپنے یی کے ذو پر ین سے ج حا یں منوا سے ہیں۔ 

ام ریہ یسے میسائی ت کک نس مس بہود یو ںکوامچاکی نا پن رسھا جا تا ہے ہیی یبد لال کی 
می کے فی یں ہوا ۔ححیدرگک ا نکی مرش یکا ہوا ہے جو انی کے اشماروں پ۷ نا چا ہے ۔ دوس ری جج 
مظیم کے بعد یودیوں نے جک پور دنا یں اقلیت ہیں ء می فی ہکیاکہ ا نکی انگ ریاست ہو 
این نس می ںگمل یہد سا مرا ہو۔ چنا نچ ٹیو صدکی یش یبدد ینٹیموں نے ہہس منصو بے کے 
قت یدب ںکوفلسطن نف لکرج رو غکرد پا اوڑسلطین میس پیل ے؟ ہد لاکھوں ع ہو ںکو ان کے 
پائی دن سے بے لک اشرد بکردیا۔ 

ا 3 مکامنصوبہ 

سے نف ص دک قل ام ائُل کے نام برعتپو کسی نکی سرز ین بہ بڑی مغ ری طاقت ںکی 
سر پک می جوکمنا نات بن ڈرامددچا گیا ا کی مال تا رم الم می کی ںلقی ۔مخر بآ نع جیا دوک 
کرنا ےکم*ہونی تکامصوبہ ال کے پا نیل پا باج یہود یوں سےعحب تک ایک بی نثالٰٰ سے ۔ 
را نکی ریس تک قیام ای عب تکیشکل یش ایک انعام ہے لان یکیےیکن ہوا؟ اس کے ہیں دہ 





481( 

کیا ماد تے؟ ت ا لکینفحییل بی ےکمغخرب نے جب بیبودی ںکومترو نین افعام کےےطور پر 
کر ن ےکا سو نیل دباق اس وقت ورپ شی جزمھی اىمامقام تھا جہاں یہودی سب ےڈیادہ 
آپاد تہ اس کے بعد ام کی سرز ین ا نکی اکشری تک آماجگا نی پھر انعامات وہا کیو لکل 
٘ عطاء سیے گیئ ؟ جاک ود وہاں اپنا مضبوطا نکیل دے مھت ا سکیا عپکسطی نکی سرز ش نکاکیوں 
اتا بک یا گیا ے؟ 

بے ان تقام سوالوں کے جوابات عائ٥‏ لک میں ۔ اس سے پیل ایک بات بوبھی قاہ لفور ےک 
مر بکاصہہونی تک دگوگی ؛یصرف پرداپتنڈ ےکی عدکک ےکیویگ ہآنہوں نےعہہولی موب کی 
یدب یبود مھ نی سی بآ ا کے میں پردؤ بد استنماراوز اسلام وش کاڈ کا ٹیا ھا لگ 
اگ رسنپاسطین سے وانے ے بخو ری نکی جائۓ تو بی جرت انیٹ ککشاف ہم کہ اعلالن پا لور 
ران وا لن ےنقر.] تعنامم پیہودخالف خنا ص رک ہلا تے تے۔ 

نی بق اور إستعار بی نکی جائب میلائن ای دوشخصمیتوں ےبھی اہر ہوم تھا جنبوں نے 


1 
















إعلا لی ہا لور بیس اسم اىیکرداراداکیا تھا ىہ دوشحخفیات'' سی ا لور''(۱۹۳۰۔۹ءے۱۸ء)اور' 
ات 0-0 این کے ہالے سے ہدام زاہ 
إعلان پا لفود جومخر بک جااب سے مفلو ںاشن خوام پٹھو گیا تواوو برطا فی دز میس فور 
کے نام سے سوب ٹیس الفور ن ےکن یس ابقرائی دای اعلیم اپٹی والد ہے عاصل لکیاھی جن کے 
پارے خیالی ےک رات عہد نام ق می خائ طور بر پر نٹ علا ہکی تحت اللذٹمی رکیتلیم دی 
بھی . ب لیم نے پالغورکیگکری ساشت میں اہ مکرداراداکیا۔ 

پالفور ےلین کے تل کے جار ے میں ایک رای بادداشتتوں بی ذکرکیا تا مجنیت 
ایک چتزضردر ہے یا نب اشل ہے بات مگر وی کی جڑ یں قل می تلہمات میش ہیں ج یضر در بات اور 
میلان مغرب می کی لئ ا لک ابحیت ہس ےک ' مات لا کی رو ںکاتن مارک ای فو قیت دی 


ر وچ تچ ھت سد ھک ۳ 








2ہ 
ای لور تورر ےن اتادئمما تک بلاگی عدگک اس بات سے بش ر کیج وفی کا 
منص ا رف فلسلین پبررقو مع پز رہوگ !مرفسطی نکی سیا سی :ہف رافیائی ورس ری اہمیت کے یش نظ راس 
یکو یبدد یہ سکیل شۓ دن کےطور برفتق بک یاگیا۔' 

مر استوار یت اور یپدیشنی میں مالک رئیا ما یس الو کے بعد تا ہے۔ مارک 
نے ہا ںیم کککھا راس بر طانوکی سفا را رکی حفیت سے د نیا جھ ریس حالنت سفرمیل رما 
گر خر نا یضا6 حیات لئ والوں کن ے رفاسین 9 برطا وی 
ساسنت ادرک تی یس ایک مارح کےطور ب رکا /مکرتاد پا چم سکی ماد رہپ سے پیل اعلان 
پالغوراورپچرفسیین پہ پر طا وی تسا ال ج لآیا۔ 

072 کے مطا بی لندان یس ہو نے دا ثے مباشلات یس برطام یک نمائندگی 
کر ررا .9۰۷۴ا یں پر پا شا ت مالس 2 کے ام کشم فی دوائز ےکن یکن 
ہوۓ ہنس مل اس اور بر طا ہی کے درمیاان مت وہ غلا ‏ تے ا مم تے اورپسلین کے ما ت ےکو 
ایک ان الاقوا ھی ادارے کے تحت رک کا موب ہناگی تھا إکی مجاہر ےکی جیاد پہ بر طاش یکا ص٭جول 

منصوبہ تو ارک ایا نھھا۔ 
نمو ےکی تی ل کیل صہہوخی تکیٹ ربک پیل تن میں شرد عک یگفیگربیکامیاب نہہولی ٠‏ 
چرس کے بعد یسیہہوضی تک اف یک بر طاعی ٹس شرو ےک اگئی جوکامیا ب ہوگئی ۔ اس سلسلے میں سب 
ہے پل إعلائع پا لٹورگی اصطلاع استعا لک یگئی ۔ اک کی بیاد بر جد بد دور شش مخرب ے 7 
الام پر جارضی تک ابتقرا کی اور اس کے بعد بیہودیو ںکلسلین میں اپنا الک ول نکیل دی کی 
ابازت د لئ کی رنت ء۱۹۱۷ء بش إاعلان پالغور ہار لگیا گیا آں وٹ مر بین میں 
ود یو ںکی جموگیآبادی پا یصمد ےز یاد وی ںی. اعلائع پا لور کیک خ کی شکل میس تھا ہہ وہر 








(د48 

۹۱2 ءکلارڈ ایڈڑمنڈ روش وشیلی جس وقت عا فی م*ہوضی تک یہ رب ککا ایک نم تھاکو ارسا لگیاگیا 
سکامن بیتھا: 
”ارڈ ایڈڈمنڈ روشحھ یل عز تب شاو برطان یک نیا تک تے ہو ےآ پکک یہ ٹچانے 
یس انچائی سرت ہودکی ےک ہمندرج ہی لف یک شجنشاومضحم اور نکی وزار کی کا بینہگی جاب ے 
مل !تق کے بعد اعالطہت ریش لا یی ہے جوم*بوٹی یبود و کی عحب تک ایک وا لات ہے 
96ھ ین یس بببودبیوں کے تو بی دن کے قیا مکی ضرور تک وقج لی تک ینظظرے 
دریکھ ہیں ۔ اس مو فکوحاص٥‏ لک نکیل ہرک نو بر تے کاو لا گی جات انکر اکس کے مات 
ساتیرنلسٹین میں ؟ باغیر یودئی افراد کے تقو قبھ یحفوظط سے چاٗمیں گے اُسی طرع جن طر حکہدنا 
کے نل مالک ٹیل پیل ہد بہودبیوں کے توق ہیں ۔آپ سے درخواست ےک ہ ا اعلام کا 
بلاغ صہجوفیت تماق تما تھادی ہماعتقو لت ککردیاجاۓ ۔'' 

اب تہ جونی تک یت بک جو ہنی ی نا ام ہیا بر طامی رٹ بہت کا ماب ہوگئی ۔ لا کی سب 
سے بڑکی وجہ برطاغیہ کے استماری مفادات تے - اب کی رت اإعلانی پا فور برطاعشیہ ٹل 
کامیاب ہ گیا أنہوں نے با نکی عیہہوٹ ٹیم سے نواقا ت ہقف کر لئ ۔ برطاحی ٹیل بی رک 
کاضیاب ہو نک ایک وج بیگھی ہوکتی ےک برطامی نے سلطنت عثاشہ کے سے بر ےکردئے تھے 
اورنشمرتی الم عرب پہ اہ کا قشم ہو کا فا اور بر طاشام اض لکی شکل ٹیس اور پک یہودیویں سے 
چھڈگارا دلا نے والا تھا ۔ ایک دحیکاریی اوھ ری ہوگی قو مک ہا ن کیل صددریوں ےآ پارفلسطیذیو ںکو 
بھی رنےکامضصو رحب پا کا تھا جس ن ےآ گے پل لکرازراحی تک مرٹرم سے جکادیا۔ 

ارات لکا قیام اور یبدد تی بکاریاں 
مبوضہ بیٹ القدسل کے ایک صے پر تی ےکی ۱۹۲۸ء میش ہ یکیششیں مرو حکرد یگفینھیں ۔ اس 

کا بعد سے با چپائزمیہہوئی رات نے اس مس الا ئی ش رکا ہرددنٹان مان ےک یکوشش روغ 

ری وس کے س شر کا ماف تما جاگے ۔. ۹۹ا ءکی عرب اسرائل ہگ کے رورانی 








84۶ 
اس ئل نے اس کے بات ماندومشرقی صے پرکھی قجضہ جمالیا .اس وقت سےل رآ تک اس ذس 
الا ہی شر کے اسسلا می اونقا کو تا ہر ن ےکی جم جارگیا ہے ۔ بب دگی جیب کا رگا کے پا تح ھ اب مجر 
ان یکی جا بکھی دراز ہون ش روم ہو گے ہیں ۔ اس سللے میں ویک سلیمالی کی جفیادد کی جلائش کے 
ام سر تی کے نینج رگی ںکھودرن ےکا سلسلہ ای کعرصہ سے بارگی ہے ۔ 

ا کے ساتمے سات و مقر وشہ بییٹ النقدس یس ربئے وا نے عرب منلمانو ںکی نگیو ںکو اس رر 
مشتل نان ےک یک شی ںکی چاری ژُ لک دہ یہاں ےن لک رتو پاسطین کے دوصرے علاقو نکی 
اٹ أفل کال رجزدرہو جاتھیں .مسلمانوں سےز بردت ا۲ نکی چا یداد خر یدک رآ نمی منمدمگیا جا ا 
ہے ۔اورا نکی تہ دی ہستیا ںآ بادکی جادی ہیں ۔ اىن وق تک تقر یبا ۲۵ بیہودی بستیا ںآ بادکی 
جا چی ہیں جن یں تقریبا ایک لاوس ٹھ زار ود یآ باد ہیں ۔ 

موہ ببیت ال مق لکی تصرف تتخرافیاگی وت تب لکی جاربی سے بلگ ہام سککا ا سلائی جار سے 

نکر کیلہتقر یىی بای میں فلسلیزں یر :جلس ولبطن کسی ٤ری‏ 

کک یں ڑا کڑع رز الد بن العر اتی کا یک مقالہ 

شھائع ہوا ےجس میں یہ إککشا فکیا گیا ےکرمقوضہ یت ال مقر کے قد منھلوں کےم ری نا تبریی 
کک ےگہرالی نام رود ئے گے ہیں ۔ 



























جانب سے اح ہو نے دا ک ےگ ری ج یر ے 'ا٭ 


ڈاکمڑ مز اللد یئ کے مطابقی ۱۹۹۸ء میس ی مقروضہ بیت اقم کوصیہ دی نر یس لی ےکیلئے 
سمازشو ں کا آننا کرد پا گیا تھا ابس سلسے ہیں شی رکی شا لی اور جن لی جانب سے ود یآبادکارو ںکی 
تو ںکی ایک زیر جا یگکئی ہےت کہ بی مقدیس شم ا ہتآ ہہ بیبدد یآ بادکی کےنر سم سآ تا چلا جاۓ 
ال وقتصورتھالل یہ ےک بیبودیو ںکی بستیوں کے نین مکش کی پرانی دیوارے سمل ہو جچے ہیں ۔ 
رقیاسا ماف لکی سانش مل ہونے سے ہی لین ی نو ںی جروچی رکا طول سلسلیٹرو ہوتا 
ہے ۔ اس کے ساتقح ساتحعرب اسرائنل خفیہ مراکرا تکی طرع ڈالی جائی ہے ۔ے ۱۹۶ء ٹل جب 
”او رمادات سے موم( متقوضہ بت اللقریں )کی جاب پواز یا امر گی صددتیکازڑ نے 





48٥( 

ا سے نی لآ رام سط رانک کے ا چو سے پیل انسانی قدم ےتشیہد شی جوسب سے با جا مھ ھ4 

سول. ہیں بع سب ر۱۹۹۳ء میس باصص رعرفات دائٹ پوس کے لان جس اسرائگی دز نشم 
اسحائ ران کے سا تع د وت یکا ہاتجھ علار ے ےو سن ذقت ام کی عدری لنٹن نے أے دپار ران 
کے خہدام کے مسا وی اہم واطتے ےم وسو مکی تھا۔ یینقائٹل ز ید نکی ھا کیونہام بی انظامی اور 
یہودیی یا رع رفا تکوت اک ر٘س مقام پ رما نا جات تھے د٤‏ دا تک لے تھ ۔ اب ایک ا سے 
سفرکا آ غماز ہو کا تھا جس سکی منزرگل لبج یکک دنا کےسا ئ وا یکین 

یام۶رنا م گی طرف سےرائل کی طرف بڑھایا جانے دوالا دو کا یٹ افوارٹی کے تام 
کی او ہوکنا ےگر ایل سےعرب اصرائیل وشن یکی دیوا ری لم ریھی۔ 

عرب لیڈدوں کے نز یک یہ ای ک میتی جےعرب موا مکی مجر پورحمایت عاصم لٹھی چیہ 

عالا تظرب لیڈ دو کان کے اص کی بھممنصبو ںکی جا بب ڈگیلل ر ہے تھے ۔عربکوام اپ لیڈروں 
کیاضہت تتاز فسلین پرز یادہ جز بای اورنش تھ ۔ انی طاقذر ج بات نے اسرا ئل کے سات سا 
بھی رای کودشواراورخخیہ ہناد ا تھا۔ ج بگھگیابھی را یی یک یکو یکل ہوتی فو ینموالی افھ اک گر بات 
حھ لگ ی ت کیا ہگ جا یس ساس طور پہاٹےآ پک وک ےتفوظط رک سکو ںا ؟ اٹ ی گرا کی بناء بط رب 
لیڈ راس رات لکی جاب پیل فقدی سے پیلہ راد بارس پت تھے اک ۔عربعوام میں مرخروہوا جا کے ۔ 
راکرات یل دشوارگیٰ ٤اصا‏ بکوے ے۹ اء ٹیس کی مرتہدا کی ایا تھا۔ 

بد عمادات' کے ای نکی لاس میں مو لم جانے سے پ یکا ددر ے ‏ 'سمادا ت یں 
لقن کے ساتھ اسرائنل جارے تےکہ جواب میس اسرائنل ا نکی تجھولی یں بپتھ نہ بچھ ڈا لگا 


گر سمادات''اسرائیل کے بارے خاططانمدازو لگا ٹیے کہ اکن کے بر نے ام رائیل یں متبوضہ 


علا تے والی سکرد ےگا سمادات “'اپنے آ پک ال۳ نکاشراد و صلی مکروانے م کامیاب تھےگر 



















4)٥٥( 

تا عرب د نیا ےی بلگہباہرکی دنا ے؟ یا تھا یرب دٹیاسے فداری کے الزامات 'سادات “ 
کا اتطارکررے تھے .مر لی رعرب دنا کے بہت کم آذ ہا نکو اس جائب ما لکر سک ت ےک ہمستلہ 
اسعین بب الف ے۔ 

گر یلین ا جک یت ا یرس ال مت کا ع رکز یکاہ اس بی ق یکا نت تین سال بنا ہرہوا 






و 


جب راج العقیدرمسلمائو ںکی بندوقوں سے لے دای ۹ کولیاں''سمأ دا کے نے سے پا عی٠‏ 











مر دنا کےنو دی ' سیا دات''اش ن کاب چا رکرر ہا تھاجگ را کے اپنے لوگوں کے نیک دہ داروا 


یم 


”ما وات'' سأ کے ایک سال بعر۱۹۸۲ء میں لہنان کےاوخخِ صد رش مر جھا ہی لکواس اتیل 
ےق ری ردالپا کے بناء ہگ کرد یاگیا۔ 
۸ء ے ےک ے۱۹ کک اضر ائل لتاق رک کے جزم میں خو دم رلوں نے جن فرت 





لیڈ رو ںکأ لکرد یا تھا۔ یھی دو راس تھا نس پیا رع رفا ت “نے اقیاط کے ساتح قد م دکھا تھا دہ 
باگی حدرتک ا مقاصد می لکا میا بھی ر سے ۔ ا نکا ایگ جاخب اگر اھ راودا مرائل کے سا جھ 
را تھا نو دوس ری جانب انی مقوش ےا سی نکی اسلا بی اد تج ریو ں تصوصا] ''عما سی کامح یقرب 
خاصل تھا۔خرائس اس وہرنے راس ےکوفڑ بردائشت کے ہو ۓحھی پگکرا مر ایل اور ام ریو داستہ پہند 
نڑھا. ای لئ نیس شور سے بی رات سے ٹا ٹ ےکی تیر یا شردر ہو نی ۔ ان معاللات کے 






ساتحدوساتھ اس رع رفا تاس یل کے۔ اج ہرط رج کے موا ملا تکسلع تیار تے مگ را نکی ز گی ش 
موی یت ال لق ںککھلعیۃہولی داراکومت بنا نافکن نہ تھا . می ای ککمہ ے جوا نکی اچا جک موت 
کیا سب نا 











موبوروضورے مال 
اب ببیت ا لق ل ہولی ول کومت بنا ےکی اسر ئرگی جن لیک خرکی رائل میس ہے گھود 


487 
پا یکیشل میں اتوارٹی کا یاصہدر امس سال یش قیام ان کے نام پراسلا می یکو کا راستتہ رو ک ےگا 
چیعراق پر ام کی ٹج ےکی شل میں ام ریہ دن رعرب مال ککوسسل دھرکا راہ ۔ ا وجہ سے 
اس رانید ںکو پورکی امید ‏ ےکہ خال محر بک جاخب سے ان اسرا می قد ام کے خلاف ہراحمت نہ 
ہو نے کے پاب ہدگی .و ںگیاد کم رکوام کیہ یل ر ایا جا والا ڈرامہ ا :نع اما مک کو چا 


سے 


7 















7 

دداصل ام ری می بڑئی طا قت اسر اش لک یسل ص پت یکردجی ہے ۔ اھ رکا ہکی اس شللاس نی 
-- سے اس رام لکو شٹی ہو سے ۔سیا کی اور گی اہر نکی رائۓ 9 0)]) 
زیہستی چھوڑ د ےو اسر انل بلا شبہ ایک ر جی تک د یوار ےکبوکگہ ۱۹۳۸ء سے ل ےگا بتک اع ہبی 
اع راع نے بیہاں اد بوں ڈالر سماع راع کے اُوزار إستعا لکن ےکیلئ صرف سے ہیں ۔ ہرسال 
اتاد امداد کےطور بر اسر ات لکوتقر..ا٭٭٭۱ڈالرٹ یکس متا سے ۔ اىی رح ام رہ ارات لکو٠١٠۱‏ 
ڈالرٹی سپا تی امدادد ینا ہے ۔ے۱۹۷۴ء سےا بتک اھ کہا رام لکواس شید یس ے۱۹ ارب ڈ ال دک إمداد 








دے چاے۔ )١(‏ 






جک ہم لیو جا / 7/ج / بث /م/+/+// 
1۲ /+/۲٭/+/۶/ ۳/٦/۲‏ 
جو / ۳/۳/۳ /7۲/+/۳ 
7۳/1/1۳ /7/٭ 
٣/٣/1۳‏ 
ى 










00 ُ 2 ۹ : 
00 7 اردووائث ومعارشی اسلامے ! ۓا/۴۱۸۔ بہغتروڑ ومداۓ گت بشار(:۹۳۱۰اور ین _)۲٥۰٠۵(‏ 





اارہدارکیپنیو کا خواب 

کسی بھی من کی نوعیت :دجو بات اورک لک کی کیا اس کے جا ربنی بیس من رک بنا بہت 
ضردری ےلکن بھی سے علو کا جا ری مطال کر ن ےکی رایت ہمارے کک می نی پاگی چالی اور 
علوم کے ما رکنی پپس منظ کور نظرا ندا زکردیا جا جا سے ۔علوم کے مطا للع یس ایک اورنمایاں رش 
ینس اور پئنسی علو کو یر جا نبرا ربکھنا ہے ۔ ال نظریےہ کے تحت اکڈ لوگ می یگنت ہی ںک یلم خر 
جانہدار ے اودعل مس یگردہ با فردکی خدت نٹ لکرتا بر سمارکی انماضغیت یا ملک دقو مکی خدص تکرہا ے 
عا لان ہلوگ لاس جا تکونظ رانا زہکرد نے ہی سک ک بھی معاشرے میس جہاں ال ےگروہ موجودہول 
من کے مفادات تضادہوں و ہا رئٹس اورعلم پیش طا تن رگد ہکی ما تن دگ کک تے ٹیں ۔ مہ بات تا رتا 
کے مطا ۓ ےنا زبال سے ما تیسری اور انچ یی صد لغ کے سے ال لے یں ایے 
نظریا نیس لن توغلام لبق کے مذادی س تھے جا سن ہوں ۔ست اط ؛افلاطون اورارسط وب یلسنہوں 
نے خلاموں کے ہہاۓ انان غلام کے نظریا تکی نمائندگی کی ۔اسلئے بس اط س ےکی علم 
کوغی رجا یبدا رسگھنا ازخود ایک چانہدار یل کا مظہرے اور ا کا مقصدد طاتذر بے کے من وکوآقبیت 
دیناے۔ 

ہارے کیک یس موجودایک اور ران مضرپی نظریات اورک اہو ںک و دی سای اور رم 
جانہداربھنا ہے ۔ اسر فان کےتحت الیکا ہوں با یف ریا تکونظ ا دا زکرد یا جا اے ہش ن علق 
د بین سے ہوتا ہے ۔ ما طور پر ن نظ رات او رکتابو ںکو چا نبداراو رق ناب خیا لکیا جا ا ے جن نکا 


علق دن اسلام ے تا ہے۔ 
۱ 


ال ن.قان کے نیج یں ہمارے کلک کے طال بملھوں اوروانٹورو کو بے عحدنقصان بے 





0 کیا اعد سے مات سی سے اھسد ھسئی ےم دھیت جک 


(489 
أکیوککہ دوصرف کیک طرذنظریا تکو خر جاخبدا ربچ ھکر پڑت ہیں اورکئی درست اور اہ منظریات ے 
محروم رہ جات ہیں ۔م|نی لوک صرف مغ بی عو کا بی مطال کر تے ہیں جرد ی نکی طرف دجو کر کے 
او رفاط یں می رکرنے ول کا 

بیسو یس دی کے رو میس بد پی ورام بی سیا یدارگی نظام تق یکرت ےکر تے ا ٹا گی روہ 
کاتھا ورس ما دارکی یت میس یک یا دی تد بآ جیا سیف س رما داکی ناما نی انی شل 
(سمامراحیت 61181100 ۴۸0ا) یں تبد یل ہو چنکا تھا ۔ سا ھرابتی مس رما دار یکا بیار یخوعیت 
اچارودارئی ے..۔سواہو یں عو گی سے ا شس ریس عدکی تک سر ابرداراز نظ مکی بنیادئی تصوصیت یڑج یک 
ملف سر ماب داد طبقات ایک ددصرے کے سا تج ھآز ادا طور پر متقا بلک تے چے اود ایک دوسرے سے 
اجناس یج اورزیادہمتائ قکمانے ایی یکرت ھن را کا نی نل ا 
لاد ےھ نت 

بیسو سی صدیی میں ففی تر کی انی پگ یکرکئی رما بداروں نے بے بہا مس ماب اکٹھاک رلیا۔ ان بے 
رما ررداروی نے ایک ای کک کے ان کچھو ٹے مس رمابیدارو لکود بوالی۔گردہا ج ان سے متقابل کر تے تھے 
سط رع انفرادکی رما یدارک کیا ججاۓ بی ہڑگیا رابرد ارک پذیاں دجو دی سک میں اود ا نکپڑیوں نے 
ما سا جنا اورد نا ک ینوس منڈڑ یوں پراپٹی اچارہ ارک قائمکم کی ۔کئی اجار دارس ماییدا رگپنیال ا 
رو ہد ہکئی چو کیک خر بادعکتیگھیں _ نڈڑیوں پرکنزول کے بعدابارودارس ما یبدا نے سی پچ 
بھاٹپ ٹ یکسا یل مز یداضافہانساٹی من تکو ان مقار کے ا سال میں اکر یکیا جا سا ے۔ 
سا نہوں نے ا ۓ مقصد کےتمو لکیلنے نسالی ذ جن او رکردارکوکنڑو لکمر ےکی ضرور تس و ںکی 
اس ضرورت ےم لضیات یس کرداریت کے رر ےکوفروغ دیا شس میس انسالی عو او رکردا رکو 
کنڑو لکر نے کےاُصول شع گے گے ہوں ۔ 

چونکہ یہ می صدیی کے روغ یں ام بد میا کا سب سے طا تتذ رس مایبدار ملک بن پا تھا۔ اس 
انمانوں پہقابو پانے کغیائی ری بھی سب سے پل ای ملک ٹس پیدا ہو ۓ ۔ یصو بی دک کی 
یسید ہائی کےیش روغ ہی می سکردار یت کانظ ریننبول ہو چکاتھا۔ 


ا ا رب 











وو 





جانع براڈ ند اسنا ام رک ہکا پہلا ما رخفیات ہے شض نے سب سے پل ال مت میقم اٹھایا 
ولسن کےز دی کملمفغضیات کے ہنیادی متقاصداضا یکر دارکی پیٹ یگوئ یکر نااوداساٹ کردا زکوکنڑول 
کر نے کےطط ری و کرنا ہے ۔أس ن ےکا ہاگ رن یکردار یت لپن دفقیات دانع کے ای اض 
جیے پر ےکچ مفلر ان و لوان اکن کیم لکود یکر ہی بنا مکنا ےکہ بی لکن عالات یا جو بات 
کی وج ے ٹچ لآیاہے۔ چوک وان سنظر بے ی کچھ بیادی خا میا یں اسلے رس سنظرہے پ 
شد بپتقی دک گی .ناب مکی مضیات دانوں نے ا نظ ری ےکوگمل رونم ںکیا کہ اس ی۴س چچھھتب یایاں 
ان کیک ویش کی۔ 
٣ن‏ برک سل شایداخ گی دنا کا سب سے پا زندونفسیات دان سے سک نے دوگ کیا 
کرس نے اہی تج بای علر یق ہا ۓکار در یافت کے ہیں جن کے ذر یچ زی رترب کےکردا رک انچائی 
در ےت ککنڑو لکیاجا سک ہے ۔ اس عا لا ننش رب یش زی رر بک اکردارز اد بے سا ختداورخودرومعلوم 
وت ہے ۔ ال رب زی تر ہگج بہکرنے وانلے سےکنزول ٹیل د جتا ہے ۔ چیہ زی تر کو بی ا صا 
تہ کرد انی تی ےگ کرد اے۔ 
سک پا پر یرام بی ا چارہ دارس ماب داری ضرورتقول پر الیل پور اترتا تھا ۔کیونک س مابیددار کے 
نز یک مردورایک جاور بی تو ٹس کے ذر می مزا نع کمایا جا سکتا تھا ۔ اور نکی خواہ تج یکم ردور 




















ےکوالیماماحول *ہ ا کیا جاۓ نے مردورآزاد ماحول بی ہہوں مک نکنزول سیا یدار کے پا بی × | 
ینزو نکر ن ےک .نات کنی کان کے لے موزو تھی 

نظ یا تکو وٹ حر ن ےکیے سک نے ان کنا ٭'۶۸ ۸۷۵۱٣۴‏ "تک جس میں 
اس نے ایک یی د نیا ہنائی جہاں سب لوک ںکاکردارسمز کے بناۓ بہو ےا صولوں پ ہا تھا۔ نیہ 
دنا ام گی س ماب دار لق کے خوابوں کت تی سکرو کے نظریا تگردار یت پندگا کے ات ای 
اصول لی انسامی سو او کردا رکوس لقکنڑو لکی ایک تی انا کی نشاند یکر تے ہیں ۔ بجی وج سے 








491 
ام کی ذرائع ابلاغ آ کل سک کےظریا تک بے پناشیرکرد ہے ہیں۔ 
ایک اوراہ م کلک جو ام کہ کے مفادات کے فروغ کیل ببہت اب می اور ماہرن مفسا کا اہم 
موضو مطالحد تی ہے۱ دہ ہے پر پیگنڑہ اسیا تک الفت کے مطا نی : 
2 دوسرو ںی زان ےکو تا رکررنے اوراپتی مرشی کے مطا لت تب لکمرن ےکی ایک عف ویش 




















را پالڈون کےعزطا لن واقیازی ای ہوں پا ری ہکوداوگل کے سا تج دعوام کے سا 
امے نشم انداز سے بی کر نا کہ ال سے پیک رکی مرشی کے مطا نی تار حاصل ہہوں او رگوا مکی سور 
پننکاری س ؾ ادرخیالا تک تائ کر نے گنو ىہ پرو پننٹردے۔' 

نما کردا رکواپٹی مشی کے مطاای بنانے اور پور دنا عوکر نے کےگھنا نے خواب نے 
ام ری اور گی بیودی لال یکوجورکرد یروس یبھ اسم کے اوھ پٹھکزڑ ے استعا لکر نے می کوک ی 
آ نیچ وڑےخواو وہ نیڈ ے کت بی انساضیت سوز ب یکیوں نہ ہو ۔لکن ال کے ساتھھ ساتجھ اپ 







نموم مقاصد او رگھنا و نے اقرامات پر پردہ ڈال ےکیلیئ اپے ماہرحن مفیات کے بتاۓ ہوئے 
پرو نہ کے اصولو ںکو ا تما کیا گیا۔ اس وقت با اعد ہ ایک نو بے کے تحت پالی وڈ می نمی ہنا 
گ رأنیس پا ری داجس پھیلا دہ جا ا ہے و ننکموں میں ام کی ہکوایک بب خاوقی کےطور پ جن کیا 
اتا ہے چیمسلماخو ںک کردا رش کی انی ہے اوددنیاکو مہ باوارکر ان کیکوش کی جال ہ ےک ہام یم 
پر دنا کی خدم تکرنا چاہتا سے ۔ اس می الکن یلا نا چا تا ےتک رمسلمان اسے ایی ابر ن ےنیل 
در ہے اورام ریہ جو پگ یکرر پا ےچ مسلماپوں کے بن امن جشثوں اور دہش تکگمردعنا ص رکرو کے 
کی ےکر پاے۔ 

ای النکڑ کک اور پرلیس میڑیاچھی ز ورشود سے ای منمو بے کے تحت مرگ مل ہے۔ یہاں یج 
ایر ئل می ہنا کا ایک تول بادآ گیا جو نوں نسحم ند کے وقت ردتے ہو ےکی تک اکر 
فدہ پاکتان پ ےکی خالف کرت ہا کی تیر تک جا تہ لکیوکہ برا نکاضن ےگ دکوادرافسوس ت 




































وو 
ان مسا سان تاد بنا پہ ہے جوملمان ہوک ری کی خاش تکررے یں اور ا کی راہ یں روڑ ےا ڑکا 





رے ‏ ۔“ 

1 خ بھی موا کچھ اس سےمنائف نی سک اگ رغی سم ای اکر ہے ہیں قذ دو ہمارے وشن ہیںگر 
سذ ژن مسلران لیڈ روں بر سے چو و نکی بھواگی یس میں هی لق ارد ےر ہے میں اود ام چیہ 
کے مخاص دک وکا میاب بنانے ای 0 ورک اور الک ش فغلموں مار پہتی ادرحوصلافزال اکردے 
ہیں۔ جال ئے خھر تا می ےک الن کےغاا فکوگ یآ وا زھ یی ا ٹھا جا 

یہ ات اب ڈحگی ٹینیس درد یک ام ری ہکی کو خووکود نیا کی نترب ن چو مھ ہیں اور نکاقیرہ 
ےکی نی پورکی داب حکومتکر ن ےکی پیدا کا گیا ہے ۔ دہ مہ کے ہی کرام یہ کے پاشنروں 
کے علاوہ اور یکویھی د نیا میس جن کاکوگی نیس بل اکٹ رکوقو دو انا نیت 2- 70و 
کر گرا م ری یکومی بات ہن نشی نک رلیٹی چب ےکہ گی دنا یلوم تکر نے کاخوا بکوئی انال 
نمردد :فرگونی اسکندر مم گی خان اور پلاکو مان اور رو سب نے مر قواب د 9 2 
موہ ےلم ن ۓبھی فی نہیں پائی لم ن بھی مظاو موس مٹاا یکم نے پروی تا کیاہے ۔ 


از نمض ابنے پکود ہرالی ہے ۔ایک کے بعددوسر ےکا آنامقدر ہے ۔اگردوندد ہا یگ | 






شدر ےگا لہ ااگرٹمرددیرگوان اورروس وظی رکا دنا رقکوم تک خواب ران ہو اف ام ہکا گیا یہ 
خواب پوراٹئیں ہو گا ند تی نے انس نوا اد اف بای ےا کوٹ بھی ! سے خلام :لکش رھ 
سنا نآ مج ام رکا نا جا لمکم نے پا ا خ ا کی طاقت کا ماشہ ہوٹاے اور اسلا مکا سور پھر 
پ ری دنا فوخ وا١ے۔(١)‏ 

۳/7٦7 /+| [1+ ب/++/‎ 
7/٣/۳ /1/ 
۳/7/1۳ 
٦ 


۔ڑ2ا:ء ھا تحص روم ۔ [3]: روا یت قلخ [4] شابراوانظاب۔ 





۱ یسا1 ]: ا یت کا وچلزاول 


زدو 
ٛ ضرم 
چچاراوررہشت کروی یں کی ور ے 


اورام پلیہ میں اتب رکی تا یکی میق تکیا ے؟ 
١‏ از لینشل روم :ہوم اور چچامش مرکورقرآلی آیات +أعادمٹ مہا رک اور ال آ کا 
ای ما ۓ جچہادکی یرف وا ہدقی ے ۔ 

چہادکی شی تحریف 


1 د بین اسلا مکی ص بلنددکی وجذ کیل پی مل اش کار کے خلاف ای چان ٤مال‏ اوروقن تکوخرن 






















نا چہاد غ 






دہشتگردٹ یک شرگی ریف 

''شج کی طور پردہشتگمردیی ا کل ہا ادا مکو کت ہیں اس بی اشن عا مہ خراب ہو ہنموم اور بے 

گنا شہری( سے دہ فی سکم ہ یکیوں نہد )کی جان دمال ادرکزت وآ بروکوخطرہواو ری کے نکو 
غص بکرلیاجاۓے۔" 

اب دن اسلام یس چہادک نذا جاز ت دئیگئی ہچ دہشم تتگمرد کی شمد بد غرم تک اگئی سے ۔ 

ااہ مر کے وا دی یقت بے قاب 

برا٣۰۰‏ مکودنیا کی بپر پاودام رکا جس ای ٹیم داقعہ یی ںآ کرام ریہ کے بہت بڑےتھارلی 

ھرکز ورلڈڑ بسن کے پیک اوس جڑ داں اور کے ساتھدوممافر چہا زنگراۓ اور بیدوٹول اورڑ کن الال 

ہو یئ ۔ 

اس وا تے سے ام یرسیت پا ری دنا یش ایل پگ کرام رجہ یس تی زسیکورٹی دا لے کک میس 

ای بی زہش تگمردی ہوگئی ۔اب اس عادظ کے چنذ روڑ بعد ام رپ کا صدر چارج ڈبیو ال جب 
















(4و 

مرا ون زم رود جآ ے حدم لیقینکم وفصہ میس تل ہو ہکا تھا۔ ریم وفصہ انتا شمد تھا کہ اور 
امربکیوں نے ا واقدکواپنے لے ایک شئ ھا اورام کو چادکھانے اورد ناک ینظروں میس ذ مل 
کر ےک یکوشن لج یکذ ا ار شی نے اکن کے فو ری دہشت گر دی کے غلاف بن کااعلان 
افو ادر ارس تا یکاسبراملمانو ںک نی النقاعرو' کےمر ناد بااورام رب یوں نے مسلرانوں کے 
خلاف دہشستگمردئیکی جن ککا آ ا زکردیا۔ 

ابإ دا ےکولزرے ہو ۓ تین سال ہو گے ہیں اور چوتھ سال شردر ہو کا ہے من راچھی 
کک نک باز ا اود ام کی اتنظامیہ اس با تکاکوئی شمو یس جن کک یکم یقلہالقاعدددالوں نے 
کیاےے۔ 

ابد بنا یہ ےک ااتخہمر کے وا تی کے اصسل جج کون ہیں ؟ اود ام ریا ہکی قیادت اب یتتک ان 
مو ںکو بے نقا بکیو ںی سک ری ؟ نے سب سے گار ہتفہ ر کے موانے سے خودام اود یورپ 
ا ب کک جوتحقیقات ساٹ ےآگی ہیں ۔اگرصرف ان رمق نظ ڈالی جانۓ نز ملوم ہگ کہراسلائی 
نیا تصوب] القعد ال دہشتگردی ےگل طور ح پر اڈ مہ سے ٢وہ‏ وس وا ےکا اصل سب خود 
ام کہ بیس موجودتھا چیک مسلمافو ںکو رس وا میں مو کر کے اسلا ھی جبادئ یا رککوں ببضرب لگا نا 
شر الاوسط کے ٹیل پر جک ربااورمقبوضشہ بت ال تق کول طور برص*ہولی دارالقکومت قرارولوان تھا 
اب ان معاملات پرمخرب می ںگح لکرککھا جار با ےکیوکہ ھا لی عیہہوثیت کے جوں میں ڑا ہوامضرب 
رق گمیارہ ہر کے واتا کا کوئی وت و لک اود نہ ال کے پا عراقی کے مبی خطرا ک 
قرو ںکاکوکی وت ے۔ : 






































اب مغرب بی شال ہو نے دای چن دکابو کا تل کر وکیا جا تاے : 

ذرنھی مصنف' میرک یسمالع'' ک یکا ب'' بے اوح کہ“ مظرعام بآ چگی ہے ۔ ا ںکتاب 

میں دستماو یہ ییژں کے سا تھ ما بم تک یا کیا ےکگرب او دش رقزب ا وا لۓ ہےگمل طور پر برک 
اللغ مم یں ۔ ال کے علادو ام یک اور نک یکتاب'' یر هب رکا چھ پاچ ھی ای م وضو پر ےجس 









(96 
یی يکہا گیا ےک ہگیاد ہس رکا اصل برک خود ام یلیہ بی بی موجود سے اور اس دا ٹچ کا اصل ہب 
إتحاری مرا صی دک با رآوریی تھا 


زین شی ین کے سابقی و اوافد ماع ماع پیاو فک کاب گیا رج ریراقت 


شىیآئی ا ےک اکردار' شال ہو گی ہے ۔اندد جال فالنع نے دش دستاویزات اود دمگرشواہ رکی 
اد پر جھ چو ا سکاب میس ٹپ لکیاے: اس کے مطابق' ام رجلکیہ نے اس وا تھے کے ذر یچ دنیا شس 
مکری مراخل تر راافغافضتان مرش رٹ کے جواز کےطور براستعا لکیا یلع راقی بر مم ےکا منصوبہ 
میا تہ رکے وا ت سے پیل ی ام بکی ناب صدد ےک گیٹ یکیلٹ می ںآ کا تھا۔ ال ط رح شر 
اللاط کے یک رما ککڑھی ا کی لپبیٹف بیس اکر اس رائنل رر 0ئ ہے .پل رج کن 
مصنف نے ملف ٹا لیس دیکر می داش کیا کیگیار ہق رکے واقحات سےمسلراٹو نا مممولی .ا بھ یا 
نی جکہطال بکممان می ےک ہس کےکوائل دای ہیں" 

اب !ان عا ما ٹکو ایک طرف کوک را نگوائ لک جانب رج کیا جاۓ جگیار ہمہ رکے واقتیا کی 
کوکھ می تم نےکرمنظ رام پرآے ۔. اس وا نے کے فور بدا فغ اتا نکو جارضی تکا نشانہ بنایاگیا کہ 
یہاں قائ ہو نے والی ا سلایقکوم تک مک کے بیہاں پر یآکی اے کے اینٹ اوررخشیات کے سوداگر 
مماطا کے جا میں اورایبا می الوائع ہوا رافغامستان پر جارحیت کے بعدام رہہ نے اہۓ منصو بے کے 
یت عرا یکا ر نکر تھا۔ اس سلسلے می حا لی مہ ہدنی تک کارند وڈ لی یر ام بکی صدر پش کوک 
ون یکی مدد ےا کسما تاد ا۔ اب ام رپ یعکومت نے صداممقکوم تا تقت ا لٹ کیلع ایی ا یی بے بذیاد 
افرامات لگا ۓ جن کا زینی تالنی سے ژذور بر ےکا کم یق یں تھا _صددرا مقکومت کے التقا دہ سے 
تعانقاتکاڈ ہن درا پیا گیا اور مخ تا ھی کے تھا رو ںکا داد یا کیامگیاجش ن کا جک ککوگی سرا نی گل 
کا مگ رد رتخیقت یما مکا رروائیصبوٹی ریاست اص رات لکوتحنناد کیل کی جار یی ۔ ا سے 
یہ ہونی تک یآ لک رام گی اننظامیرنے و نجھو نے وکوو ںکاسہارالیا جو یھی اہ تی سے جات ۔ 

مار ہت نف کلت اب مقبوض. ببیت المقد کی جانب یی قد یکرر ہا سے - نٹ یک مق وشہ 








ریت ال مقر لکل عطور پرمیہجولی ر بس تک دارالحگومت قرارد ینا ہے ججی ا ہم نے ملنسی نکوذکر 
کرت ہوم ۓےبھیآخر یس اکی طرف اناد ہکیا اب یاسرعرفا تکود ٹیا سے رخصرتکر نے کے بعد 
77 6 و .و ب کہم غیت نو ا زمخرب نے اصسل می ل متبوضہ 
بیت ا مق دی کو پودری رع ود یتو یل می دہ ےکا منحمو بآ خریی م لے میس پچچادہا ہے ۔ ای نقطہ 
راز کےگ گار تہ رکے واقیا کاو رکوہ وانظ رآ جا ہے ۔ (١)‏ 
دہشم تگ رکون ؟ام کہ پاصلمان؟ 

ام ریہ 7 2 کی بلندت بین نمارت درلٹر سن او ہو 
گئی .ن کو ی بھی شھوت نہ ہونے کے پاوجودام کہ اسان پہ جنڑ ‏ دوڑااورشپر یآ باد یکونٹا نہ ,کر 
موم بچوں ؛ پوڑھوں اورکورق ںکوش ہی دکرد یا حال ان ہگ نے جن یا زی لن تی بات وا کر 
در یکہیہملیسلمافوں ن ےکی لکیاتھا۔ نشی ریو ںکی مرش کےخلاف بھارت نے شمی رپ طاقت کے 
زور پر گر رکھا ہے اصع دہاں کے لوگو ںکا ینا تا کر رکھا ہے ۔ رویسں نے پنیا یر کر درکھا 
ہے۔ چیا کے یل کےخزانے او فک روں نے جاۓ اور وہاں کےوا کو بیادی ضردر بات زندگی 
جک ماصمل نہوں ۔ اس رائیل نےنسٹین پر بر تی قضہ جمالیااوداب باتی علاقہجھی ین ےک یکو کی 
ای ہے اوراس رات لی الا علا نین کے سلمائو نکی لکش کرد ا ےو رسب دہشتگردئینیل 
وادرھاے؟ 

کیاان علاقو کی وا مکوا تا بھی ت نی سکدہ اپ دفائع ج یک ری .ام بل ہاغی وت کےع را اور 
افغانتان پر تڑھال یکر و سے مقدس جن کک نام دیا جاۓ اورمظلوممسلمان اپنے ملا تے کے 
دفا کیل با انی الال ب و کاعزت بچان کیل وشن کے دہشم تگم رد گلا تئ ۔اصسل بات 
نو وی ےکییکم کر میں ہندد عیسائی اور یہودی یپ ر الم اور وہشمتہگر وکہلنیں مسلران ۔ وا کیا خووب 


الصاف ے! 


)١(‏ .مرا ظتبشارہ:٭ اور ؿ ٢‏ اارح(۱۲۰۰۷۰۹) 








(7ہ4 
(غلسم4 
ذراگیتملول او رگور پلاکاررواگو لک 


شی اورتا یھی ہشیت 

جہاں کک مار تلق ےن جار میس خووک جو ں کا آ از جاپان نے دوسری ج نیم کے 
دورا نکیا ۔ جب چاپا نکو لقن گیا کہام یکا مہ ہرلحاظط سے بھادی ہے اور دہ روابتی جن کنل 
لڑسکنا تو جا پان کے شاہ نے اب پانکٹو کو با اور پانکٹوں سے اپٹی اپٹی جا ٰوں کے :ذ رانے جن لکر نے 
ابا چا پان میس چوک خوش یکو ایک رزہی حیثیت حاصل ہےلیڈ اجنکڑوں اپیے پاٹ تیار ہو سے جھ 
اردد ےھرے ہوۓ چہازگواڑانے جاتے اوراھ بی ری جیڑ ول ٹل جامارتے ہبی دووا ئل تھا 
بس نے ام کک یکر دی ۔ الین یراد رعراقی وظی روک یتوم کے پان اور ہے چیکیا؟ ا نکیا 
نال تق أ س خلا مک یىی سے سے مت اور بے سروسا ما نبھو کے شی ر کے مج رے یں بندکمرد یا جا ۓ او چم 
ا سک چ بھاڑک منظار یکھا جاۓ _پاسطین اورعمیی رد رہکی عو ام کے پا اب ال کے علاوہ اورکرئی 
نٹ در وگیاکہ دہ اپٹی جافو ںکوقر با نکر کے اپنی عزت وآ بردادد می کی تفا لم تک میں اور ٹیا کے 
سان کی وو حول ہے جس نے اس رائل اود ام بلمہ خی رہکو بے سک کے رود ا سے۔ 

شی انقہار بھی فداٹ یجمکوں گور یا کا رروائ یمکی دش للتقی ہے۔ چنا غجہ جب تضمور پل ن ےکذائر 
دے دسا لک ک کیلت کلف مکی شرا ئا می ایک ش رط یھ یھ کک کاکوئ یآ دٹیمسلمان ہوکر 
رسول ال کے پا سآ جا قذ آپ لے أ سے دالی کرد بی گے .یع گی شا ئل ٹ ےکر ےآ پ دائیی 
ھ یزنشریف نےآ ے ۔ ای دوران قر یشک یکا ایک ابوصی ند مسلران ہوکر مد یہ لآ گے ۔ 
ھک واوں نے ادیرخ ہکو ولچ لا ن کیل دس کسی آپ بلپا نے معاہرہ کے مطا ا أ سے 
ان کے ہوا ےکردیا۔ دودوفول انیل نےکر ھ ینہ سے ہل بڑے۔ جب دوڈواکایقہ پا سواریوں 
ان کے گند 
























الولاصی نے ان بس سے ایک سےکہاکراے فلاں ! تار یوار بڑی ید ومعلوم ہولی ہے 
؛ذراد ینا یش دکھوں ڑا سی ١اس‏ نے بگمڑادیی ؛ابوبصیبر ند ا ےگوار مارکی اورویٹھتٹرا گیا ( من 
ریا ء دوس رٹنس بھا ا گکر و ی آمگیااوردوڑتا ہوامسود ٹیش داشل ہوا و بی پک پا نف رما اک ال 
ےکوئی خوف دیکھا ہے ۔أ می لن ےگہاکی ال کیم لام راس اش یا لکرد یاگمیا ہے اورٹی پیل بد نے والا 
تھا۔ ای ددران ال ویر یی دہا لآ پچ ۔ نی اک ڈلال نے فرایاکہ ا لکی ا کیل و لی ہوک گر 
اس کےساتح کوک اور ہوگیاف ڑاگ ڑکا ےگا۔ 

جب اص نے ہہ بات ہف د وھ گے کتضو بل نیس پھرآن کے پا ا د یں گے لہا 
دودہاں سے گے او رسمندر ک ےکنا ےآ مجئ . دع کہ سے ابو جندل بی نممبیل ٹدبھی ان پٹ اکر 
کے اور ابو یر مچدے آنے۔ اپ قریشی میں سے جوھی مدان بجاو ابواصر نے 
جا ا ہا ک ککہأ نک ایک جماعت ہوئی ۔ اب نمداکی ام اق پیش کے جس ما نے کےکتعلق پ سلت 
کہ دہ شا مکیلع للا فو أ ںکی راہ پہکڑے ہوجاتے اورانی ںا لکر کے ان کے مال ین لمت 
۔اب رئیش نے می کک رتضور کو ارد تدایق اوررشنہ دا رکی کا وا یلہد ےکر ہے پا کچ اک ہآ پ الو 
بھی ٹل کے ا نے یکو پغا مج دی کہ جویھ یآ پکی طر فآ جا ےگا ا سکیل اکن سے چناغتضور پل 
نے مہ پغام اور ٹنکو جات نچ رددوہاں سے دا ںآ مگ ۔ )١(‏ 

اب ا عد یٹ سے مندرجہڈ یل بای وا میں : 

(١):ابو‏ یر یٹچنمنے ا لے ہ یکغار سے لڑائی کا آ ا زکیا کسی سائھ یکا انان سکیا ۔ بعد بیس چند 
ساخجیوں ےکک گور یلا کارروائیاں جارئی ری اور کال اھ ک ےم کےگین مطای تھا۔ 
ُ کیوککیہ ارشاد باری تعالٰی ے: 

ط فَقَاتَل فی سیل الله لا تُکُلْ الا نَفسَكَ وَحَرٌضِ الْمُوْمِیْنَ 4 () 
























بڑوہ 
سر جس :'ذ ا ۓبوب! ال کی راہ می لڑ وق تکیف نددپے جا گےگراپے 3 مکی اور 
مسامانو ںکوآ ماد وکرو۔' 
اب الوھی چٹ کی ہی کارردال یکذار سے جائن بچا ن ےکی شی اور بعد می لکذار سے پچوئی جنگ 

یکین 

(٢):ابو‏ یر نپ دکی بی کاردوائیا کسی خلی کی زم (مارت بیج ںکیوکمہ رسون الل لت أے والپیں 
کر ےکا عب کر گے تھے بج ۔آپ ڈاے نے فذ یک دع أ سے وا یب یکرد یا تھا ۔ 

(۳): رسول اللہ لیے نے ابواصی پش کی کارددائ کی غرم ت نی کی یہ خا موی اخقیارکر کے اس 
کی ت نیف مادئی۔ خلاصہ بہلگا کہابو ای رکی بکا روا گور یلا ج کک سب سے بلک شرٹی 
زیل ے۔ 











۷۲//+٭/+1/+1/+/+٭/+٭/+/+7/7/7/٭ 
۶/۳/1۳ / ۳/۴/۳ /2۶/+/۳۳/۲/ 
٭1/+/٭/7/+7//+٭/+٭ڈ 
7/1۷۳ //7۲///+ 
17////٭ 
٦7//٭‏ 
ىٰ 








4007 
لجام) 


جیما میں صہ ا لصل دوم :ہوم اور چہارم میں مرکو رق رآنی آیات ٤‏ أحاد یٹ مبار اور 
اتال مہ نمی مطائد سے معلو ہو اکہ چہادکی اصطلا یت ریف بے جےکہ 
”دن اسلا مکی م ربلندی او رج کیلن ٹی سیل ان دکذار کے خلاف اپ جان ء مال اور وش تکو 
رک رہ 
اور بھی معلوم ہواکہ جہاداس وقت فرٹل ین ہوا : 

007 جب جہہادکیلیے رواش ہو نام عم ہولنی گی مار ناخ نآ کے مرش یکو 
چا دکیلئ رواز ہو ن کاعگمد ےد ےاذ اس وقت أ سس ملک کے ہرسلمان پر چہا کیل نا فر عین ہو 
جانا جا سے دہشم رک فو گی ہو با خیب رف گی ہو۔ 

:)٢(‏ می" طاتہ کےلوگ جن اسلام کےقر جب ول اوراس سے چہادکر نے پقادھی ہو تو ان 
پر سی وشن سے چاوکر ا فرش مین ہو جا ا ے۔ 

:)٣(‏ صابالوں کے سس ش کی مرعدوں رکذ رتملہکر نے کےا او نے سے مم ہو جا یں ظا اآںٹر 
کے اون پر نکنار پ چادکرنا فرش مین ہے او اکر ا نکو ا داع کسلئ دوسرۓ شر کے 
ْ مسلمانو ںکی ضردرت ہوف ان پریھی ججماد فرش ین ہو جا تا ہے ۔ 

(6) :جب کافرمسلمانوں ک ےکی شیرکوروخدر ہے ہوں و ا شر کےمسلمافوں پر چہادفرتي کین ہوں 
جا ے اور جب ا نہیں دوسرےمسلمانو ںکی برد کی ضرورت رو ا نکسلغ ددکرنا بھی ڈرس یی 
“جا ڑٗے۔ 

ان کور وصوراول کے علا ہاگ رکا فر اپنے اپ گگوں میں تیم ہیں مسلمان ان سے چا دکر نے بر 
ڈاورہوں و انی دن اور اسلا مکی سر بلند کیل ےکافھروں ست چہادکر نف يکفایہ ے اوراگ سی 
کیک کےسلما نگھیکافروں سے چہاد نکر یو د نار کے تما مسلمان فر يکفذای کے تر کک وجرے 
ہنا مگارہوں گے _ 






















اور اق کیل سےمعلوم ہواکہ چہاد کے متقاصد یہ ہیں : 
(۱): کن ےکا خاظمہ 
جب کک دنا ےکی لے می ںکفار کے پا دہ طاقت وشوکت موجود ‏ ےک دہ اسلا مکی وجہ ےی 
ملا نکوفنہ میس ہت اکر مت ہی او راگ رکوکی یمان لآ ٤‏ فوع مکا نشانہ نا تا سذ اس وقت 
کک ا نکفار ےل نا فرٹ سے ج بتک الام لا ن ےکی راہ ٹیس رکاوٹ بیخم ہو جا ۓ ۔ 
یی اکمہ ارشماد باری تھالی ے: 
( وَفالوِهُمْ حَثّی لا نَگونَ ون وٌيکُوْنَ الدیِیُ لِله 4 ر١‏ 
نر کجہ:''ادران ےلڑہ یہا ںک کفکیکوئی فتنر ہے اورایک اش ال کی و چاہوے' 
(۲):طب الام 


ج ب کک دنیاش اسلام ا اب نہ ہو جاۓے اور ہرم رفا نون الهی نہ ناف ہو جاۓ ا وق تک ککغار 






ےک تے فرش یں 
یی اک ارشاد بای تھالی ے: 
اما کی ٹاو ا ار تی کی ار وا وگ وو ,وا 
ظ۶ وَقَايِلؤْهمْ حختی لا تکؤنَ فِتنة وْیَکُوْنُ الدَیْنُ کلە لِلهِ > )۲( 


.- 
٭ 


خر جصہ :اوران سےلڑہ یہام ککیکوکی فسادہاتی شدد ہے اورسا راد بن اللہ خلا یکا ہوجاۓ ۔' 






(4)۴: کفارکا جزبرد بنا 
جب کک تمام دمیاکےکفار(جھ اسلام نہ انا جا تت ہوں ) ذمیل ہوکر اپ پاتھوں سے مسا و ںکو 
جقذ بن اداکرد یس ان سےا تے در ہنا فرش ہے۔ 
تی اکہ ا شاو ارگ تما لی ے : 


فَا لوا الّذِیْنَ لا يُؤُمِنُوْنَ بالله وَلّا بِالیَوم الا 


(١)۔الة‏ وہ ۱۹۳۔ 






لا يحَرْمُؤْنَ ما 







(٢)۔الال:‏ ۳۹۔ 
























حوْم الله وَرَسوْل ولا يدینُونَ دیٰنَ الْخَق مِنَ الَذِِن أُْنُوْ االکنَابَ 
حَثّی بغطُوا الْجِزیَة ن ید وهُمْ ضَافِزُونَ “ () 

یر جج :''لڑدان ے جوایما کس لاتے الد نل پراورقیامت پراورھرا میس مات اس یرک 
جن سکوترا مکیا اللہ درس کے رسول ہا نے اور ہچ دین کے مائ ع نیس ہوتے من دو ج کاب 


دے گے ہیں جب اپنے ہاتھ سے جنز ند میں ڈنل ہوک 
۱ (): نزوروںکی رد 
جب دنا ےکی خلے می ںکنزوروں نلم ہورپاہوق نی ںںملم سے جات دلا ن ےکیلن لٹ تے رتا 
ری یں 





یی اکرارشاد ارب تھا ی ے: 
( وَمَانْكُم لا تُفَاتِڈُونَ فی سُپیل الله وَاْمْْتَصْعفِيْنَ مِنَ الزّحالِ 
وانّسآء والولدان الّذِيِنَ بَقُوْلُْنَ رَبَنَا أَخْرِخنًا من هذِم الْقزْنَة الظَالم 
سر جہمد :''او رسکی ںکیاہواکرتم دلڑ داللہ نکی راو می اورکٹرورمردول اورگورتوں اوریچوں کے 
راک جو بےدعا 7/7 7 >-:.ھ 0ئ سے :کال ٹس کے لوگ نا لم ہیں 
وی اپنے پا ےگوکی حما تقد ےد ےاودئیں اپنے پا سےکوکی مددگارد ےق ہے نت 


٥‏ من لی ن کا بللہ 
اگرکافنسی ملا نک کروی نو أ سکاب دلہ فرش ےگ برک دومسلمان ہو جا ۔ 
تی اکرارشاد ہار تھا یٰ ے: 
( ا بَا الَدِیْنْ آمَنُوْا غُنَبَ عَلَيْکمْ القصَاصٔ فی الْقَتلی > ( 
ے 
() ار ۸عا۔ 











درو 
پر ےےجہ:''اےایمان دالوں !تم رر ےکہ جو ناعن مارے جا کی ان کے خو نکاپد لاو“ 


(4۹: معاہروڈ ڑن ےکی مزا 
اگ رکوی مسلمائوں کے ساج کیا ہوامتاہر وذ ڑ ڈا لے اس سےلڑ نافرنش ہے۔ 
جی اک ارشاد ہارکی تی ہے: 
وا تُکتُوْا اَنْمَانهُمْ من بند عھُد هم وَطعَُو ا فی یکم فَنَاِظوْا 
أَئِفَةً الکُفْر اَنْهُمْ لا یمان لَهُم لَعَلهْمْ یَنْنَهُوْنَ > ١(‏ 
ترجمہ: :او راگ رم رکر کےا میں ڈ سی اورتہار ےد بین پرم ےآ تی نوک کے مرخنوں سے 
یت ان ای بس پر اس 
(۷) :دفا کیلئےلڑنا 
جبکو تو سلمانوں پرمملآدرہوجاےذاپنےدفا ]کیلنالڑ با فرتل ے۔ 
تی اکیہ ارشاد باریی تال ے: 
ط وَقَابلُوْا فیٰ پیل الله الین مَاِوْتكم وَلاتَتَدُوا > ۱ 
پر ججہ:'اورال الا را:* لوان سے جوم ےلت ہیں اورحد سے نہ بڑعوے" 
تک کے موتحع پر جب تضور ہے وشن کےعمل؟ ور ہو ےکی ریا جتباد کے ایل خام اش رادکو 
یلان خرب سے باہ اکر رشن سے مق بلک ن اعم دا خا لاک اس وقتمساراٹوں کے اتکی 
ورگ۔ 
4۸ : مخبوض علاقہ پچٹرانا 
ا اکرکنارمسلماو ںک کسی مہ پ نا جائز جک لی نز نی دہاں ے الا اورسلمائو لککادوپارہبضہ 
بھا لکردانا فرش ہے۔ 
"](ا)۲ھ:٣۔‏ 


(٢)۔‏ اڈ وہ ۱۹۰۔ 








(4104 
یی اک ارشاد باری تھا ہے : 
( وَاْْلوهمْ حَیث تفْنمُوْهم وََخرِخُوْهم من حَیٔث أَخْرَجُوْكُمْ 4 
زن کےہچےد:'ادرکافروںکو چہاں پا اروادرآ ٹنیس پل دد چہاں سے أغوں نہیں پکالاتھا-(۱) 
اب ترحیب داردٛھی سکرکیان میس سے ایک مق یھی مسلانو ںکوحاصل ہو چکا ے؟ 
(۱):”جبکک نہ باقی ہے مسلمانو ںکیٹےلڑتے رجنافرشش ہے۔' 
اب می یکر جماراکام ےک کیااس وشت دنا یس بھی لہ ٹس ایمان لان ےکی راہ می سکذا دک 
رف سے پچ یک نے والی رکاونٹ اور لے نتم ہو کے ہیں ؟ کیا ہند کے منظلوم شودر جو الا می مسادا ت٤‏ 
شش پناہ دنا جات ہیں ہ بلاخوف ملمان ہو گے ہیں ؟ کیا ین اور رو ٹیش رج وا نے ملا ۶ 
باشوف اسسلائی اجکامات پیل لکر کت ہیں؟اگر إ ن سپ پاٹ ںکا نان یں ےل اس وشت ان 
کفار ےلڑ اگوی دہشتتگردی ے؟ 
(۲):' جب کک ساری دنا الل ٹا وکا د بین غااب نہ ہو جاۓ ؛أس وق تک اڑ تے د نار 


کیا !اس وت دشا یش صصرف دین الام ہی الاب ہے؟ کیا درل ڑآ رڈد الا کا ہیل دپاے یا 
کذارکا؟ کیا تام دیاش اللہ خالی عدددقائم ہو گی ہیں ؟فذ جب اس وف تکفار پہ اعلا مک خل ہیں 
بھی یں نے بچلرکغار سے چچہادکر نا دہشم تگمردئ یکیسے ہگ ؟ 
(۳):' جب کک تام د نیا تکغا رک یتیل مک کے ان سے جز می نہ وضو لکرلیا جاۓ ان سےلڑا 
رہنافہل ے۔' 
کال وشت دنا کسی لے مس کذارسارائوں کےذ یی بک نکمردور ہے ہیں ؟کیادرمسلرانوں کے 
ساٹ ای ذاتکا اقرارکرتے ہوۓ بجزمید می ےکیلے میا ہیں ؟ ق اگ ہم صورتِ حا لکا چائز و ٹیش فو 
ا وت موا مہ پالنگل لٹ ہو کا ےکروکہ اس وقت ملا نکذا ر کے سا سے یل ہوک را نیس جنڑیے 
اورشٹرا جد ےدے ہیں ۔کفارورلڑ یک می سآ کی ایم اایف کے ذر بیج مسلمانو کی تیاس دوات جنر با 
ارں ایدو 






۱ (4105 
ا سکیا اس ذا تکودورکر ‏ ےۓ کیل ےکغار ےٹڑ نا جتباد+ہوگا اش تگردی؟ 


ْ کیا اس وقت دنام کسی تچ مسلاٹوں یں ہور ہا؟ ہندوستان بشمی فسین رافغامستان ڈنیا 
روس ء یناور دم ری شخطوں کےکٹرورمردہکوریس اور ینعم سے با ن ےکس فریاد بی کی لک رر ہے؟ تو 
١‏ ایی عالات میں ا نکرورمسلمانو لک بد وک نا جباد ہوگا ادہش تگردگی؟ 

(۵):''اگرکاف سی ملا نکوک کرد ےق کا بدلہلیناڈرل ے۔' 

ا بکیا ہنروستان می سکوئی مسلرا ٹین ہوا ؟مشی می کت مسلرانائل ہو گے ہیں ہک یاصتتیں 
مال ہدٹگی ہیں ۱۹۳۰ء ٹں کآ زادبی کےتقر.یا ۴۵اکےمضن او ںکا اص دنا ہار یگمردنوں پ 
اتی ے ین وروی ءالہاشی ؛لوگوسلاد یہ افغفانستان مع راقی اورنسین وخیرہ ٹس انا ب اور دہشت 
گردی کے نام پر سکتے الما ن تہہت کرد تئے من اور باقی ماد وکروڑوں مل مان ز پت یکیمونسٹ بنا 
یے یئ دن اوکھوں مسلمانوں کے لک برلہلیناجہادہوگا ادہش تگردئی؟ 

'':)٦(‏ اگ رکوی قوممسلمائوں کےسا تج ےکیاہواماہرونوڑڈا نے اس سےا نافرنل ہے ۔' 

یسل وفت د نیا می سکوئی قوم ای سے جس نے مسلمانوں سے کے ہو ۓ وعد ے اور معاہر ےکی 
خلاف ورزئی نہکی ہو ؟ کیا قام پاکنتان کے بعدلیا ت خبردمعاہدہ کے مطا نی ہندوستمان نے مسلرالوں 
کے جان و مال اورمساج دکی طفائق تک ؟ کیا بندوستان نے معاہرے کے مطا ‏ نکی کے مسلما و ںکو 
اپپی راۓ ا تع لکن اضق دمڑاے؟ 

۷۱:ج بکوئی قو سلمافوں پہملہآ ور ہو جاۓ فو أ س کے دفا عکیلنےلڑ خیش ہے" 

آر ہس وت شمیرٹیں ساڑ ھھےسات لاک ہندوسلمانوں پرجل ہآ ور ہیں اور ہندوستا نکی پو ریف ح ان 
۱ گی پشت پر ہے ۔ برماکےمسلمافوں پہ بح مم تجملہآ ور ہیں اورانئیں ےگ گر ہے ہیں ء بویا 
سرب درند ے مسلمائوں پرتمل ہآ در میں اورقمام میا کوٹ اورمیسائی ا نکی مر کرد ہے ہیں وعراتی 
: یں اض کی درنرےمسلمائوں برح لہآور ہیں پلسلین یس اسرائیی جھیٹرب تل ہآور ہیں او رلاکھوں 





4106( 

مسلانو ںکوشیرادد ےگ کر گے ہیں اوران کےاملا ککوضائ الم گے یں مرو چنا کےمسلبانوں 
تم آ ور ےاوردہزنرگی اوزمو تکی جک ار ہے چا )بت 

کیا ان تا صورقوں بی مسلمانو ںکواپٹی چان دمالی کے دفا کاچ ات نی ں؟ ایک طرف ام رپ 
اسرا ئل اور پوارت وظیر ومظلو سلمافوں پر نک مسل کر یں فو ا سکوگوئی دہشمتےگردئینہی کا اور 
دوسرئی طرف مظاوممسلران ان درندوں ے اپٹی جا نکی تفال کیل ےکک یلیل یا امک ےڈ أ سے 
دہشم تگردگ یکا نام دیاجاۓ جب الصاف ے ۔ 
(۸):''ا فا رمسلمانو ںک یی تچ. بر جک ری و انیس دہاں سے ڈکالنا او رمسلر نو ںا یٹ دوبار ہ٤‏ 
ال کرناڑش جا 

ائیس( ین ) می سآ شی سوسال مسلمانو سک یعلومت کے پور کا آ خرکیآدٹیپھ یخ مکردںاگیاے 
اورعیسرائ یل طور پر ڈایئش و گی ہیں :أے وائیں ہنا ہہارگی ڈمدارگی سے ۔ اور ہنروستان شھول 
تی ءضدرآپادہ سام ادر جو اگڑ ویر ومسلما نو ںکی سلطنت میں تھا اکس ہہادکی دج سے نیرون کے 
ےم سآ گیاءا ے دالس ینا بھی ہکا ری ٹڈ مددارگی ے ۔ 

لین پ کن مالوں ہے اسر تی وابٹش ہیں پلگیسلمافو کا قب ال بک یہودیوں سے قنے 

میس ے ہعرق بہ اس وقت ام کی اب مہیں اور غغانستان پچ اھ ادا زمکومت الب ہے۔ ہیں 
کے علادود ٹیا ےکی سک ہما لف ککفار کے یش میس ہیں ۔ ان سب متبوضہھلاقو لکا جع چڑاہ ہم مرش 
ہے کرد ہش تگمردگی۔ 

ال سار انیل سے یہ بات دا ہو کراپ دفا یلال نا جہاد ہے شک دہشم گر دیی بلیڑ ا 
کشم پاسلین اڈغاستان اورعراق وغیبرہ کےمسلمانو نکی ری بآ راد ھی شبات اورث رآ ن روز یٹ 
کے مطابتی سے جب جارینی اورشری حوانے سے جوتت لیف دہش تکمردگ کی با نک یگئی ہے اس کے 
مطا نی ام ربلہ ہروس : بارت اورا مرا نل دخ روسب سے بے دہشم تت کرو ہیں 

۔( تمت بالخیر> 
ہہ /+/+ہ/+ہ/٭ 


































ا انل :ےن اکیائھ ممیرے لیے کاٹ ینگیں؟ 
یں ا 
نمی رحھوب چا لاکاکلہ پڑھ نے" 

ا ین ایس تی امحزز بندہکیے من متا ہوں؟ 
طاِنٌ أَكْرَمَكُمْ عِنْت الله اَنْكَكُمْ ۹() 
”بے شت کک یس سے الد لچ کے نز دکیک سب سے مز دہ ہے جوم یں سب سے با ہین زگار ہے ۔ 
۱ ارپین !می سگنلوکوں کے را نے پرچلوں؟ 
طصِرَاطً الّذِيْنَ اَنَْمُت فَلَيْهِمْبە () 

۰ ان اوگو ںکا راست جن رتا نعام ہوا۔'“ 

ا ایشد پل !تیر ے اِنعام بافندلوککون ہیں؟ 

(فاؤِلَيِكَ مع انَّذِيْنَ اَنْعَمَ الله عَلَيْهمْ مُنَ الَیْنَ وَالصدَیْقِْنْ 
وَالفُهَداءِ وَالضَالِحیٰن٭ () 

”وس بپلوک ان لوگوں کے ساتھ ہوں گے بن پر اڈ تھالی نے ا ھا مکیا شی ھا کرام ؛صد ین؛ 
نے 








اد اٹل جشت چاہتاہوں؟ 


طاَطِيعُوا الله وا طِیْمُوا ارول( 
”ری اورمی رےزسول ڈچٹلاکی ا طاختکرے' 





(١)۔ائثرات‏ ى۳ 
(٢)۔اناػہ:ے۔‏ 
(٢).اتاء:٦٦۔‏ 







())۔انا ۹۔ 


رس حور و وع ور و ید عو ود و رھ و یہ یر و تد ار و مع ۲ 



























108 
ا لد ین !یس ترک اطاع تر چا بتاہولں؟ 


و رووا و مہ ام تم و 
مَنْ بُطِع الرٌسُوْل فَقذ اطاع الله )١(‏ 
مس نے زسول ھپ کی اط عح تک بے شک أ سس نے اک بن خی اطاعخ تک 


ا یش یز !شس تیر مت چابتاہول؟ 
(قلْ اِن كُنُم تُِبُوْن الله فَاتَيکُؤنیٰ بْحببِکمْ الله 4( 
''اےپھروپ ولا اف ماد جک اکر ال قح سےحب تکرہ جات ہو مر اتا حکرد لیس ازلہ نی | 
بھی ہیں اپنائحیوب بنا لن ےگا“ 
ا ینز ای م کن بنا چا ,تا ہولں؟ 
کک او جک وھ یں وا ات کے وو ےو ھا نے دی کو و کر یا اھ 
ظفل ورك لا بُوُمِنُؤن ختی يُخَکموك وِبْمَا فَکِر بَْنَهُمْ کُمْ لایجڈؤا 
فی اَنَفْسِهِمْ حَرَجا مُنْ ما قَضَیْتَ وَبْسلمُوا تَسَلیماً) ( 
روغب اھ ہے تر رب ہہ ن ےکی اب یلوگ أ سس دق کک مم نہیں بن گت یہاں 
کک اپ نے آپں کے بھگڑوں میس چجھے اکم تنلی مکر لیس پچ رترے نیل کے بارے اپ دل یس 
وٹ یی دنچ شک رم فو زاس نیاکودل ے بن لن“ 
ا ال ےن ای۲ کییے ز ندگ یگ اروں جھ تھے پندآ چا ۓ؟ ' 
لق کان لَکمْ فی رَسُول الله أَسْوَةٌ حَسَنَةُ ۸۹) 
بے شک تہارے لے ال نے کےزسول کی ز نکی میتی نینمودر ے۔“ 


.)١(‏ الاء:۸۸۔ 
(٢)۔‏ الظران:۳۔ 

(۴)۔ اقیاء:۵٦۔‏ 
(٤)۔7۷0اب:ا۶۔‏ 


109 
ا رپ !اگ ٹیش اپنی جان مغ رک یھو ذکہاں جا وں؟ 
٠‏ َولَو اه اِذ کُْلَمُوااَنَْهُمْ جاؤكد فَاستَتْقْرُواالله وَاستتفرَلُمْ 
مل نوجدا الله ابا رجیم4 رہ 
' اوراگمر پلک ای جافنوں نلم ( گناو )کرٹیٹھیس و( ا عبیب پے ) تتورىی بارگاہ یس حاض رہوں 
رپ رڈ تقاکی کش کی دا ,کرس اور زسول ہپ کھی ا نکیلن پش کی دعا ,کر بی فے بلک ارڈ 
ا یکو تو لکر نے والا یمک نے وا پانمیں گے“ 
ا رپچ ای س کا میا لی حاص٥‏ لا چابتاہوں؟ 
من بُطع الرَسُوْلَ فَقَذ فَاز فوْزا هن 4( 
”یس نے تر سوآئ الد ڈپلاکی ا طاعخ تک ہل دود ات کامیاب ہوا“ 
















و/؟//۸۰ ]جن / بج / 1/ج / +۲ /+/+7/٭ 
ا جج / /+/ج( ۲ /1/+/ ٣/۲‏ 
)/ )/+/+/+٦/+//7/٭‏ 
1۷ل ۳/7 /+/7/7/٭ 
ج۳/1/+۳/+/ 
۳/29/1۳ 
ىک 









6[7)اقاء ٦٤۔‏ 
: (٣)الا:+۸۔‏ 








ر6 
0 
(۵)۔ 
(٦)۔‏ 
انت 
(۸)۔ 
(۹)۔ 
(١)۔‏ 
إ (١)۔‏ 
(١۷)۔‏ 
کے 
(١٠)۔‏ 
(۵٥)۔‏ 
)۲ 
ران 
(۸)۔ 
(۱۹)۔ 























































کر یی ٹب 


کے و سش8سشت 


کالہ بەمان ؛امام شا ہا رضا بر یا گی ( ۱۳٣۴١۰‏ عم ) ضیا اق ران لا ہور۔ 
رز ائی الع فان موا نالأیم الد بن ع راد بادگی (ے ۱۳۷م- )ضیاءالق ران لا ہور۔ 
جن انار :امام بن ا انل بای( ۵ھ- ۳ لب کنب ناش رای ۔ 
سم ا سلم بین تا ری ٣٢۱(‏ تخب یکتب ناکرا گی ۔ 

جائخ التر نکی :اما مبجھ ب ن تی تر جرکی ( ۲۶۹ھ )دارالق رآ ن دا ر بمٹ 

لن ای دا د :امام سلیمان بن اشثف ٣۶۵(‏ )کتبا مراد متا 5 

سن ماگ ی ؛اما ماج بن شعیب ( ۰۳ھ" ) فل پگ یکتب نانکرارگی ۔ 

من اہن ماچہءاما بن یز ید ابن با( 2٤ھ‏ فل بھ یکتب ما نک راگ ۔ 
شع لن وائدہ امام لی بن ال یمر( ے٭ ۸ھ داراککتب ھ لی۔ 

مو ۃ صاع :ش وی الد بین جوریز ی ( ٣‏ ےھ ) قب یکتب خاشدکرا تی ۔ 
الا ری بی بن تجرخسقااٹی شاف (۸۵۲ھ )۔ 

مات شرع موق :جا لی لا رکی تی ( “۱٠۱٢‏ )تہ اداد بمتان- 
اکا مال“ م بج بن خلف وشناتی می ([۸۲۷۸ھ )دارالکتپ الام وروت۔ 
شر کی سم علا لام رسول سعیدگ نر یک شال لاہور۔ 

ا ج الع یں شر القا موس بجر منشھی ( ۱۲۰۵ )لمج اشجریے۔ 
ملسدطا خلا یھ بن ا سی ( ۴۸۳ء- )دا رالمحرفۃ بروت ۔ 

رٹ الصنا لع اک رمسعودکا سال ی فی (ے ۵۸ھ )اب ای سعیدکرا تی 
را ہاوفین ‏ علا مہالوکرمرغیناٹی (۷2 ۵۸ھ )اب امھ سحیدرکراتی۔ 
برا رانچ بین ؛علاسہالوگرمرغیناٹی ے۵۸ )بای سعیدکراہئی۔ 


117“ 
(۴۱)۔ عنام مھ بنہمودہا برق ”فی (۸۹ 2ے )فور یروبیگھر۔ 
(٢۲)۔‏ انی علا ماع ووا نی 2۸۷ج )فو زی فو یگھر۔ 
(۲۴)۔ بنا شرع بدامہہ جگود بن اصدم٘نی ۸۵۵ھ )کت رشیدے پاور۔ 
()۲)۔ ال را علامز الد بن اب نیم (۹2- )ای ای سعیدرکراہتی۔ 
(۵٢)۔‏ تین تاکن شر حکنز الد ة ان بعثان م نمی زعٹھی ( سم مے ہب دا رالا شاعت ال رہے۔ 
)۲)۔ رد اکنا ر لا این عابہ بن شا ھی ( ۱۲۵۴ھ )ای ایم سعیدکراہتی۔ 
(ے٢)۔‏ پا کی عالشیرکی ملا نظام الد من (۱۹۱ا دہ پھطبعہامی رہ کہ ری ولا قیمھر۔ 


(۲۸)۔ فو کی رضوب مو نا الشاد اضر رضا بر وی( ۱۳۴۰ھ )رضا فا تین لا ہور۔ 



















(۲۹)۔ 0 0 0ک 
(٣۳)۔‏ کنز الاکن جع پرالڈ بن احلی (٭اےی ) اداد یتان۔ 
(۳۷)۔ رز اطا ین وع ملین گی بن شرف !دا وی (2۷٤ھ)‏ اما ساؤ یردات۔ 
(٣۳)۔‏ امضمی ؛علا مہات جن قد ا ضٔیلی (۳٭٣۹*‏ )کیہ الر یا ا فی ۔ 

(۳۳)۔ ضیا ءا ٹھی کر می شا ضیا ءال ران لا ہور۔ 

(٣۳)۔‏ ال ہرادا ما حا فط ما دالد بن( ےے و )وارالفگر بروت- 

(۳۵)۔ مار الف ء:علامہجلال الد بن ستدون(۹۱ن )مض فو رش کرای ۔ 

(٣۳)۔‏ سیرت امن عشام ءا تنا رات اوان- 

(۳2)۔ حرت و 000 

(۳۸)۔ سا مکا فلنہ ماد :ابو ای عق لا ہورکی :جا مراسلامیہتان۔ 

(۳۹)۔ جچمادکی ضرورت داہبیت ‏ حا فظافر مان عپی ؛ رض ا کی لا ہور- 

(۰م)۔ ہار یٹیل اللدص جیدارف ما نمی مک ڑ او یلا ہور۔ 

(۱م)۔ مقیقت جہاد ڈاک طاہرالقادرگی ؛مضہارخ اقآ نپ یکیشن زا ہور۔ 

(۳۴)۔ چہادہالرال:ڈاکٹ رط رالقادریی : منمارج ال رن مہ یکیشٹ لا ہور۔ 






















07 


(۵ہ)۔ 
(۴)۔ 
(ك٥٤)۔‏ 
(۸))۔ 
(۲۹)۔ 
(۵۰)۔ 
(۵۱)۔ 


رو 
فیا کا ارتا ء رف یتفم اظہا رس زلا ہور۔ 
رہبرغیبات :ملا گی اللد بن ؛الیش اےز یلیر ز لا ہور۔ 
روایات ہبی عپاس ؛الشال چلیٹ رز لا ہور- 
مخزن انقلاب؛ڈاکٹرشٹس ائن ۔ 

یبر تد ہی مم محبدامتار۔ 

مہ ٹیو میس نھا تک رالی ؛ڈ اکٹ یبالگ ۔ 

شا ہکا رکب جہاد ہج رام نضل ماں۔ 
کاب ڑندگی :۸ل نا دعیالژمان۔ 


(//(/+//+/]۳ج/۸/٭ 
((/٭+/+/+//٭+/٭ 
/+/٭/٭/٭ 
/ہ/٭ 
٦‏